کالا ہرن شکارمعاملہ: ہائی کورٹ سے سیف علی خان، تبو اور سونالی کو نوٹس جاری

Share Article

saif

جودھپور:کالا ہرن شکار کیس میں راجستھان ہائی کورٹ نے سیف علی خان، تبو اور سونالی بیندرے کو نوٹس جاری کیا ہے۔ اس سے پہلے جاری نوٹس کی تعمیل نہیں ہو پائی تھی، تو پیر کو اس معاملے کی سماعت کے دوران تمام ملزمین کو نئے سرے سے نوٹس جاری کئے گئے۔ معاملے کی اگلی سماعت آٹھ ہفتے بعد ہوگی۔ قابل ذکر ہے کہکالا ہرن شکار کیس میں اہمملزم سلمان خان کو پانچ سال کی سزا سنائی گئی تھی، جبکہ سیف علی خان، نیلم، تبو اور سونالی کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے عدالت نے بری کر دیا تھا۔ ریاستی حکومت نے سی جی ایم دیہات کے اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا۔ اس پر ہائی کورٹ نے تمام ملزمین کو نوٹس جاری کیا تھا۔

پیر کو جسٹس منوج گرگ کی عدالت میں کیس کی سماعت شروع ہوئی۔ نیلم کی جانب سے ان کے وکیل کے کے ویاس حاضر ہوئے۔ دوسرے لوگوں کے بارے میں سرکاری وکیل مہیپال سنگھ نے بتایا کہ ابھی تک دیگرکو نوٹس کی تعمیل نہیں ہو پائی ہے، اس پر جج گرگ کی عدالت نے سبھی ملزمین کو نئے سرے سے نوٹس جاری کرکے آٹھ ہفتے میں اپنا جواب پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

سال 1998 میں فلم ہم ساتھ ساتھ ہیں کی شوٹنگ کے دوران جودھپور شہر کے قریب واقعکاکنی گاؤں کی سرحد پر آدھی رات دو کالے ہرن کے شکارکے معاملہ میں سلمان خان کے خلاف درج کیا گیا تھا۔ تقریباً 20 سال تک جاری رہی سماعت کے بعد 5 اپریل 2018 کو سی جی ایم دیہاتکورٹ نے اس معاملے میں فیصلہ سنایا تھا۔ فلم اداکار سلمان خان کو قصوروار مانتے ہوئے پانچ سال کی سزا سنائی تھی، دیگر ملزمین کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کر دیا تھا۔ اس فیصلے کے خلاف سلمان خان نے ہائی کورٹ میں اپیل کر رکھی ہے، جبکہ ملزمین کو بری کئے جانے کے خلاف ریاستی حکومت نے اپیل کر رکھی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *