بی جے پی ایم پی کے ذریعہ ٹول پلازہ ملازمین کی پٹائی پر پرینکا گاندھی کا بی جے پی پر نشانہ

Share Article

 

پرینکا گاندھی نے مدھیہ پردیش میں بی جے پی ممبر اسمبلی آکاش وجے ورگیہ اور اتر پردیش میں بی جے پی کے رہنما رام شنکر کٹھیریا کا نام لئے بغیر شدید نشانہ لگایا ہے، انہوں نے سوال پوچھا ہے کہ کیا ان جیسے لیڈروں پر کسی طرح کی کارروائی کا کوئی امکان ہے۔

 

Image result for toll plaza employees were on the BJP in up

غور طلب ہے کہ ہفتہ کے روز یوپی میں اٹاوہ سے بی جے پی کے رہنما رام شنکر کٹھیریا کے سیکورٹی اہکار نے ان کی موجودگی میں ہی ٹول اہلکاروں کو مارا پیٹا گیا اور ہوائی فائرنگ بھی کی تھی، اس کے علاوہ اندور سے بی جے پی ممبر اسمبلی آکاش وجے ورگیہ نے عمارت گرانے پہنچے ایک افسر کی کرکٹ بیٹ سے پٹائی کر دی تھی۔پرینکا گاندھی نے ٹوئٹ کر کہا، ”انتخابات جیتنے کے بعد بی جے پی کے رہنماو¿ں کو عوام کی خدمت کرنی چاہیے تھی مگر وہ ملازمین کی پٹائی کر رہے ہیں، کوئی اقتدار کی زعم میں بلے سے پیٹتا ہے، تو کوئی ٹول مانگے جانے پر فائرنگ کر لاٹھی ڈنڈے چلتا ہے، کیا ان لوگوں پر سخت کارروائی کا کوئی امکان ہے“۔

Image result for toll plaza employees were on the BJP in up

دراصل ہفتہ کو اندرونی آگرہ رنگ روڈ رہن کلا ٹول پلازہ پر بی جے پی رہنما رام شنکر کٹھیریا کے لوگوں نے وی آئی پی انٹری نہ ملنے پر ہنگامہ کر دیا تھا اور ٹول اہلکاروں کی پیٹائی کے ساتھ ہی ہوائی فائرنگ بھی کی تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ رام شنکر کٹھیریا کے قافلے میں ان کی گاڑی کے علاوہ 5 دیگر گاڑیوں کے علاوہ ایک بس شامل تھی۔ ٹول اہلکاروں نے ان گاڑیوں کو وی آئی پی لین کی جگہ عام لین سے نکلنے کو کہا تھا، اسی بات پر رام شنکر کٹھیریا کے سیکورٹی اہلکار کا ٹول اہلکاروں سے تنازعہ ہو گیا تھا۔
اس کے علاوہ مدھیہ پردیش میں میونسپل کارپوریشن کی ٹیم اندور میں جب جر جر ہو چکے مکانوں کو توڑنے کے لئے پہنچی تھی تو بی جے پی ممبر اسمبلی آکاش وجے ورگیہ نے اس کی مخالفت کرنا شروع کر دی، بحث کے درمیان ہی آکاش وجیہ ورگیہ نے ایک افسر پر کرکرکٹ بیٹ سے حملہ کر دیا تھا، ان کی اس حرکت کا ویڈیو بھی وائرل ہو گیا تھا، جس کے بعد انہیں گرفتار کرلیا گیا تھا، حالانکہ بعد میں انہیں عدالت سے ضمانت مل گئی تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *