اب سنیما ہال میں غلطی سے بھی نہ کریں یہ حرکت،بھرنا پڑسکتاہے10لاکھ کا جرمانہ

Share Article
demo-cinema-hall
مرکزی کابینہ نے فلموں کی پائیریسی (Piracy)روکنے کے لئے کابینہ نے سنیمیٹوگرافی ایکٹ 1952میں تبدیلی کی اجازت دے دی ہے۔اس تبدیلی کے بعد اب سنیماہال میں فلموں کو ریکارڈ کرنے اور انٹرنیٹ پر ڈالنے پر 10لاکھ روپے تک کا جرمانہ ہو سکتا ہے۔اس کے علاوہ مجرم کو 3سال تک کے لئے جیل بھی بھیجا جا سکتا ہے۔بالی ووڈ سے جڑے تمام لوگوں نے اس فیصلہ کا خیرمقدم کیاہے۔
کابینہ کی میٹنگ کے بعد مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں کابینہ نے سینیمیٹوگرافی ایکٹ میں تبدیلی کے لئے اجازت دے دی ہے۔اس کے بعد فلم کو بغیر پروڈیوسر یا کمپنی کی اجازت کے بنا ریکارڈ کرنا جرم ہوگا۔
نئے بدلاؤ کے بعد اب جرم کرنے والے کو 3سال کی قید یا 10لاکھ روپے کا جرمانہ یا دونوں ہی سزا دی جائیں گی۔اس ایکٹ میں تبدیلی کی وجہ بڑے پیمانے پر ہورہی پائیریسی کو روکنا ہے۔آپ کو بتادین کہ پچھلے دنوں پائیریسی کے چلتے ہی’ منیکرنیکا‘اور’ اری‘ جیسی کئی فلموں کے ریلیز ہونے کے کچھ دن بعد ہی انٹرنیٹ پر اپلوڈ کردیا گیا تھا۔آپ کوبتادیں کہ پائیریسی کی وجہ سے فلمو ں کی کمائی پراچھاخاصا اثرپڑتاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *