بابا صاحب امبیڈکر نے کبھی 370 کی مخالفت نہیں کی:شیوانند تیواری

Share Article
Baba Sahib Ambedkar never opposed 370: Shivanand Tiwari

آر جے ڈی کے قومی نائب صدر شیوانند تیواری نے بہار کے نائب وزیر اعلیٰ سشیل کمار مودی کے بیان جس میں انہوں نے کہا تھا کہ بابا صاحب امبیڈکر کشمیر کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے والے آئین کے آرٹیکل 370 کی مخالفت میں تھے، کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ لگتا ہے سشیل مودی نے پرگیہ ٹھاکر کے اسکول میں داخلہ لے لیا ہے۔ شیوانند تیواری نے منگل کو یہاں کہا کہ لگتا ہے پرگیہ ٹھاکر کے اسکول میں ہی سشیل مودی کو پڑھایا گیا ہے کہ بابا صاحب امبیڈکر کشمیر کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے والے آئین کے آرٹیکل 370 کی مخالفت میں تھے۔ تیواری نے کہا کہ بابا صاحب تحریر، تقریر، انٹرویو، خط و کتابت کو مہاراشٹر کی حکومت نے 17 جلدوں میں تعداد ہے جس میں کہیں بھی آرٹیکل 370 کی مخالفت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ باباصاحب ریفرنڈم کے ذریعہ کشمیر کے مسئلے کے فوری حل کے پیروکار ضرور تھے، بلکہ مسلم اکثریتی علاقہ پاکستان میں چلا جائے اس کے وہ حامی تھے۔

شیوانند تیواری کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کی وجہ سے فوجی خرچ بڑھ رہا ہے اور دونوں ممالک کے درمیان جنگ کا بھی خطرہ ہے۔اس وقت ملک کے پاس وسائل کا شدید بحران تھا اور بابا صاحب چاہتے تھے کہ جو محدود وسائل ملک کے پاس ہیں ان کا استعمال ترقی کے کاموں میں ہو۔ آر جے ڈی لیڈر نے کہا کہ بی جے پی سردار پٹیل کو لے کر بھی افواہ پھیلاتی ہے کہ سردار پٹیل آرٹیکل 370 کے مخالف تھے اور جواہر لال نہرو کی وجہ سے ہی یہ آرٹیکل آئین میں شامل ہوا تھا۔ اسے سب سے بڑا جھوٹ قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ 15 اور 16 مئی، 1949 کو اس سلسلے کی پہلی میٹنگ سردار پٹیل کے ہی گھر میں ہوئی تھی۔ اس اجلاس میں سردار پٹیل کے علاوہ پنڈت نہرو، شیخ عبداللہ اور کشمیر امور کے وزیر مسٹر اینگر بھی موجود تھے اور اسی اجلاس میں دفعہ 370 پر اتفاق ہواتھا۔

تیواری نے کہا کہ اہم بات تو یہ ہے کہ پنڈت نہرو کی غیر حاضری میں سردار پٹیل کے ہی قیادت میں آئین ساز اسمبلی سے آرٹیکل 370 منظور ہوا تھا۔ آرٹیکل 370 ہی وہ پل تھا جس کے ذریعہ کشمیر بھارت کے ساتھ منسلک کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ’سب کا ساتھ اور سب کا وشواس ‘میں لے کر حکومت چلانے کا دعویٰ کرنے والی مودی حکومت نے کشمیر کو جیل خانہ میں تبدیل کرکے 370 کو ہٹایا ہے۔ وہاں کی خبریں باہر نہیں آ رہی ہیں اور کشمیر کو لے کر ملک میں جھوٹ پھیلایا جا رہا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *