سرحد پر بی ایس ایف نے 13 بنگلہ دیشی دراندازوں کو کیا گرفتار

Share Article

 

۔86 مویشی بھی کئے گئے ضبط

بھارت-بنگلہ دیش سرحد پر تعینات بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف) کے جوانوں نیحکیم پوراور دیگر علاقوں میں غیر قانونی طریقے سے سرحد میں دراندازی کرنے والے 13 بنگلہ دیشی شہریوں کو گرفتار کیا ہے۔ انہیں جمعہ-ہفتہ کی درمیانی شب گرفتار کیا گیا۔ اس سلسلہ میں بی ایس ایف کی جانب سے ہفتے کے روز دوپہر معلومات دی گئی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ غیر قانونی طریقے سے بنگلہ دیش سے بھارتی علاقے میں داخل ہونے والے 10 بنگلہ دیشی شہریوں کوحکیم پورعلاقے سے گرفتار کیا۔ دیگر دو واقعاتمیں، بالترتیب 153 بٹالین کے بارڈر آوٹ پوسٹ (بی او پی ) ڈوبیلا اور 54 بٹالین کے بی او پی گیندے علاقے سے تین بنگلہ دیشی شہریوں کو گرفتار کیا۔ پوچھ گچھ میں غیر قانونی دراندازوں نے انکشاف کیا کہ وہ دلالوں کی مدد سے ہندوستان آئے تھے۔ ان تمام بنگلہ دیشی شہریوں کو آگے کی قانونی کارروائی کے لئے متعلقہ پولیس تھانوں کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ جنوبی بنگال فرنٹیئر کے بی ایس ایف کے جوانوں نے سرحدی اضلاع مالدہ، مرشدآباد، جوابات 24 پرگنہ اور نادیہ کی سرحد ی علاقوں سے بنگلہ دیش کو اسمگلنگ کئے جا رہے 46 مویشیوں کو ضبط کیا، جن کی مارکیٹ کی قیمت 502825 روپے ہیں۔ دیگر دو واقعات میں بی او پی – نمتتا اور سوواپر ٹی پی، سیکٹر مالدہ کے بی ایس ایف کے جوانوں نے اسمگلروں کے گروپ کی سرگرمیوں کو دیکھا جو مویشیوں کو گنگا دریا کے دھارے میں بہا کر بنگلہ دیش میں اسمگلنگ کی کوشش کر رہے تھے۔ بی ایس ایف کے جوانوں نے 67 مویشیوں کو ضبط کرنے میں کامیابی حاصل کی۔ وہیں جنوبی بنگال سرحد سے بھی 19 مویشیوں کو ضبط کیا گیا ہے۔

بہرام پور سیکٹر کے بی او پی ہاروڈانگا کے میدان میں اسمگلروں نے بی ایس ایف گشت پارٹی کے جوانوں کو زخمی کرنے کے مقصد سے کچی سڑک پر تار باندھ کر ٹریپ لگایا تھا۔حالانکہ نو جوانوں نے وقت پر اس ٹریپ کا پتہ لگا لیا اور اس کو تباہ کر دیا۔ اس علاقے میں کچھ دنوں کے اندر اندر یہ دوسرا واقعہ ہے۔ سال 2019 کے دوران جنوبی بنگال فرنٹیئر کے بی ایس ایف کے جوانوں نے 20876 مویشیوں کو ضبط کیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *