تنصرۂ کتب

فرقان سنبھلی کا شماران معدودے چند قلم کاروںمیں ہوتا ہے ،جو انجینئرنگ یا میڈیکل لائن میں ہونے کے باوجود اردو ادب کی خدمت کر رہے ہیں ۔فرقان سنبھلی سول انجینئر ہونے کے ساتھ ساتھ ایک صحافی اور قلم کار بھی ہیں ۔ان کی تین کتابیں شائع ہو چکی ہیں ،جن کی کافی پذیرائی ہوئی ۔ ابھی حال ہی میں ان کا ایک افسانوی مجموع ’’آبِ حیات‘‘ـمنظر عام پر آیا ہے ۔

Read more

مسٹر ٹاٹ

گلشن کھنہ
پنجاب کے ایک چھوٹے سے گائوں سے ہجرت کر کے وہ دہلی میں بس گیا تھا، اور محکمۂ صحت میں ملازمت کرتے ہوئے اسے دس سال بیت گئے تھے، وہ ایک کلرک تھا اور اسے ابھی تک کوئی ترقی نہیں ملی تھی اور نہ ہی اس کی مالی حالت پہلے سے بہتر ہوئی تھی۔ اس لیے ہر برس نئے نئے سوٹ سلواکر پہننے سے وہ قاصر تھا مگر اس کے دفتر کے دوسرے ساتھی اچھے اچھے کپڑے پہن کر آفس آتے تھے۔موسم سرما کے شروع ہوتے ہی گیبر ڈین ترویرا، ٹیریلین اورخالص اونی کپڑوں کے سو

Read more

گھر والی جمہوریت

اسد رضا
مہاتما گاندھی، جواہرلعل نہرو، مولانا ابوالکلام آزاد، ، ڈاکٹر بھیم رائو امبیڈکر، اے آر قدوائی، ڈاکٹر راجندر پرساد اورمولانا حفظ الرحمن کی کوششوں اور کاوشوں سے جب آزادی کے بعد ہندوستان جنت نشان دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت بن گیاتھا توہماری خوشی کا ٹھکانہ نہیں تھا۔ لیکن جلد ہی ہماری یہ خوشی گدھے کے سینگ کی طر غائب ہو گئی۔ ایک روز ہم جمہوریت کے نشے میں سرشار دفتر

Read more

میں بھی حاضر تھا وہاں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

نئی دہلی: گزشتہ دنوں معروف شاعر ،براڈ کاسٹر اور ڈرامہ نویس رفعت سروش کی یاد میں شاہین رفعت سروش اکیڈمی کے زیر اہتمام انڈیا ہیبیٹیٹ سینٹر کے گل مہر ہال میںایک ادبی محفل اور محفل غزل کا انعقاد کیا گیا۔ پروگرام میں اردو اکادمی دہلی کے وائس چیئرمین پروفیسر اختر الواسع ، آل انڈیا ریڈیو کے ڈائریکٹر جنرل و ہندی کے معروف شاعر لیلا دھرمنڈلوئی، کلاسیکل وائلن نگار و براڈ کاسٹر شنو کھورانہ، ارشاد احمد خان اور جامعیہ ملیہ اسلامیہ کے ایسوسی ایٹ پروفیسر و رفعت سروش اکیڈمی کے نائب صدر ڈاکٹر جی آر

Read more

دین کی بیٹیاں پاکستانی تناظر میں

عورت 1947 کے بعد سے آج تک اپنے حقوق حاصل کرنے کے لیے ایک بہت مشکل لڑائی میں مصروف رہی ہے۔ اس کی یہ لڑائی آج بھی شدت سے جاری ہے۔ اس میں افغان جنگ نے اس کے لیے بہت خوفناک کردار ادا کیا ہے۔
1956 میں پاکستان کا پہلا آئین مرتب ہوا، تو اس میں عورتوں کو ووٹ کے دوہرے حق ملے، یعنی پاکستانی عورت عام انتخابات میں ووٹ ڈال سکتی تھی اور عورتوں کی جو مخصوص نشستیں تھیں، ان کے لیے ہونے والے انتخابات میں بھی ووٹ ڈالنے کا حق رکھتی تھیں۔ عورتوں کے لیے شادی، طلاق، نان، نفقہ اور بچوں کی تحویل نہایت اہم معاملات ہیں، اس بارے میں قانون سازی ک

Read more

اردوکہانی آج اور کل

مظفر حنفی
اردو کہانی کاسفر کم وبیش آٹھ دہائیوں کا احاطہ کرتاہے۔ ان میں سے آخری دو دہائیاں نئی کہانی کے حصے میں آئی ہیں۔ جب میں نئی کہانی کے بیتے ہوئے کل پر نظر ڈالتا ہوں تو بڑی طمانیت، بلکہ فخر کااحساس ہوتاہے۔اس کل میں اردو کہانی نے ’’کفن‘‘ سے ’’پھندنے‘‘ تک کا سفر جس آن بان سے طے کیا ہے وہ اپنی مثال آپ ہے۔ اس دور میں اردو افسانہ بلامبالغہ ہندوستان کی دوسری تمام زبانوں سے آگے تھا اوراکثر زبانوں کی کہانیوں کی رہنمائی کا فریضہ بھی انجام دے رہا تھا۔ یہ کل ہی کی بات ہے کہ ہندی میں یش پال، منٹو کے

Read more

لوٹ پیچھے کی طرف

مجتبیٰ حسین
قاضی غیا ث الدین سے پہلی بار میں کافی ہائوس میںملاتھا۔ کافی ہائوس کے سوائے ان سے کہیں اور ملاقات ہو بھی نہیں سکتی تھی، کیونکہ ناپسندیدہ اشخاص صرف کافی ہائوس میں ہی پائے جاتے ہیں۔ میرے ایک دوست نے قاضی غیاث الدین سے میرا تعارف کراتے ہوئے کہا۔ ’’ان سے ملئے یہ قاضی غیاث الدین ہیں، مشہور ماہر آثارقدیمہ۔‘‘ میں نے مصافحہ کے لیے ہاتھ بڑھایا تو میرے دوست نے

Read more

چشم دید گواہ

امرائو طارق
ماں جنگ کیسی ہوتی ہے؟‘‘
ماں نے اپنی جوان بیٹی کو اس طرح دیکھا جیسے کسی چھوٹی سی بچی سے پہلی بار مل رہی ہو اور پھر اخبار پڑھنے لگی۔ اخبار میں ایک طوفان آیا ہوا تھا۔
امریکی میزائل کہاں سے داغے گئے ؟پاکستان نے امریکی میزائلوں کو چلانے کے لیے اپنی زمین کیوں استعمال ہونے دی؟’’ہم نے اپنے

Read more