کم از کم آمدنی کی ضمانت، بی جے پی سوچتی رہ گئی اور راہل کھیل گئے داؤ

Share Article
Rahul Gandhi Promises Universal Basic Income

راہل گاندھی نے ‘کم از کم روزگار گارنٹی کی بات کر اس ایک جماعت کو نشانہ لگانے کی کوشش کی ہے، جو دن بھر کام کرنے کے بعد شام میں خود کو ٹھگا ہوا محسوس کرتا ہے۔

 

 

“ہم ایک تاریخی فیصلہ لینے جا رہے ہیں، جو دنیا کی کسی بھی حکومت نے نہیں لیا ہے۔ 2019 کا الیکشن جیتنے کے بعد ملک کے ہر غریب کو کانگریس پارٹی کی حکومت کم از کم آمدنی کی ضمانت دے گی۔ ہر غریب شخص کے بینک اکاؤنٹ میں کم از کم آمدنی رہے گی۔ ” یہ الفاظ ہیں کانگریس صدر راہل گاندھی کے جو انہوں نے چھتیس گڑھ کے دارالحکومت رائے پور میں پیر کو کہی۔یہ بیان محض الفاظ کا جال لگ سکتا ہے لیکن اس کے سگنل دور رس ہیں۔ دور رس اس لئے کہ وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کی پارٹی بی جے پی جس ‘ضمانت کے بارے میں سوچتی رہ گئی، راہل گاندھی اس میں سے گھی نکالنے کا جگاڑ کر بیٹھے۔

 

ضمانت کی بات کر کانگریس صدر نے چھتیس گڑھ میں جس مسئلے کو اٹھایا ہے، اس سب سے زیادہ عوام کی دکھتی رگ کہہ سکتے ہیں۔ ہندوستان جیسے ملک میں ایسے لوگوں کی ایک بہت بڑی تعداد ہے جو غیر منظم روزگار کی مار جھیل رہے ہیں۔ ایسے میں راہل گاندھی نے ‘کم از کم روزگار گارنٹی کی بات کر اس ایک جماعت کو نشانہ بنانے کی کوشش کی ہے، جو دن بھر کام کرنے کے بعد شام کے وقت خود کو ٹھگا ہوا محسوس کرتا ہے۔یہاں غور کرنے والی بات یہ ہے کہ کانگریس کی حکومت نے ہی منریگا کی شروعات کی، جسے گاؤں دیہات کے لئے انقلابی منصوبہ سمجھا جاتا ہے۔ یہ الگ بات ہے کہ اسے بدعنوانی اور کرپشن نے کھوکھلا کیا ہے، لیکن ایک بڑی تعداد منریگا پر منحصر ہے، اس میں کوئی شک نہیں۔ایک وقت منریگا کی مخالفت کرنے والے نریندر مودی نے منریگا کا بجٹ بڑھا ہی، کم نہیں کیا۔ جی ہاں، بی جے پی حکومت یہ دعوی کرتی رہی ہے کہ اس کے عہد میں اس اسکیم میں بدعنوانی کم ہوا ہے۔

 

 

کانگریس کے نوجوان صدر کی مندرجہ بالا باتوں میں ‘کم از کم روزگار گارنٹی کے علاوہ ایک لفظ اور اہم ہے-بینک کاؤنٹ میں کم از کم آمدنی۔ سیاسی اعتبار سے ضمانت اور کم از کم آمدنی کو کانگریس کا بڑا ماسٹراسٹروك مان سکتے ہیں کیونکہ بات جب بینک اکاؤنٹ اور اس میں کم از کم آمدنی کی ہوتی ہے تو لوگوں کے ذهن میں ’15 لاکھ روپے ‘آ جاتے ہیں۔لوگوں کے دل و دماغ پر جن دھن اکاؤنٹ بھی چكرکاٹتی رہتی ہیں کیونکہ غریبوں کے لئے شروع کئے گئے اکاؤنٹ آج کیاحشر ہے، کسی سے پوشیدہ نہیں۔ راہل گاندھی پیر کو چھتیس گڑھ میں جب اپنی بات رکھ رہے تھے تو ان کے دماغ میں لوگوں کے وہ الزام رہے ہوں گے جنہیں ‘بی جے پی کا جملہ (اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپے) کہا جاتا رہا ہے۔

 

 

راہل گاندھی نے چھتیس گڑھ کے پلیٹ فارم سے آمدنی ضمانت کی بات کر اپنی انتخابی فلم کا ٹریلر دکھا دیا ہے۔ آگے طے ہے کہ پارٹی اپنے منشور میں گارنٹی اسکیم لاگو کرنے کا اعلان کرے گی اور بتائے گی کہ یہ غریبوں کی حالت بدلنے والا انقلابی قدم ہوگا۔ بھلے آپ کہہ لیں کہ پارٹیوں کی اعلانات میں ہوا ہوائی باتیں زیادہ ہوتی ہیں جن پر لوگ بھروسہ کم اور سوال زیادہ اٹھاتے ہیں۔مگر حال میں گزشتہ اسمبلی انتخابات کے نیچے لائن یہ ہے کہ اعلانات اگر سنگین ہوں، غریب غربا کی تعزیت کو چھونے والی ہوں تو لوگ انحصار کرتے ہیں اور جماعتوں کو ووٹ ملتے ہیں۔ لہٰذا کانگریس اگر گارنٹی اسکیم منشور میں لاتی ہے تو اس میں کوئی حیرت نہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *