یہ جارج کو مٹانے کی سازش ہے!

پچیس سالوں تک آپ کسی شخص کی طرف پلٹ کرنہیں دیکھتے۔25یوں مرتبہ وہ شخص بیمار ہوتا ہے۔ اسپتال میں داخل ہوتاہے۔ آپ اس کی خیریت تک نہیں پوچھتے اور، جب آپ کو اچانک معلوم ہوتا ہے کہ زندگی سے جوجھتا وہ بیمار اور لاچار آدمی 13کروڑ روپیوں کا مالک ہے

Read more

رفتہ رفتہ موت کے قریب جارہے ہیں رکشہ پلر

کولکاتہ کی سڑکوں سے ہاتھ رکشہ ہٹانے کی اب کوئی جلد بازی نظر نہیں آتی۔ شاید آئندہ اسمبلی انتخابات تک حکومت کو اس کی ضرورت نہیں ہے۔ کبھی ہاوڑا پل کے ساتھ ساتھ ہاتھ رکشہ کو بھی کولکاتہ کی شناخت کے طور پر پیش کیا جاتاتھا۔ یوم جمہوریہ کی جھلکیوں میں گنیسی اپنی ٹنٹنیا گاڑی کو لئے راج پتھ پر ٹہلتا نظر آتاتھا۔

Read more

دو بوند زندگی کی : پولیومہم خود پولیو کا شکار

اتر پردیش کولوگ اکثر الٹا پردیش کہہ کراس کا مذاق اڑاتے ہیں لیکن، یہ ایک تلخ حقیقت ہے ۔آج ساری دنیا کو پولیو جیسی بیماری سے نجات دلانے کے لئے بے تحاشہ اقدامات کئے جارہے ہیں لیکن یہ بڑی عجیب بات ہے کہ اتر پردیش میں پولیو کا شکار ہونے والے بچوں کی تعداد مسلسل بڑھتی جا رہی ہے۔ یہ پولیو بیداری مہم کے تئیں ریاستی حکومت کی لاپروائی نہیں تو آخر کیا ہے؟

Read more

ارے ! میں نتن گڈکری ہوں

موقع تھا بی جے پی کے سب سے سینئر لیڈر اور ملک کے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی جی کے یوم پیدائش کا۔اور مبارکباد دینے کے لئے ملک کے اہم لیڈر بھی موجود تھے۔اس مخصوص موقع پر انوپ جلوٹا سبھی کو بھجن اور غزلیں سنارہےتھے۔سامنے صوفے پر لال کرشن اڈوانی اور بہار کے آزاد ممبر پارلیمنٹ دگوجے سنگھ بیٹھے تھے

Read more

اف، یہ مہنگائی!

کیا آپ جانتے ہیں کہ اس وقت دہلی کے بازاروں میں گھی تقریباً 250روپے فی کلو گرام کے نرخ پر فروخت ہو رہا ہے۔جی ہاں چونکئے مت، یہ ہم آپ کو دیسی گھی کی قیمت نہیں بتا رہے ہیں ۔ یہ اسی ڈالڈا گھی کا بھاو¿ ہے۔ جسے ہمارے بزرگ کھانا بھی پسند نہیں کرتے تھے ۔ آپ سوچ رہے ہوں گے کہ گھی مہنگا ہوا تو کیا فرق پڑتا ہے سرسوں کے تیل میں کھانا بنا کر کام چلا لیا جائے گا۔ لیکن، سرسوںکا تیل بھی کوئی کوڑیوں کے مول نہیں ہے۔ یہ بھی اس وقت 70-75روپے فی کلو گرام کے حساب سے فروخت ہو رہا ہے۔

Read more

شمالی ہندوستان، ٹیکسیاں، کانگریس اور ٹھاکرے

مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ اشوک راﺅ چوان اور ان کی وزارت سے ایسی نادانی کی امید کسی کو نہ تھی۔ ایک ایسی نادانی جس نے زبان کے ذرئیے نہ صرف فرقہ واریت کو فروغ دیا بلکہ علاقہ پرستی کو بھی جانے انجانے ہوا دے گئی۔ اس نے پہلے سے ہی مراٹھی بنام غیر مراٹھی کے جھگڑے میں پس رہی ممبئی اور شمالی ہندوستانیوں کے ہندی زبان کے مس¿لہ کے ساتھ ساتھ اب ٹیکسیوں کو لیکرایک طرح سے زخموں پر نمک پاشی کا کام کیا ہے۔

Read more

ہاتھی تشدد پر کیو ں اتر آئے ہیں؟

اگر خبروں پر یقین کیا جائے تو گزشتہ دو صدیوں کے دوران ہاتھیوں نے نہ صرف چھتیس گڑھ میں120سے زائد انسانی زندگیاں ختم کر دی ہیں۔بلکہ اعداد و شمار پر نظر ڈالیں تو ہم دیکھیں گے کہ ترقی کے نام پر جنگلوں کو کاٹنے سے ما حولیات کو کتنا نقصان پہنچا ہے ۔ اپنے ٹھکانوں پر قبضہ ہوتے دیکھ کر جانور شہری علاقوں کا رخ کر رہے ہیں۔ اسی وجہ سے وہ تشدد پسند بھی ہوتے جا رہے ہیں۔

Read more