سی اے اے مظاہرہ : چودہ دن بعد ایکتا جیل سے رہا، ماں کو دیکھ معصوم بیٹی خوشی سے اچھل پڑی

Share Article

شہریت ترمیم ایکٹ (سی اے اے) کی مخالفت میںمظاہرہ کے دوران گرفتار سماجی کارکن ایکتا شیکھر جمعرات صبح ضلع جیل سے رہا ہو گئیں۔ایکتا مامورگنج واقع اپنے رہائش گاہ پر جیسے ہی پہنچی ان کی سوا سال کی معصوم بچی چمپک ماں کو دیکھ کر خوشی سے اچھل کھلکھلا کر ہنس پڑی۔

گزشتہ 14 دنوں سے ماں کی گود اور دلار کے لئے ترستی معصوم کی خوشی دیکھ کروہاں موجود لواحقین جذباتی ہو گئے۔اس دوران ایکتا نے بتایا جیل میں بیٹی کی فکر ستائے جا رہی تھی۔ چمپک میرے دودھ پر ہی منحصر ہے۔ جیل میں سماجی مسائل پر رہی یہ میرے لئے فخر کی بات ہے، لیکن بیٹی سے دوری انتہائی شدید تکلیف دہ رہا۔ ایکتا نے بتایا شام تک شوہر روی شیکھر بھی رہا ہو جائیں گے۔

گزشتہ 19 دسمبر کو شہر میں لاگو دفعہ 144 کے باوجود سماجی تنظیموں اور مختلف جماعتوں کے کارکنوں نے بینیاباغ سے سی اے اے کی مخالفت میں مزاحمت مارچ نکالا تھا۔ اس معاملے میں پولیس نے 56 افراد کو گرفتار کیا تھا۔ گرفتار سماجی کارکنوں میں ایکتا شیکھر اور روی شیکھر (میاں بیوی) بھی شامل رہے۔ایکتا کے جیل میں بند ہونے کے بعد اس کی معصوم بچی کو لے کر ساس، شوہر کے بڑے بھائی انتہائی فکر مند رہے۔ معصوم بچی گزشتہ 14 دنوں سے ماں سے نہ تو رو رو کر بیمار ہو گئی۔ یہ دیکھ ایکتا کی ساس شیلا تیواری نے چمپک کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی کے پارلیمانی دفتر میں بھی بہو اور بیٹے کی رہائی کے لئے فریاد کی تھی۔ گزشتہ بدھ کو عدالت نے ایکتاکی ضمانت منظور کر لی۔ صبح ایکتا کے ساتھ 15 دیگر سماجی کارکنوں کی بھی جیل سے رہائی ہو گئی۔ اس معاملے میں دیگر ملزمان کی ضمانت منظور ہو گئی ہے۔

اپر ضلع جج ہشتم سرویش کمار پانڈے کی عدالت نے سب کو 25-25 ہزار روپے کے مچلکاجمع کرنے کی ہدایت بھی دی ہے۔ اس معاملے میں گرفتار تین دوسرے لوگوں کی ضمانت عرضی پر مختلف سماعت ہوگی۔ گرفتار کارکنوں پر الزام تھا کہ شہر میں دفعہ 144 نافذ ہونے کے باوجود بغیر اجازت کے حساس علاقے بینیاباغ سے جلوس نکال کر ملک مخالف نعرے بازی کی تھی۔ جلوس نکالنے سے منع کرنے پر بھیڑ میں شامل کچھ لوگوں نے پولیس فورس کے ساتھ دھکا مکی کی تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *