بی ٹیک کی طالبہ کی اجتماعی آبروریزی،لڑکی اسپتال میں داخل

Share Article
Gangrape-file-pic
علامتی تصویر
اترپردیش کے آگرہ اجتماعی آبروریزی کامعاملہ سامنے آیاہے۔اترپردیش کے تاج نگری میں انجینئرنگ کی طالبہ کی اجتماعی آبروریزی کی گئی ہے۔بتایاجارہاہے کہ تھانہ نیوآگرہ کے پاس بھگوان ٹاکیزچوراہے سے طالبہ کواغواکرکے واقعہ کوانجام دیاگیا۔پوئیا گھاٹ کے پاس طالبہ لہولہان حال میں ملی۔ لیڈی لائل اسپتال میں میڈیکل کے بعد طالبہ کوایس این میڈیکل کالج میں داخل کرایاگیاہے۔واقعہ کی اطلاع ملنے پر ایس ایس پی سمیت پوراعملہ موقع پرپہنچ گیا۔پولس نے رپورٹ درج کرلی ہے۔
جانکاری کے مطابق، تھانہ علاقہ رہائشی ایک لڑکی آگرہ کے ایک کالج میں بی ٹیک سال اول کی طالبہ ہے۔وہ کمپیوٹرکاکورس بھی کررہی ہے۔منگل شام قریب ساڑھے پانچ بجے اسکوٹی سے گھرلوٹ رہی تھی۔بھگوان ٹاکیزچوراہے کے پاس ایک شوروم کے سامنے سے دولڑکوں نے اسے اغواکرلیا۔ایک نوجوان نے اسے دھکادے کرپیچھے کردیا اورخوداسکوٹی چلاکر لے گیا دونوں نوجوانو ں نے اسے پوئیا گھاٹ روڈ کی طرف لے گئے۔ وہاں پردیگردونوجوان اورآگئے ۔چاروں نے لڑکی کی اجتماعی آبروریزی کی۔مخالفت پرطالبہ کی سرپرڈنڈوں سے حملہ کیاگیا۔اس کے بعد ملزموں نے متاثرہ لڑکی کو پرلیوڈ اسکول کے پیچھے جھاڑیوں میں پھینک کرفرارہوگئے۔پولس کا کہنا ہے کہ معاملہ درج کرلیاگیاہے ۔آس پاس کے علاقوں میں سی سی ٹی وی فوٹیج کھنگالے جارہے ہیں۔ جلدملزمین پولس کی گرفت میں ہوں گے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *