بی جے پی ایم پی ارجن سنگھ کے گھر پر بمباری، کشیدگی

Share Article
West Bengal: Bombs, bullets fired by crooks at BJP MP Arjun Singh’s house

 

کولکاتہ، کولکاتہ سے ملحق شمالی 24 پرگنہ کے بیرک پور لوک سبھا سیٹ سے بی جے پی کے لیڈر ارجن سنگھ کے گھر کے باہر بم دھماکہ ہوا۔ حملے کے بعد سے وہاں علاقے میں کشیدگی کا ماحول ہے۔ اگرچہ معاملے میں کسی کی گرفتاری نہیں ہو سکی ہے۔

Image result for BJP MP Arjun Singh's house bombed

پولیس کے مطابق بدھ کی رات نامعلوم حملہ آوروں نے ایم پی کی رہائش کو نشانہ بنا کر دو بم پھینکے اور سات راؤنڈ فائرنگ کی۔ارجن سنگھ کی رہائش کی حفاظت کے لئے بنائے گئے مرکزی صنعتی سیکورٹی فورسز (سی آئی ایس ایف) کے بنکر کے ٹھیک سامنے یہ فائرنگ ہوئی ہے۔ اطلاع ملنے کے بعد بیرک پور پولیس کمشنر منوج ورما ٹیم کے ساتھ موقع پر پہنچے اور صورتحال کا جائزہ لیا۔

Image result for BJP MP Arjun Singh's house bombed

ادھر بمباری کی خبر سن کر جمعرات کی صبح سے ہی بی جے پی کارکنان جمع ہونے لگے ہیں۔ فی الحال پارلیمنٹ کا سیشن چلنے کی وجہ سے ارجن سنگھ دہلی میں ہیں، اس لیے انہیں کسی طرح کا کوئی نقصان نہیں پہنچا۔گھر کے دیگرافراد بھی محفوظ ہیں۔

ارجن سنگھ کے بھتیجے اور بھاٹپاڑا میونسپلٹی کیچیئرمین سورو سنگھ کا الزام ہے کہ بمباری کے پیچھے حکمران پارٹی ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) کے لوگوں کا ہاتھ ہے۔ بی جے پی کا کہنا ہے کہ اگر حملہ آوروں کی جلد گرفتاری نہیں ہوئی، تو بیرک پور میںبڑے پیمانے پر مطاہرہ کیا جائیگا۔.

قابل ذکر ہے کہ لوک سبھا انتخابات 2019 کے بعد سے یہعلاقہ تشدد کی لپیٹ میں ہے۔ ارجن سنگھ پہلے ترنمول کے ٹکٹ سے علاقے کے بھاٹپاڑا سے رکن اسمبلی تھے لیکن عام انتخابات سے پہلے انہوں نے بی جے پی کا دامن تھام لیا اور بیرک پور لوک سبھا سے جیت درج کی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *