ہالینڈ میں مسلمانوں کی حالت زار

اسد مفتی۔ ایمسٹرڈیم ، ہالینڈ

جون 2008میں خبر آئی تھی کہ ہالینڈ کی حکومت نے ایک نئے قانون کی تیاری کا حکم دیا ہے جس کے تحت تارکین وطن کو ہالینڈ میں رہنے کے لئے انتہائی سخت امتحان پاس کرنا ہوگا۔ اس نئے قانون سے ہالینڈ میں مقیم کم از کم پانچ لاکھ مسلمانوں کو سخت مشکلات پیش آسکتی ہیں۔ پھربھی حکومت کی طرف سے اعلان کیا گیا کہ نیا قانون (سعادت حسن منٹو والا نہیں)تارکین کے امور سے متعلق وزیر ریٹا فرڈونک نے تیار کرکے پارلیمنٹ میں پیش کردیا ہے۔ اس

Read more

لندن نامہ

حیدر طباطبائی۔لندن۔یوکے

ابھی عالمی دہشت گردی کے امین اسرائیل کے خلاف دنیا بھر میں آوازیںبلند ہو رہی تھیں جو اس نے فریڈم فلوٹیلا نامی جہاز کو اس لئے بیچ سمندر میں روک لیا تھا کہ یہ جہاز 95ٹن راشن غزہ کے بھوکے پیاسے بچوں، خواتین اور بیمار فلسطینیوں کے لئے لے کر جارہا تھا کہ 5؍جون کو صیہونیت کی دوسری ضر

Read more

یوم مئی ایک تقریب نہیں بلکہ ایک تحریک ہے

اسد مفتی،ایمسٹرڈیم, ہالینڈ
1886میں امریکہ کے مزدوروں نے اپنے لہو سے یوم مئی کی تحریک کا آغاز کیا تھا، وہ ایک نئے ولولے کے ساتھ ایک نئے سفر پر نکلے تھے۔ ان دنوں ان کے لیے اس نوع کے مطالبات بھی نہایت عجیب اور انوکھے قرار دیے جاتے تھے۔ مثلاً مزدوروں سے جانوروں کی مانند بلکہ ان سے بھی بدتر طریقہ و حالات میں کام نہ لیا جائے۔
انہیں اتنی اجرت دی ج

Read more

لفظ’اللہ‘ پر کسی فرد واحد کا حق نہیں

ملیشیا ایک بار پھر سے کچھ غلط بیانات کے سبب بین الاقوامی اخباروں کی سرخیوں میں ہے۔گزشتہ دوہفتہ کے دوران غیر سماجی عناصر نے عبادت کے دس مقامات کو اپنا نشانہ بنایا ہے۔ان مقامات میں عیسائیوں کے گرجا گھر اور سکھوں کے گردوارے شامل ہیں

Read more

ہیتی کی بربادی کے لئے امریکہ ذمہ دار

ہندوستان کے عوام کے لئے ہیتی کبھی اہم نہیں رہاہے۔اس کے باوجود ہندوستانی حکومت کی ہیتی میں موجودگی جنوبی ممالک کے اتحاد کی ایک مضبوط مثال ہے۔2006سے ہی جنوبی افریقہ اور برازیل کے ساتھ ہندوستان ہیتی میں ایک ایسے پروگرام میںلگا ہواہے،

Read more

ہند آسٹریلیائی تعلقات ۔نازک موڑ پر-قسط-2

دنیا کے سبھی ممالک اور ہر معاشرہ میں نسل پرستی اور تعصب عام بات ہے۔مگر سوال یہ ہے کہ اگر اسے ختم نہیں کیا جا سکتا تو کم کیسے کیا جا سکتا ہے؟یا پھر روکا کیسے جا سکتا ہے؟جہاں تک سوال آسٹریلیا کا ہے اس کا حل تین صورتوں میں ممکن ہے کہ فوری طور پرکیا کیا جائے

Read more

مشن کے جی بی اور کیمبرج فائیو

یہداستان اس شخص کی ہے، جس کی پیدائش تو ہندوستان میں ہوئی، لیکن تھا وہ ایک برطانوی فوجی افسر کا بیٹا ، یعنی برطانوی شہری، پر پوری زندگی اس نے ایک ایسی خفیہ ایجنسی کے لئے کام کیا، جو خوف اور قہر کا دوسرا نام ہے۔ کے جی بی کے لئے سال 1949۔ اس سال اسے واشنگٹن میں برطانوی ایمبیسی کا سکریٹری بنا کر بھیجا گیا۔

Read more