مولانا ارتقاء الدین سہسرامی زندگی سے جوڑتی اعتقاد و ادب پر نئی کتاب

زیر تبصرہ کتاب ’اعتقاد و ادب‘ بہار کے ایک معروف عالم دین مرحوم مولانا ارتضاء الدین حاذق ضیائی سہسرامی کے مضامین کا مجموعہ ہے جو ان کے فرزند محمد ارتقاء الدین سہسرامی نے مرتب کیا ہے۔ بکھرے ہوئے علمی سرمایے کی جمع و تدوین ایک بڑی ادبی خدمت ہے۔ مرتب اس میں منمہک نظر آتے ہیں اور یہ ان کی علم وادب کے تئیںگہری دلچسپی بلکہ وفاداری کا ایک منہ بولتا ثبوت ہے۔
اس مجموعہ میں کل چودہ مضامین شامل ہیں۔ ان میںزیادہ تر تو مطبوعہ مضامین ہیں لیکن چند ایک غیر مطبوعہ بھی ہیں۔ حالانکہ اس مجموعے میں اس کی صراحت نہیں ہے۔ لیکن استفسار پر مرتب نے اس کی وضاحت کی ہے۔ امید ہے آئندہ ایڈیشن میں وہ اس کا خیال رکھیںگے۔ ہر مضمون کے اختتام پر اس کی صراحت ہونی چاہیے کہ وہ مطبوعہ ہے یا غیر مطبوعہ، اس طرح یہ بھی کہ وہ کہاں چھپا ہے اور کب؟

Read more

ڈاکٹر ایم ہاشمی قدوائی :95 سال کی تاریخ ہند کو منکشف کرتی آپ بیتی

ہندوستانی سیاست کے ایک بے لوث خادم، مجاہد آزادی، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے سابق استاذ اور سابق ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹر محمد ہاشم قدوائی (پ: 1921) کی دلآویز شخصیت اب اپنی حیات میں لیجنڈ (Legend) کی حیثیت اختیار کرچکی ہے۔ وہ ببانگ دہل کہتے ہیں کہ ’’میں نیشنلسٹ مسلمان ہوں۔‘‘ زیر تبصرہ انگریزی کتاب ’’ایک مسلمان کی حیات اور زمانہ ‘‘ سے بخوبی علم ہوتا ہے کہ ڈاکٹر ہاشم قدوائی کی یہ سوانح اپنے اُس دور کی تاریخ بیان کرتی ہے جبکہ وہ انگریزوں کے غلام ملک میں ایک کم سِن طالب علم تھے۔ان کے چچا ایڈیٹر ’صدق جدید‘ مولانا عبدالماجد دریابادی (1977-1892) جو اُن کے والد سے چھوٹے تھے، اپنے زمانے کے معروف صحافی، دانشور، ادیب اور مفسر قرآن تھے۔

Read more

جشن بہار ٹرسٹ پروگرام :فارسی سے اردو و ہندی کا حسن دوبالا ہوتا ہے

فارسی ایک زبان ہی نہیں،ایک تہذیب بھی ہے جس کے اثرات سے اردو ادب کا حسن دوبالا ہوا۔فارسی نے ہندوستانی تہذیب پر بھی زبردست اثرات چھوڑے ۔جب ایران کے فارسی شعرا ء ہندوستان آئے تو یہاں کی تہذیب و ثقافت پر بھی فارسی کا دلکش اثر ہوا او

Read more

جنگ مستقل حل کا راستہ نہیں : مہاتما گاندھی

مہاتما گاندھی کا ماننا تھا کہ دنیا میں کہیں بھی، کبھی بھی تشدد اور جنگ سے کسی بھی مسئلے یا تنازع کا مستقل حل نہیں ہوا ہے۔ جنگ سے مسئلے کچھ وقت کے لئے ٹل تو جاتے ہیں۔طاقتور کمزور کو ہرا کر، اس سے عارضی طور سے زبردستی اپنی بات منوا تو لیتا ہے، لیکن تشدد یا جنگ سے کوئی ایسا حل نہیں نکلتا جو دونوں فریق کو رضاکارانہ طور پر منظور ہو۔ تشدد کا جواب جب تشدد سے دیا جاتا ہے ، تو اس سے تشدد ہی بڑھتا ہے، کسی مسئلے کا حل نہیں ہوتا ہے۔ اس کے برعکس ، گاندھی جی کا ماننا تھا کہ اصلی لڑائی ایک ہی طرح کی قوت والوں کے بیچ نہ ہوکر

Read more

چھیاسی سالہ اوم پرکاش سونی کا کارنامہ

یہ کیسی عجیب بات ہے کہ دنیا بھر کی خبر لینے والے صحافیوں کی خبر عموماً کوئی نہیں لے پاتا ہے جس کے سبب ان کے بارے میں لوگوں کو بہت کم واقفیت ہوتی ہے۔یہ عدم توجہی تمام زبانوں کے صحافیوں کے ساتھ ہے۔اردو صحافیوں کا بھی حال کم و بیش یہی ہے۔

Read more

تعلیم کے بعد صحت آئین کے بنیادی حقوق میں شامل کیوں نہیں؟

ہندوستان جس تیز رفتاری سے ترقی کی منزلیں طے کررہا ہے، بڑی طاقت بن رہا ہے۔ ساری دنیا اس کی ترقی سے انگشت بدنداں ہے۔ لیکن جب ہم صحت کے شعبے سے متعلق مختلف سروے پر نظر ڈالتے ہیں، تو پتہ چلتا ہے کہ صحت و علاج کے معاملے میں ترقی یافتہ ممالک کی تو بات ہی چھوڑیے، ہم دنیا کے پچھڑے ہوئے ملکوںسے بھی زیادہ پچھڑے ہوئے ہیں۔ سروے سے پتہ چلتا ہے کہ ہندوستانی شہریوں کی اوسط عمر 68 برس ہے، جبکہ چین کے لوگوں کی اوسط عمر 76 سال، سری لنکا کی75 سال اور بنگلہ دیش کے لوگوں کی اوسط عمر 72 سال ہے۔ 2012 میں ہوئے سروے کے مطابق ہندوستان میں ایک لاکھ افراد میں سے 233 افراد لقمۂ اجل بن جاتے ہیں، جبکہ بین الاقوامی سطح پر ایک لاکھ افراد میںمرنے والوںکی اوسط178 ہے۔ گویا ترقی کے معاملے میں ہم لاکھ مریخ پر کمندیں ڈالنے کی بات کر رہے ہوں، لیکن صحت کے شعبے میں ہم نیپال اور بنگلہ دیش جیسے غر یب ملکوںسے بھی گئے گزرے ہیں۔

Read more
Page 1 of 3912345...102030...Last »