سب انسپکٹر کی بیٹی بھی محفوظ نہیں،اسپتال میں داخل

Share Article
اترپردیش کے کانپور میں پولس سب انسپکٹر کی نابالغ بیٹی کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کی واردات انجام دینے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔کانپورکے گیتانگرکے ایک پارٹمنٹ میں بی ٹیک کے طلبانے داروغہ کی نابالغ بیٹی کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کی۔ملزمان متاثرہ لڑکی کی حالت بگڑنے پر اسے بابوپورا تھانے کے سامنے چھوڑکرفرارہوگئے۔طالبہ گھرپہنچی تواہل خانہ کومعاملے کی جانکاری ہوئی ۔ نابالغ طالبہ کونوبستہ کے ایک پرائیویٹ اسپتال میں داخل کرایاگیاہے۔معاملے کی اطلاع ملتے ہی سینئر پولس سپرنٹنڈنٹ انت دیو، پولس سپرنٹنڈنٹ (مغرب) سنجیو سمن، پولس اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ، فورنسک ٹیم کے ساتھ پہنچے۔ماں نے چارطلباکے خلاف کاکادیوتھانے میں اجتماعی آبروریزی کی رپورٹ درج کرائی ہے۔ پولس نے بدھ کو بتایا کہ کانپور میں تعینات سب انسپکٹر کی 15 سالہ بیٹی کے ساتھ چار انجینئرنگ کے طلبہ نے اجتماعی طور پر آبروریزی کی۔ 11 ویں کلاس کی طالبہ کیساتھ منگل دیر رات یہ واردات انجام دیا گیا۔
بتایاجارہاہے کہ بابوپوروا تھانہ رہائشی داروغہ کی بیٹی کی سی ایس جے ایم یو(یوآئی آئی ٹی) سے بی ٹیک کررہے انوراگ سے دوستی تھی۔انوراگ گیتانگرعلاقے میں واقع آبھا اپارٹمنٹ میں اپنے تین دوستوں کے ساتھ ایک فلیٹ میں کرائے پررہتاہے۔اس نے 25دسمبر کی دوپہرکرسمس پارٹی کا جھانسا دیکر طالبہ کوملنے کیلئے فلیٹ میں بلایا۔الزام ہے کہ انوراگ نے طالبہ کے ساتھ آبروریزی کی۔اس کے بعد فلیٹ میں رہ رہے ان کے دوست جیکی دوبے، شوبھم یادواورابھیشیک کمار نے باری باری سے ریپ کیا۔طالبہ کی حالت بگڑنے پرابھیشک اپنی بائک سے بابوپوروا تھانے کے سامنے چھوڑکرفرارہوگیا۔گھرپہنچی طالبہ نے اہل خانہ کوآپ بیتی بتائی توسبھی کے ہوش اڑگئے۔منگل دیررات طالبہ کی ماں نے چاروں طلبا کے خلاف کاکادیوتھانے میں تحریردی۔ اس معاملے میں کاکا دیو پولس نے ایف آئی آر درج کرتے ہوئے بدھ کو دو ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ حادثے کے سلسلے میں پولس ان سے پوچھ تاچھ کررہی ہے۔ مفرور دو دیگر ملزمان کی تلا ش پولس کی ٹیمیں کررہی ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *