رما دیوی پر متنازعہ تبصرے کے لئے اعظم خاں نے لوک سبھا میں مانگی معافی

Share Article
Lok Sabha: Azam Khan makes sexist remark about BJP MP Rama Devi as she chairs

 

سماج وادی پارٹی کے ایم پی اعظم خاں نے بی جے پی کے رہنما رما دیوی پر متنازعہ تبصرے کے لئے لوک سبھا میں معافی مانگ لی ہے۔

سماج وادی پارٹی کے ایم پی اعظم خاں نے بی جے پی کے رہنما رما دیوی پر متنازعہ تبصرے کے لئے لوک سبھا ٹیبل میں معافی مانگ لی ہے۔ ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی اعظم خاں نے لوک سبھا اسپیکر سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر ان کے بیان سے انہیں  تکلیف پہنچی ہے تو وہ معافی مانگتے ہیں۔

اتنا بولنے کے بعد اعظم خان بیٹھ گئے۔ لیکن بی جے پی کے ایم پی ہنگامہ کرنے لگے۔ بی جے پی کے ممبران پارلیمنٹ نے اعظم خاں کے ہاؤبھاؤ پر سوال اٹھائے۔ اس دوران ایس پی صدر اور ممبر پارلیمنٹ اکھلیش یادو نے اناؤ ریپ متاثرہ کے حادثے کا معاملہ اٹھا دیا اور کہا کہ بی جے پی کو اس پر بھی توجہ دینا چاہئے۔

بی جے پی ممبران پارلیمنٹ نے اکھلیش یادو کی تبصرہ پر اعتراض کیا۔ اس کے بعد اسپیکر اوم برلا نے اعظم خان کو دوبارہ رما دیوی سے معافی مانگنے کے لئے کہا۔ اسپیکر کی ہدایات کے بعد اعظم خان نے ایک بار پھر کہا کہ رما دیوی ان کی بہن جیسی ہیں، اگر ان کے بیان سے انہیں تکلیف ہوئی ہے تو وہ معافی مانگتے ہیں۔ اعظم خان نے کہا کہ پورا ایوان ان کے طرز عمل کو جانتا ہے۔

اعظم خاں کی معافی کے بعد رما دیوی نے کہا کہ ان کے رویے سے ملک کو دکھ پہنچا ہے۔ رما دیوی نے کہا کہ اعظم خاں کی عادت سدھرني چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اعظم خاں ایوان کے باہر بھی ایسا بیان دیتے رہتے ہیں۔

اس سے پہلے سماج وادی پارٹی کے ایم پی اکھلیش یادو اور اعظم خاں لوک سبھا اسپیکر اوم بڑلا سے ملنے ان کے دفتر پہنچے تھے۔ اوم برلا کے دفتر میں بی جے پی کے رہنما رما دیوی بھی موجود تھیں۔ بتا دیں کہ 25 جولائی کو اعظم خان نے ایوان میں رما دیوی پر متنازعہ تبصرہ کی تھی۔

25 جولائی کو لوک سبھا میں تین طلاق پر بحث کے دوران بی جے پی کے رہنما رما دیوی ایوان کی صدارت کر رہی تھیں، اسی دوران اعظم خان نے متنازعہ تبصرہ کیا تھا۔ اعظم خاں کی اس تبصرہ کے بعد ایوان کے اندر اور باہر جم کر ہنگامہ ہوا تھا۔ بی جے پی سمیت کئی پارٹیوں کے ممبران پارلیمنٹ نے اعظم خاں کے خلاف کارروائی کی مانگ کی تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *