بالی ووڈ:سیکولرازم کی زندہ جاوید مثال

Share Article

سلمان علی
بالی ووڈ کے لوگ جتنے سیکولر ہیں اتنے سیکولر افراد شاید ملک کے کسی بھی مذہب، ذات برادی یا طبقہ میں نہیں ہیں۔ ملک کی کوئی ریاست یا خطہ ایسا نہیں ہے، سیکولر ازم کے معاملہ میں جس کا موازنہ بالی ووڈ سے کیا جا سکے۔ بالی ووڈ سیکولر ازم کی ایک زندہ جاوید مثال ہے۔یہ بات بھی دلچسپی سے خالی نہیں ہے کہ بالی ووڈ کے لوگ اس ریاست میں بستے ہیں جہاں ملک کی سب سے زیادہ سخت گیر جماعتیں  ہیں۔ریاست مہاراشٹر میں بال ٹھاکرے اور ادھو ٹھاکرے سمیت ایسے لوگ و جماعتیں ہیں جنہیں انتہا پسندی کی واضح مثال قرار دیا جا سکتا ہے۔یہ حقیقت کسی سے پوشیدہ نہیں ہے کہ فلمیں انسانی دماغ کو بالواسطہ یا بلا واسطہ طور پر متاثر کرتی اور اس درجہ متاثر کرتی ہیں کہ لوگوں کی زندگی میں تبدیلی کا نیا باب شروع ہو جاتا ہے ۔ یہ باب اچھا یا برا دونوں طرح کا ہو سکتا ہے۔ آج ملک کے بیشتر نوجوان بالی ووڈ کے نقش قدم پر چل رہے ہیں۔فلم اداکار و اداکارائوں کو وہ اپنا آئیڈیل مانتے ہیں اور اپنی زندگی میں انہی لوگوں کا عکس دیکھتے ہیں۔عام لوگوں میں سیکولر ازم کا بڑھتا رجحان بھی بالی ووڈ کی ہی دین ہے۔ آئیے جانتے ہیں کہ بالی ووڈ کے وہ کون لوگ ہیں جو سیکولر ازم کی زندہ جاوید مثال تصور کیے جاتے ہیں۔
سب سے پہلے ہم بات کرتے ہیں بالی ووڈ کے دبنگ یعنی سلمان خان کی۔سلمان خان کا پورا کنبہ ہندو مسلم اتحاد کی واضح مثال ہے۔ آپ نے ان کو جتنی شدت سے عید کی خوشیاں مناتے ہوئے دیکھا ہوگا اتنے ہی جوش و خروش کے ساتھ وہ گنیش کی پوجا بھی کرتے ہیں۔مطلب یہ کہ وہ عید پر تو اپنے مسلم بھائیوں کے ساتھ خوشیاں مناتے ہی ہیںلیکن گنیش پوجا کے لئے مندر جانے سے بھی گریز نہیں کرتے۔اگر ہم ان کی ذاتی اور گھریلوزندگی پر نظر ڈالیں تو ہمیں سیکولرازم کی وہ مثال ملتی ہے جو ہندوستان میں کہیں نہیں دیکھنے کو ملے گی۔ ان کے والد سلیم خان ایک مسلم ہیں اور ان کی والدہ سلمیٰ ہیں، جو شادی سے پہلے سشیلا چرک تھیں۔اسی طرح سلمان خان کے بھائی ارباز خان کی بیوی ملائکہ اروڑہ خان بھی پنجابی ہیںاور ان کے چھوٹے بھائی سہیل خان کی بیوی سیما سچدیو بھی ہندو ہیں۔ان کی بہن الویرا خان نے اداکار اتل اگنی ہوتری سے شادی کی ، جبکہ ملائکہ اروڑہ خان کی چھوٹی بہن امرتا اروڑہ نے بھی ایک مسلم لڑکے سلیم سے شادی کی ۔ سلمان خان کے یہاں تمام تہوار پورے جوش و خروش کے ساتھ منائے جاتے ہیں۔ خواہ وہ ہندئوں کے ہوں یا مسلمانوں کے ۔ اور تو اور ان بین المذہبی رشتوں سے ان کو مذہبی رہنمائوں کے فتوئوں اور تنقیدوں سے بھی گزرنا پڑتا ہے، لیکن سلمان ان تمام تنقیدوں سے بے فکر وہی کرتے ہیں جو انہیں کرنا ہوتا ہے۔
اسی طرح بالی ووڈ کے بادشاہ شاہ رخ خان بھی اس معاملہ میں پیچھے نہیں ہیں۔ ان کے یہاں عید اور دیگر تہواروں کے ساتھ ساتھ درگا پوجا اور دیوالی منانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی جاتی ۔ان کی بیوی گوری چھبر بھی ہندو ہیں۔اتنا ہی نہیں انھوں نے تو باقاعدہ اپنے گھر میں ایک چھوٹا سا مندر بھی بنوا رکھا ہے۔ شاہ رخ کا کہنا ہے کہ بھگوان، اللہ کسی مندر مسجد میں نہیں رہتے بلکہ وہ تو ہمارے دلوں میںرہتے ہیں۔
سپر اسٹار عامر خان کی پہلی بیوی رینا اور موجودہ بیوی کرن دونوں ہی ہندو ہیں۔ جبکہ ان کے بھانجے عمران خان بھی ہندو مذہب کی طرز پر اونتکا ملک نام کی لڑکی سے شادی کرنے جا رہے ہیں۔ ہندو، مسلم تہوار منانے میں عامر کی فیملی بھی پیچھے نہیں ہے۔
ایک زمانہ میں سابق کرکٹر منصور علی خان پٹودی نے شرمیلا ٹیگور سے شادی کر کے سیکولرازم کی مثال قائم کی تھی۔ بیٹے سیف علی خان بھی باپ کے نقش قدم پر چل رہے ہیں، ان کی پہلی بیوی امرتا سنگھ تھیں اور اب وہ کرینہ کپور سے شادی کرنے جا رہے ہیں۔ظاہر ہے ان کی سوچ بھی مذہب سے کہیں زیادہ اوپر ہے۔ دوسری طرف خبریں یہ بھی ہیں کہ ان کی بہن صحیٰ علی خان کی شادی اداکار کنال کھیمو سے ہونے والی ہے۔مطلب یہ کہ یہ خاندان بھی مذہب کے نام پر تعصب نہیں رکھتا۔ بالی ووڈ کی عظیم اداکارہ مدھوبالا بھی مسلم تھیں جن کا اصل نام ممتاز بیگم جہاں دہلوی تھا ۔ ان کو دلیپ کمار سے محبت ہوئی ، لیکن دلیپ کمار کو کبھی ان کے والدین نے قبول نہیں کیا۔ آخر کار انھوں نے 1960میںاداکار ، گلوکار کشور کمار سے شادی کر کے ایک مثال قائم کی تھی،لیکن یہ شادی 9سال تک ہی چل پائی اور 1969میں ان کا انتقال ہو گیا۔
اداکار آدتیہ پنچولی نے بھی زرینہ وہاب سے شادی کی ۔اسی طرح بالی ووڈ اداکار شاہد کپور کے والد پنکج کپور ہندو ہیں اور ان کی والدہ نلیما عظیم مسلم ہیں۔شاہد کی مانیں تو ان کے لئے دونوں ہی مذہب برابر عقیدت کے حامل ہیں۔
بالی ووڈ کے آنجہانی اداکار سنیل دت نے نرگس کے ساتھ شادی کر کے ہندو مسلم اتحاد کی مثال قائم کی تھی۔ نرگس کا اصل نام فاطمہ رشید تھا۔اسی طرح ان کے بیٹے سنجے دت نے بھی ان کے نقشے قدم پر چلتے ہوئے تیسری شادی مسلم لڑکی مانیتا دت (شادی سے پہلے دلنواز شیخ ) سے کی۔اس فہرست میں Kisser Boyیعنی عمران ہاشمی بھی شامل ہیں۔ جی ہاں وہ بھی ایک ہندو لڑکی پروین ساہنی سے شادی کر کے اس فہرست میں شامل ہوئے۔
ادھر فرحان اختر اور زویہ اختر جن کے والد جاوید اختر ہیں اور ان کی والدہ ہنی ایرانی جو ہندو ہیں۔اختر فیملی میں مذہب کبھی کوئی ایشو نہیں رہا ہے، بلکہ جاوید اختر تو اکثر مذہبی تعصب کے خلاف بیان دیتے نظر آئے ہیں تو فرحان اختر نے بھی ایک ہندو لڑکی سے شادی کی ہے۔
اسی طرح فلم ’’راج نیتی‘‘ میں بہترین اداکاری کے لئے تذکروں میں آئے منوج واجپئی نے بھی ایک مسلم لڑکی سلمیٰ رضا سے شادی کی ہے تو ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہر الدین نے بھی اپنی پہلی بیوی کو طلا ق دے کر دوسری شادی بالی ووڈ اداکارہ سنگیتا بجلانی سے کی۔
اسی طرح اعظم گڑھ سے تعلق رکھنے والے مہاراشٹر اسمبلی کے رکن ابو عاصم اعظمی کے بیٹے فرحان اعظمی نے بھی بالی ووڈ اداکارہ عائشہ ٹکیہ سے شادی کر کے ایک  مثال قائم کی ہے۔ سنجے خان کی بیٹی سوزین نے بھی اداکار رتک روشن سے شادی کی۔
ایسی کئی بالی ووڈ ہستیاں ہیں جنہیں اگر اس فہرست میں شامل کیا جائے تو یہ فہرست کافی طویل ہو جائے گی۔جو پردے پر تو سیکولرازم کا رول ادا کرتے ہی ہیں مگر انھوں نے اپنی اصل زندگی میں بھی دوسرے مذہبوں سے شادیاں کر کے سیکولرازم کی عظیم الشان مثال قائم کی ہے۔
حقیقت میںبالی ووڈ کے تمام اداکاروں واداکارائوں نے مذہب کی حدیں پار کر لی ہیں۔انھوں نے پردے پر تو سیکولرازم کی مثال قائم کی ہی ہے، دوسرے مذاہب میں شادی کر کے بھی مذہبی تعصب کے خلاف سخت قدم اٹھائے ہیں۔
خیر بالی ووڈ کی بات ہی کچھ اور ہے یہاں کچھ بھی ممکن ہے۔ اسے ایک سیکولرازم کی مثال بھر ضرور کہا جا سکتا ہے، لیکن آج بھی ہمارا معاشرہ اسے قبول نہیں کرتا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *