بولے امت شاہ: پاکستان کو اسی کے زبان میں جواب دیا جائے گا

Share Article

amit-shah

 

انڈیا ٹوڈے کانکلیو کے افتتاحی پروگرام میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی صدر امت شاہ نے پلوامہ دہشت گردانہ حملے سے لے کر پاکستان پر کئے ایئر اسٹرائک کے سارے سوالات کا بیباکی سے جواب دیا۔ امت شاہ نے کہا کہ پاکستان کو اسی کے زبان میں جواب دیا جائے گا، اب بھارت کا جواب دیناابھی باقی ہے۔

بی جے پی صدر امت شاہ نے کہا کہ اری حملے کے بعد سرجیکل اسٹرائک اور پلوامہ کے بعد ایئر اسٹرائک سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ یہ2004 سے 2014 والی حکومت نہیں بلکہ 2014 سے 2019 والی حکومت ہے۔ہم سخت ہیں دہشت گردی کے خلاف ہیں اس عزم کے ساتھ زمین پر اتر رہے ہیں۔

شاہ نے کہا کہ ہمارا (بھارت) جواب دینا باقی ہے۔ دنیا کو سچ بتانے کے لئے پوری دنیا میں جانے والے ہیں۔ کیا آپ (کانگریس) کے وقت دہشت گردی کا واقعہ نہیں ہوا تھا؟ 26/11 کے بعد آپ نے جواب کیوں نہیں دیا؟ 26/11 کے بعد آپ نے کیا کیا تھا؟بی جے پی صدر نے کہا کہ بھارت جانتا ہے کہ دہشت گردی کی جڑیں پاکستان میں ہیں۔ پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کو جواب دیتے ہوئے امت شاہ نے کہا کہ پلوامہ کے حملے کی مذمت کرنے کے لئے ان کون سا ثبوت چاہئے۔ ثبوت کی بات کیا کریں آپ مذمت تو کریئے۔ ایک بار مذمت نہیں کی۔ کم از کم ایک بار تو کہتے جو ہواوہ غلط ہوا پاکستان کے عوام کو پی ایم سے پوچھنا چاہئے کہ آپ کو مذمت نہیں کرنی چاہئے؟

امت شاہ نے منموہن سنگھ کے بہانے اپوزیشن جماعتوں پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ انہیں منموہن کا وہ بیان نہیں دکھائی دیتا جس میں وہ کہتے ہیں کہ دونوں ممالک کو تحمل برتنا چاہئے۔ دونوں ممالک کو ایک پلیٹ فارم پر کس طرح دیکھ سکتے ہیں۔ یہ میڈیا کو کیوں نہیں دکھائی دیتا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *