اڑتالیس لاکھ کروڑ کا مہا گھوٹالہ :تھوریم گھوٹالہ

منیش کمار
جب سے یو پی اے سرکار بنی ہے، تب سے ملک میں گھوٹالوں کا تانتا لگ گیا ہے۔ ملک کے لوگ یہ ماننے لگ گئے ہیں کہ منموہن سنگھ کی سرکار گھوٹالوں کی سرکار ہے۔ ایک کے بعد ایک بڑے گھوٹالے سامنے آ رہے ہیں۔ چوتھی دنیا نے جب 26 لاکھ کروڑ کے کوئلہ گھوٹالے کا پردہ فاش کیا تھا، تب کسی کو یہ یقین بھی نہیں ہوا تھا کہ ملک میں اتنے بڑے گھوٹالے کو انجام دیا جاسکتا ہے۔ آج ہم

Read more

جمہوریت کو بچانے کا وقت آ گیا

سنتوش بھارتیہ
ہندوستان میں جمہوریت کی اتنی خراب حالت آزادی کے بعد کبھی نہیں ہوئی تھی۔ پارلیمانی جمہوریت میں سیاسی پارٹیوں کا بہت اہم مقام ہے، لیکن المیہ یہ ہے کہ آج پارلیمانی جمہوریت کو چلانے والی ساری پارٹیوں کا کردار تقریباً ایک جیسا ہو گیا ہے۔ چاہے کانگریس ہو یا بھارتیہ جنتا پارٹی یا دیگر سیاسی پارٹیاں، جن کی نمائندگی پارلیمنٹ میں ہے یا پھر وہ سبھی جو کسی نہ کسی ریاست میں برسر اقتدار

Read more

اس ملک کی گندگی ایک کیجریوال سے نہیں جائے گی

ڈاکٹر منیش کمار
دوسال پہلے تک جے پرکاش تحریک اور بد عنوانی کے خلاف وی پی سنگھ کی تحریک میں حصہ لینے والے لوگ بھی یہ کہتے تھے کہ زمانہ بدل گیا ہے ۔اب ملک میں کچھ نہیں ہو سکتا۔ آج کے نوجوان تحریک نہیں چلا سکتے۔ ملک میں اب کوئی بھی تحریک ممکن نہیں

Read more

یو پی اے حکومت کا ایک اور گھوٹالہ

ڈاکٹر منیش کمار
آنے والے دنوں میں یو پی اے حکومت کی پھر سے کرکری ہونے والی ہے۔ 52 ہزار کروڑ روپے کا نیا گھوٹالہ سامنے آیا ہے۔ اس گھوٹالے میں غریب کسانوں کے نام پر روپیوں کی بندر بانٹ ہوئی ہے۔ کسانوں کے قرض کو معاف کرنے والی اسکیم میں گڑبڑی پائی گئی ہے۔ اس اسکیم کا فائدہ ان لوگوں نے اٹھایا، جو اس کے اہل نہیں تھے۔ اس اسکیم سے غریب کسانوں کو فائدہ نہیں ملا۔ حیران کردینے

Read more

یہ رشوت نہیں تو کیا ہے؟

کمل ایم مرارکا
نئی نئی بنی سیاسی پارٹی (اروِند کجریوال کے ذریعے اعلان کردہ) نے سونیا گاندھی کے داماد رابرٹ واڈرا پر ایک ساتھ کئی الزامات لگائے ہیں۔ ان تمام الزامات میں کئی چیزیں شامل ہیں اور اس میں کئی حقائق اور اعداد و شمار بہت ہی بڑے ہیں۔ لیکن ان سب کے درمیان اگر بات اصولوں کی کی جائے تو دو چیزیں بالکل واضح ہیں۔ پہلا یہ کہ رابرٹ واڈرا کی کل پہچان یہی ہے کہ وہ سونیا گاندھی کے داماد

Read more

کانگریس کے ایجنڈے سے سماجواد غائب

کمل ایم مرارکا
حال ہی میں ملک میں ہوئے بدلائو نے ایک بنیادی سوال پوچھنے کے لئے مجبور کر دیا ہے۔ سوال یہ ہے کہ آخر یہ ملک کس کا ہے؟سرکار کے ذریعہ ملک کے لئے بنائی گئی اقتصادی پالیسیاں اور سیاسی ماحول سماج کے کس طبقے کے لوگوں کے فائدے کے لئے ہونے چاہئیں؟ لازمی طور پر یہی جواب ہوگا کہ سرکار کو ہر طبقے کا خیال رکھنا چاہئے۔ آج بھی ملک کے ساٹھ فیصد لوگ کھیتی پر

Read more

مہاراشٹر میں سینچائی گھوٹالہ: کب لوٹوگے عوام کو

مہاراشٹر کے نائب وزیر اعلیٰ اور شرد پوار کے بھتیجے، اجیت پوار نے اپنے عہدہ سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ ان کے استعفیٰ کے بعد ریاست میں سیاسی بھونچال پیدا ہوگیا ہے۔ اجیت پوار پر الزام ہے کہ آبی وسائل کے وزیر کے طور پر انہوں نے تقریباً 38 سینچائی پروجیکٹوں کو غیر قانونی طریقے سے منظوری دی اور اس کے بجٹ کو من مانے ڈھنگ سے بڑھایا۔ دریں اثنا، سی اے جی نے

Read more

زندہ رہنے کے لئے سیمنٹ ضروری ہے یا اناج

ابھیشیک رنجن سنگھ
تقریباً پانچ دہائی قبل ملک کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لعل نہرو نے 2 اکتوبر، 1959 کو جس راجستھان کے ناگور ضلع میں پنچایتی راج کی شروعات کی تھی، اسی ریاست کی پنچایتوں اور گرام سبھاؤں کی اندیکھی کرنا یہ ثابت کرتا ہے کہ گرام سوراج کا جو خواب مہاتما گاندھی اور ڈاکٹر رام منوہر لوہیا نے دیکھا تھا، وہ آزادی کے 64 سالوں بعد بھی پورا نہیں ہوسکا۔ ہم بات کر رہے ہیں جھن

Read more

مئی میں ہوں گے وسط مدتی انتخاب

سنتوش بھارتیہ
آخر کار کانگریس پارٹی اور سرکار نے فیصلہ کر لیا کہ انہیں بجٹ اجلاس کے دوران یا بجٹ اجلاس ختم ہوتے ہی الیکشن میں چلے جانا ہے۔ اقتصادی صورتِ حال تیزی سے بگڑ رہی ہے، اس لیے یہ فیصلہ لیا گیا۔ یہ بھی فیصلہ لیا گیا کہ سخت بجٹ لایا جائے اور عام لوگوں کو پریشانی میں ڈالنے کے جتنے بھی طریقے ہو سکتے ہیں، ان طریقوں کو نافذ کر دیا جائے۔ آنے والا بجٹ ہندوستان کے آئین

Read more

حکومت کشمیر کے درد کو بھی سمجھے

جموں و کشمیر ڈوگرا شاہی میں سو سال تک رہا اور سو سال کے بعد جب ہندوستان آزاد ہوا ، اور پاکستان بنا تو جموں و کشمیر اپنی بدقسمتی اور لیڈرشپ کی ہوس پرستی کی وجہ سے پورے مشرقی ہندوستان کی جو اسٹیٹ اور رجواڑے وغیرہ تھے، ان میں یہ واحد اسٹیٹ ہے جس نے متنازع شکل اختیار کر لی۔ ایک طرف جموں و کشمیر کی خوبصورتی دیکھ لیجئے اور دوسری طرف دیکھ لیجئے کہ یہاں کے لوگ کس مصیبت میں مبتلا ہیں۔ جگہ جگہ آپ فوج دیکھیں گے، جگہ جگہ بنکر دیکھیں گے، جگہ جگہ فوجی بندوقیں شانوں پر

Read more