دادا صاحب پھالکے ایوارڈ: پھر نظر انداز کیا گیا پران کو

سال 2010کے دادا صاحب پھالکے ایوارڈ سے سینئر فلمساز بالا چندر کو نوازا جائے گا۔وہ گزشتہ 45سالوں سے ہندوستانی سنیما میں سرگرم ہیں۔بالا چندر کو اس ایوارڈ کے لئے منتخب کئے جانے کا مطلب ہے کہ 91سالہ پران کو اس مرتبہ بھی اس ایوارڈ سے محروم رکھا جائے گا۔ دادا صاحب پھالکے ایوارڈ فلم انڈسٹری میں ناقابل فراموش تعاون کے لئے دیا جاتا ہے، لیکن شاید 60سے زیادہ سالوں تک اداکاری کرنے والے اس اداکارکی خدمات کو جیوری کے ممبر ان ناقابل فراموش نہیںمانتے ۔ شروعات کے صرف 20سال، جبکہ وہ بڑے ہو رہے تھے، چھوڑ دئے جائیں تو ان کی پوری زندگی فلم انڈسٹری کو وقف رہی ۔چالیس سال ہو گئے، پران کو فلم

Read more

منوج کمار کا فلمی سفر

ایم سلیم
ہندی فلم انڈسٹری میں منوج کمار کا نام ایسے فنکار کے طور پر لیا جاتا ہے ، جس نے فلم سازی کے ساتھ ساتھ ، ہدایت کار،کہانی کار اور بے مثال اداکارانہ صلاحیتوں سے بھی ناظرین کے دلوں میں اپنا ایک مخصوص مقام بنایا ہے۔سال 1957سے 1962تک منو ج کمار فلم انڈسٹری میں اپنی جگہ بنانے کے لئے جدوجہد کرتے رہے اور آخر کار ان کی جدوجہد کام آئی اور فلم ’’فیشن‘‘ سے انھوں نے اپنے فلمی کریئر کا آغاز کیا۔اس کے بعد انہیں جو بھی کردار ملا اسے وہ اسے ہاتھوں ہاتھ لیت

Read more

تو جگمگاتی رہے گی جہاں بھر میں

سلمان علی
عظیم اداکارہ ایلزبتھ ٹیلر کا نام اداکاری کی دنیا میںہمیشہ ایک روشن ستارے کی طرح چمکتا رہے گا۔بے مثال اداکارانہ صلاحیتوں کی مالک اور لاجواب حسن کی ملکہ الزابتھ اپنی رومانوی طبیعت اور شاندار طرز زندگی کے سبب ہمیشہ سرخیوں میں رہیں۔ یقینی طور پر ہالی ووڈ کوان کی کمی ہمیشہ محسوس ہوتی رہے گی۔ہالی ووڈ میں اپنے کریئر کے شباب پر انہیں سب سے بہترین اور خوبصورت اداکارہ کے طور پر جانا جاتا تھا اور79سال کی عمر میں بھی ان کے رومانوی انداز اورگ

Read more

تم کو بھلا نہ پائیں گے

سلمان علی
بالی ووڈ کی یہ ریت رہی ہے کہ اس میں ہر سال کئی نئے و پرکشش چہرے داخل ہوتےہیں، کچھ کامیابی کی منزلیں طے کرکے آسمان پر مانند روشن ستارہ چمکتے ہیں توکچھ گمنامی کی تاریک وادیوں میںکہیں گم ہو جاتے ہیںنیز جہاں ہر سال کئی نئے چہرے بالی ووڈ کی چمک میں اضافہ کرتے ہیں وہیں ہر سال کئی معروف و شناساچہرے اس دنیا کوخیر باد بھی کہتے ہیں۔ آج ہم ایک ایسے ہی اداکار کی موت پر غم کا اظہار کر رہے ہیں جس نے اپنے منفرد انداز بیان کے سبب لوگوں کے

Read more