بی جے پی لیڈر ہیں یا غنڈہ؟ میرا صوبہ ہوتا تو گولی مار دیتا: کلراج مشرا

Share Article

kalraj-mishra

لوک سبھا انتخابات سے پہلے بی جے پی لیڈروں کی غنڈہ گردی اس قدر بڑھ گئی ہے کہ بھری سبھا میں گولی مارنے کی بات کر رہے ہیں۔ دراصل بی جے پی کے ایک رہنما کے خلاف نعرے کیا لگے بی جے پی دوسرے لیڈر جو تشہیرکرنے آئے تھے وہ اتنے غصے ہوئے کہ کہہ دیا ہمارا صوبہ ہوتا تو مخالفت کرنے والے کو اسٹیج سے اتر کر گولی مار دیتے۔

فرید آباد کے ایم پی کرشن پال گوجر کی مخالفت میں لگنے والے نعروں کے سبب ہریانہ بی جے پی کے انچارج کلراج مشرا ناراض ہو گئے۔ ان کی ناراضگی اس وقت صاف نظر آئی، جب وہ اسٹیج پر خطاب کے لئے پہنچے۔ کلراج مشرا نے اپنے خطاب میں کہا کہ اگر یہ ان کا صوبہ ہوتا تو اس طرح کی گڑبڑی کرنے والوں کو وہ اسٹیج سے اتر کر گولی مار دیتے۔ ان کا اشارہ مخالفت میں نعرے لگانے والوں پر تھا۔

پروگرام میں آئے سیکڑوں لوگوں نے ممبر پارلیمنٹ اور مرکزی وزیر مملکت کرشن پال گوجر کے خلاف جم کر نعرے بازی کی اور ساتھ ہی کہا کہ وہ وزیر اعظم مودی کو تو ووٹ دیں گے لیکن اپنے رہنما کرشن پال گوجر کے لئے ووٹ نہیں دیں گے۔ اس موقع پر بی جے پی کے کئی عہدیداروں نے لوگوں کو سمجھانے کی کوشش کی لیکن بات نہیں بنی اور لوگوں کا غصہ پھوٹ کر سامنے آیا۔

وہیں ہریانہ کے لوک سبھا انچارج اور سابق مرکزی وزیر کلراج مشرا نے جب لوگوں کی نعرے بازی اور ناراضگی دیکھی تو وہ بھی اسٹیج پر لوگوں کو لتاڑنے میں پیچھے نہیں ہٹے۔ انہوں نے اسٹیج سے ہی لوگوں کو دھمکی دے ڈالی کہ ان کا صوبہ ہوتا تو وہ اسٹیج سے اتر کر گولی مار دیتے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *