کشمیر بحران ظلم کی انتہاہے یہ

دہلی سے تین سینئر صحافیوںکی ٹیم کشمیر کی حقیقت کو سمجھنے اور اسے ملک کے سامنے لانے کے لیے وسط ستمبر میںکشمیر کے دورے پر گئی تھی۔ اس ٹیم کی قیادت ’چوتھی دنیا‘ کے چیف ایڈیٹر سنتوش بھارتیہ کررہے تھے اور ان کے ساتھ سیاسی تجزیہ نگار ابھے دوبے او رکالم نویس اشوک وانکھیڑے تھے۔ اس ٹیم نے تحریک ِ حریت کے لیڈر سید علی شاہ گیلانی سے ملنے کی کوشش کی۔لیکن پولیس نے اس ٹیم کو اس کی اجازت نہیںدی جبکہ خود سید علی شاہ گیلانی نے اس ٹیم کو اپنے گھر پر بات چیت کے لیے مدعو کیا تھا۔ بہر حال اس ٹیم نے ان سے کشمیر یاترا کے دوران ہی فون پر بات چیت کی، جسے یہاں ہو بہو شائع کیا جارہا ہے۔

Read more

وزیر اعظم صاحب، یہ ہے کشمیر کا سچ

پیارے وزیر اعظم صاحب، میں ابھی چار دن کے بعد جموں و کشمیر سے لوٹا ہوں اور چاروںدن میں کشمیر کی وادی میں رہا اور مجھے یہ لگا کہ میںآپ کو وہاں کے حالات سے واقف کراؤں۔ حالانکہ آپ کے یہاںسے خط کا جواب آنے کا رواج ختم ہوگیا ہے،ایسا آپ کے ساتھیوںکا کہنا ہے، لیکن پھر بھی میں اس امیدپر یہ خط بھیج رہا ہوں کہ آپ مجھے جواب دیںیا نہ دیں، لیکن خط کو پڑھیںگے ضرور اور پڑھنے کے بعد آپ کو اس میںذرا بھی حقیقت نظر آئے، تو آپ اس میں اٹھائے ہوئے نکات پر دھیان دیں گے۔ مجھے یہپورا یقین ہے کہ آپ کے پاس جموںو کشمیر کو لے کر خاص طور سے وادی کشمیر کو لے کر جو خبریںپہنچتی ہیں، وہ سرکاری افسروں کے ذریعہ اسپانسر شدہ خبریںہوتی ہیں، ان خبروں میںسچائی کم ہوتی ہے۔ اگر آپ کے پاس کوئی ایسامیکانزم ہو جو وادی کے لوگوں سے بات چیت کرکے آپ کو سچائی سے آگاہ کرائے تو میرا یقینی طور پر ماننا ہے کہ آپ ان حقائق کو نظر انداز نہیںکر پائیں گے۔

Read more

مسئلہ کشمیر سنجیدہ اور بھروسہ مندکوششوں کی ضرورت

وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی صدارت میں 28رکنی وفد نے جموں و کشمیر کا دوروز دورہ کیا ۔یہ وفد یہاں امن بحال کرنے کی سمت میں کوئی پیش رفت کرنے میں ناکام ہوگیا۔یہ اعلیٰ سطحی وفد 4ستمبر کی صبح سری نگر ایئر پورٹ سے سیدھے ڈل جھیل کے کنارے قائم شیر کشمیر انٹرنیشنل کنوینش سینٹر پہنچا ،جہاں اس وفد کے ممبروں نے دن بھر الگ الگ سیاسی پارٹیوں کے لیڈروں سے ملاقات کی۔ پی ڈی پی، نیشنل کانفرنس، کانگریس، پیپلس ڈیموکریٹک فرنٹ ، پیپلس کانفرنس ، ڈیموکریٹک پارٹی نیشنلسٹ وغیرہ کے لیڈروں نے اس وفد سے ملاقات کی،لیکن یہ کوئی غیر معمولی بات نہیں تھی کیونکہ یہ سبھی پارٹیاں اور لیڈر کشمیر مسئلے پر ہندوستانی سرکار کے بنیادی موقف کی پوری حمایت کرتے ہیں۔ یعنی یہ تمام پارٹیاں جموں و کشمیر کو ہندوستان کا حصہ بھی مانتے ہیں اور ہندوستان کے آئین کے ساتھ وفاداری کا حلف بھی لیتے رہتے ہیں۔ یہ سبھی پارٹیاں اور ان کے لیڈر کشمیر میں جاری علاحدگی پسندوں کی تحریک کی مخالفت بھی کررہے ہیں اور یہ تمام لیڈر آئے دن نئی دلی جاکر وہاں مرکزی سرکار کے افسروں اور مختلف پارٹیوں کے لیڈروں سے ملتے رہتے ہیں۔

Read more

وقف املاک پر قبضے ,وہی قاتل وہی منصف ٹھہرے

وقف املاک امت اسلامیہ کے ایسے قیمتی سرمائے ہیں جو جہاں ایک طرف واقف کے لئے ثواب جاریہ ہیں تو دوسری طرف امت کے مجموعی طورپرامپاورمنٹ کے بہترین اور موثر ذرائع ۔ ہندوستان میں کل6 لاکھ ایکڑ اراضی پر پھیلے ہوئے 4.9 لاکھ رجسٹرڈ وقف املاک ہیں جن میں سے ایک قابل ذکر تعداد کسی نہ کسی کے قبضے اور استعمال میں ہیں۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ ان املاک میں ایسی بھی ہیں جو کہ چند مسلم تنظیموں، اداوں اور شخصیات کی تحویل میں ہیں،وہی تنظیمیں،ادارے اور شخصیات جو کہ دوسروں کے قبضوں کی باتیں کرتے تھکتے نہیں ہیں۔ ان سب حقائق کا نتیجہ یہ ہے کہ وقف املاک کا ملت کے امپاورمنٹ میں استعمال نہیں ہو پاتا ہے۔اس کا صاف مطلب یہ ہے کہ وہی قاتل، وہی منصف ٹھہرے۔اس مضمون میں انہی تمام امور کا تنقیدی جائزہ لیا گیا ہے۔

Read more

نیا قومی تعلیمی پالیسی ڈرافٹ سیکولر اور عوامی امنگوں کا ترجمان نہیں

بی جے پی قیادت والی این ڈی اے حکومت چلی ہے ملک کو فرنگیوں اور دیگر اثرات سے آزاد نئی قومی تعلیمی پالیسی دینے ۔ مگر ڈرافٹ کی تفصیلات پر نظر ڈالتے ہی یہ محسوس ہوجاتا ہے کہ اس کی اصل منشا گنگا جمنا تہذ یب والے سیکرلر اور عوامی امنگوں کے ترجمان نظریوںکو ختم کرکے ہندوستان کو ایک مخصوص ایک رخی نظریہ کی طرف لے جانا ہے۔ عام عوام خصوصاً مسلمان، دیگر اقلیتیں اورکمزور طبقات اس ڈرافٹ سے صرف غیر مطمئن ہی نہیں ،خوفزدہ بھی ہیں۔ اس کا اندازہ ان کے اندر پائی جانے والی بے چینی اور خوف و ہراس سے ہوتا ہے۔ اس رپورٹ میںان ہی باتوں کا تجزیہ پیش کیا گیا ہے اور مشورے دیے گئے ہیں۔ آئیے، دیکھتے ہیںکہ کس طرح موجودہ شکل میں یہ ڈرافٹ ملک کے عوام کو منظور نہیں ہے۔

Read more

خلیجی ممالک میںچلا ’ریسکیو آپریشن‘ جنگجو ثابت ہواسیاست کا جنرل

فوج سے لے کر سیاست تک مورچے پر ڈٹے رہنے والے جنگجو ثابت ہورہے ہیں سابق فوجی سربراہ او رموجودہ وزیر مملکت برائے امور خارجہ جنرل وی کے سنگھ۔ جنرل وی کے سنگھ جنگ زدہ، تشدد کے شکار اور پریشانی میںمبتلا علاقوں سے ہندوستانیوں کو محفوظ نکال کر لانے کے تمام کامیاب آپریشنوں کے ہیرو کے طور پر ابھر کر سامنے آئے ہیں۔ لیبیا ہو یا عراق، یمن ہو یا سوڈان، یوکرین ہو یا سعودی عرب، جہاںبھی ہندوستانی پھنسے، انھیں وہاں سے محفوظ نکال کر ہندوستان لانے کی ذمہ داری جنرل وی کے سنگھ ہی کوسونپی گئی او رانھوںنے پُر خطر حالات میں اپنی فوجی مہارت اور حکمت عملی کا استعمال کرکے ہندوستانیوں کو محفوظ باہر نکال لیا۔ سیاسی گلیارے میں وی کے سنگھ کو اب سیاست کا جنرل کہا جانے لگا ہے۔ جنگ اور تشددکے شکارملکوں میںسے اپنے شہریوںکو حفاظت کے ساتھ باہر نکال کر لانے سے ہندوستان کی دنیا بھر میںایسی ساکھ بنی کہ امریکہ، فرانس سمیت 40 مختلف ملکوں نے تشدد کے شکار ممالک میں پھنسے اپنے شہریوں کو نکالنے میںجنرل وی کے سنگھ سے مدد مانگی اور حکومت ہند کے نمائندے کے طور پر انھوں نے ہندوستانیوں کے ساتھ ساتھ غیر ملکی شہریوںکو بھی بحفاظت باہر نکالنے میں کامیابی حاصل کی ۔

Read more

انکم ڈسکلوزر اسکیم فیل، سات لاکھ نوٹس بیرنگ واپس کالا دھن جیتا مہابلی ہارے

کالا دھن کو سامنے لانے کی مرکزی سرکار کی اسکیم ’انکم ڈس کلوزر اسکیم‘ ( آئی ڈی ایس ) فیل ہو گئی۔ اربوں روپے کا لین دین کرنے والے لوگوں کا پتہ فرضی پایا گیا ہے۔ 6لاکھ 90 ہزار نوٹسیں بیرنگ واپس لوٹ آئی ہیں۔ اسکیم کے ناکام ہونے سے پریشان سینٹرل ریونیو سکریٹری ہنس مُکھ آدھیا ریویو میٹنگ ادھوری چھوڑ کر چلے گئے۔ آئی ڈی ایس کی تشہیر کے لئے لگائی گئی ہورڈنگس سے وزیر اعظم نریندر مودی کی تصویریں ہٹانے کی ہدایت جاری کر دی گئی ہے۔ یہ تین اہم حقائق اس تفصیلی خبر کے ذریعہ ہیں۔

Read more

کشمیریوں کا درد گولی سے نہیں بولی سے سمجھنا ہوگا

وادی کشمیرشورش زدہ ہے۔ برہان وانی کے مارے جانے کے بعد بھڑکے تشدد میں 50 لوگ مارے گئے، سیکڑوں لوگ زخمی ہوئے اور جس طرح تناتنی بڑھی اس سے وادی میں یہ سوال تیزی سے اٹھا کہ کشمیر میں بیلیٹ بڑا ہے یا پیلیٹ۔ سری نگر کے دو سب سے بڑے میڈیکل انسٹی ٹیوٹس اور ہاسپٹل، شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسیز (سورا، سری نگر) او رشری مہاراجہ ہری سنگھ ہاسپٹل (سری نگر) اس وقت زخمیوںسے بھرے پڑے ہیں۔ اس کے علاوہ وادی کے جو دوسرے ضلع اسپتال ہیں، وہاں بھی زخمیوںکا علاج چل رہاہے۔ زخمیوںمیںکم عمر کے لڑکے بھی ہیں، کچھ نوجوا ن بھی ہیں اور کچھ لڑکیاںبھی ہیں۔ یہ سبھی لوگ گزشتہ کچھ دنوں کے درمیان زخمی ہوئے ہیں۔ یعنی یہ سارا سلسلہ اس وقت شروع ہوا، جب 8 جولائی کی شام ساڑھے آٹھ بجے حفاظتی دستوں نے سری نگر سے 80 کلو میٹر دور، جنوبی کشمیر کے کوکرناگ علاقے میں کارروائی کرکے وہاں موجود تین دہشت گردوں کومار گرایا۔ حفاظتی دستوں کی ٹیم سری نگر سے ملی ایک خاص اطلاع کی بنیاد پر یہ آپریشن کرنے گئی تھی۔ مارے گئے تین دہشت گردوں میںایک برہان وانی بھی تھا۔ ا س کی عمر 22 سال تھی۔ اسے گزشتہ دو سال میںکشمیر میںبڑی شہرت ملی تھی، کیونکہ وہ کمپیوٹر کاماہر تھااور فیس بک پر سرگرم رہتا تھا۔ جب اس کے مارے جانے کی خبر وادی کشمیر میںپھیلی، تو شہر او رقصبے کے نوجوان سڑکوں پر اتر کر مظاہرہ کرنے لگے اوریہ سلسلہ دیر رات تک چلتا رہا۔ دوسرے دن اس کے جنازے میں دو لاکھ سے زیادہ لوگ شریک ہوئے۔

Read more

سماجوادی پارٹی کی سرکار سے پوچھے جارہے سوال مسلمان مذاق ہیں کیا

سماج وادی پارٹی کی سرکار نے اتر پردیش میں مسلمانوں کا مذاق بنا کر رکھ دیاہے۔ ساڑھے چار سال کے دور حکومت میں وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو نے اقلیتوں کی بہبود کے لئے کچھ نہیں کیا۔ مسلمانوں کو فرضی بیانوں،جھوٹے اشتہارات اور کھوکھلے لالچ دے کر بہلایا جاتا رہا۔ اقتدار سنبھالنے کے بعد سماج وادی پارٹی کی سرکار نے مسلمانوں کی بہبود کے لئے جن اسکیموں اور پروگراموں کا اعلان کیا،وہ سب ان ساڑھے چار برسوں میں بے معنی ثابت ہوئے۔ جس منشور کے ذریعہ سماج وادی پارٹی انتخاب جیت کر آئی،اس میں اقلیتوں کی بہبود کے لئے جو وعدے کئے

Read more

مودی جی!لوگوں کے اعتماد کے ساتھ حکومت کیجئے نیت صحیح، پالیسی بدلیں

کمل مرارکا
وزیر اعظم نے حال ہی میںکہا ہے کہ میڈیا کاایک خاص طبقہ انھیںاقتدار میںنہیںآنے دینا چاہتا تھایا کہہ سکتے ہیںکہ میڈیا کو یہ امید نہیںتھی کہ وہ اقتدار میں آسکتے ہیں۔ ان کی سب سے بڑی چنوتی یہی ہے کہ وہ میڈیا کے اُس طبقے کا ابھی تک دل نہیںجیت سکے ہیں۔ وزیر اعظم کے ذریعہ دیا گیایہ ایک بہت اہم بیان ہے۔ میںانھیںایک تجویزدینا چاہتا ہوں۔ حالانکہ، میںان کے گروپ سے نہیں جڑا ہوں، ا س لیے امیدہے کہ میری تجویز کو صحیح معنی میں نہیںلیا جائے گا۔

Read more
Page 9 of 37« First...7891011...2030...Last »