تعلیم کے بعد صحت آئین کے بنیادی حقوق میں شامل کیوں نہیں؟

ہندوستان جس تیز رفتاری سے ترقی کی منزلیں طے کررہا ہے، بڑی طاقت بن رہا ہے۔ ساری دنیا اس کی ترقی سے انگشت بدنداں ہے۔ لیکن جب ہم صحت کے شعبے سے متعلق مختلف سروے پر نظر ڈالتے ہیں، تو پتہ چلتا ہے کہ صحت و علاج کے معاملے میں ترقی یافتہ ممالک کی تو بات ہی چھوڑیے، ہم دنیا کے پچھڑے ہوئے ملکوںسے بھی زیادہ پچھڑے ہوئے ہیں۔ سروے سے پتہ چلتا ہے کہ ہندوستانی شہریوں کی اوسط عمر 68 برس ہے، جبکہ چین کے لوگوں کی اوسط عمر 76 سال، سری لنکا کی75 سال اور بنگلہ دیش کے لوگوں کی اوسط عمر 72 سال ہے۔ 2012 میں ہوئے سروے کے مطابق ہندوستان میں ایک لاکھ افراد میں سے 233 افراد لقمۂ اجل بن جاتے ہیں، جبکہ بین الاقوامی سطح پر ایک لاکھ افراد میںمرنے والوںکی اوسط178 ہے۔ گویا ترقی کے معاملے میں ہم لاکھ مریخ پر کمندیں ڈالنے کی بات کر رہے ہوں، لیکن صحت کے شعبے میں ہم نیپال اور بنگلہ دیش جیسے غر یب ملکوںسے بھی گئے گزرے ہیں۔

Read more

خسرہ کا ٹیکہ یا موت کا ٹیکہ

مدھیہ پردیش کا محکمہ صحت بدعنوانی اور لاپروائی کیلئے خاصا بدنام ہے۔اس محکمہ کو لوگ’’ قاتل محکمہ‘‘ تک کہنے لگے ہیں۔حال ہی میں دموہ ضلع کے ہیڈ کوارٹر میں ٹیکہ لگانے کی اسکیم کے تحت خسرے کا ٹیکہ لگانے کے بعد چار بچوں کی موت ہوگئی اور دس بچے شدید طور پر بیمار ہوگئے ۔ریاست کیلئے یہ ایک بہت بڑا سانحہ ہے ۔
وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا

Read more

دو بوند زندگی کی : پولیومہم خود پولیو کا شکار

اتر پردیش کولوگ اکثر الٹا پردیش کہہ کراس کا مذاق اڑاتے ہیں لیکن، یہ ایک تلخ حقیقت ہے ۔آج ساری دنیا کو پولیو جیسی بیماری سے نجات دلانے کے لئے بے تحاشہ اقدامات کئے جارہے ہیں لیکن یہ بڑی عجیب بات ہے کہ اتر پردیش میں پولیو کا شکار ہونے والے بچوں کی تعداد مسلسل بڑھتی جا رہی ہے۔ یہ پولیو بیداری مہم کے تئیں ریاستی حکومت کی لاپروائی نہیں تو آخر کیا ہے؟

Read more
Page 2 of 3123