ٹوپی، صافہ کی قیمت مودی کیا جانیں

وسیم راشد
ہندوستان کی سیاست میںاِس وقت پوری طرح ہلچل ہے۔ کانگریس ملک کی کئی ریاستوں میں ہونے والے الیکشن کے لئے ابھی تک کوئی واضح حکمت عملی تیار نہیں کر پائی ہے۔ اڈوانی کی جَن چیتنا رتھ یاترا کوئی خاص اثر نہیں چھوڑ سکی۔ہاں !پھر سے اگر کوئی سرخیوں میں اس وقت ہے تو وہ نریندر مودی ہیں۔نریندر مودی مسلمانوں کے لئے ایک ایسا ناسور ہے جس کو بار بار کرید کر مسلمانوں کے زخم ہرے کئے جاتے ہیں۔سنجیو بھٹ مودی کا ابھی تک کچھ نہیں بگاڑ سکے۔ بہت سے شواہد مودی کو قصوروار ٹھہرانے کے لئے سامنے آچکے ہیں ، نہ جانے ایسی کون سی گولی اس چیف منسٹر نے کھا رکھی ہے کہ اپنی جگہ بے خوف ہوکر ڈٹا ہوا ہے۔ مس

Read more

لیبیا کا مستقبل کیا ہوگا

وسیم راشد
میں ایک بین اقوامی شخصیت کا حامل لیڈر ہوں، عرب حکمرانوں کا سربراہ، افریقہ کے شاہوں کا شاہ‘‘۔ یہ الفاظ ہیں لیبیا کے اس عظیم الشان مرتبہ والے معمر قذافی کے، جس کی ایک زمانے میں طوطی بولتی تھی، جس کے نام سے عرب ممالک میں سنّاٹا چھا جاتا تھا۔ لیبیا ایک چھوٹا سا ملک ہے مگر اس کا لیڈر بڑا قد آور تھا۔ انتظامی امور میں نہایت سخت گیر، اور قذافی ہی کیا ایک زمانہ تھا جب مسلم ممالک کے بڑے بڑے لیڈر اپنی متاثر کن شخصیت کے لیے جانے جاتے تھے۔یاسر عرفات، صدام حسین، حسنی مبارک،زین العابدین ، مگر اچانک نہ جانے یہ کیسا انقلاب آیا کہ افغانستان، ایران، عراق ، شام، مصر اور لیبیا سبھی ممالک اندرونی انتشار کے شکار ہوگئے۔ 2011 میں ہی تیونس کے صدر زین العابدین کو ملک چھوڑ کر بھاگنا پڑا، مصر کے حسنی مبارک کو فروری میں اقتدار سے دستبردار ہونا پڑا اور اب لیبیا میں معمر قذا

Read more

سر سید کے مخالفین نے بھی مان لیا، ہماری باتیں ہی باتیں ہیں سید کام کرتا تھا

وسیم راشد
ہر قوم کی زندگی میں مدوجزر کے دورآتے رہتے ہیں مگر جب تک اس کے اندر قوت حیات کے سوتے بالکل خشک نہیں ہوتے ہیں، یہ عروج زوال کا اور زوال عروج کا پیش خیمہ ہوتاہے۔ ہر ترقی یافتہ قوم کے عروج میں علم کاسب سے اہم کردار ہوتاہے، اس کے برعکس جب جب کسی بھی قوم کی ذہنی، معاشرتی اوراخلاقی پستی انتہا کو پہنچتی ہے تو کہیں نہ کہیں تعلیم کی کمی ہی سب سے بڑی وجہ بن کر سامنے آتی ہے۔ انیسویں صدی کے نصف آخر میں ہندوستانی مسلمانوں کی ذہنی، معاشرتی اوراخلاقی پستی بھی انتہا کو پہنچ چکی تھی۔ ایسے میں ایک مفکر، رہبر قوم نے جس کے سینے میں ایک درمنددل تھا ایک خواب دیکھا تھا۔’’میں اپنی قوم کو آسمان کی مانند کرنا چاہتاہ

Read more

ردرپور فساد۔۔۔ یہ سب الیکشن کا چکر ہے

وسیم رشید
یہ میرے سامنے اردو کے سارے اخبار ہیں، جن میںردر پور کے فساد کی خبریں پہلے صفحہ پر تصاویر کے ساتھ دی گئی ہیں۔ پورا پورا صفحہ اس خبر کو دیا گیا ہے، مگر دس دن سے زیادہ کا عرصہ گزر جانے پر بھی نیشنل میڈیاخاموش ہے۔ ہندی، انگریزی اخبار میں ڈھونڈنے سے بھی یہ خبر نہیں مل رہی ہے۔این ڈی ٹی وی،ٹائمز نائو،آئی بی این 7، آج تک، یہ وہ چینلز ہیں جن پر ہر مسئلہ کو لے کر ایک ایک گھنٹہ فضول سی بحث چلتی رہتی ہے، کبھی یہ فائدے مند بھی ہوتی ہے اور کبھی لگتا ہے بس ہر کوئی اپنی برتری ثاب

Read more

اگر یہ سسٹم کی خرابی ہے تو کیسے دور ہوگی سر؟

وسیم راشد
فرقہ وارانہ فساد اور بم بلاسٹ میں کیا فرق ہے؟یہ سوال میرے ذہن میں اس وقت آیا جب میں نے دہلی ہائی کورٹ کے باہر کا دلخراش منظر دیکھا ۔کسی کا سر اور آدھا دھڑ تھا، نچلا حصہ غائب۔ ہاتھ پیر نہیں ۔ زمین پر گوشت کے ٹکڑے بکھرے ہوئے، لہو لہان لوگ، چیختی بلکتی عورتیں، تڑپتے سسکتے آدمی۔ یا اللہ ایسا ہی منظر میرٹھ اور ملیانہ فساد کا تھا ۔ ایسا ہی گجرات کے فساد کا تھا۔بس فرق اتنا تھا کہ اس میں مارو، کاٹو، بھاگو ، دیکھ جانے نہ پائے کی آوازیں تھیں۔ اس میں بچائو ہائے مر گیا کی آوازوں کے ساتھ سبھی ت

Read more

آخر کار سچائی کی جیت ہوئی

وسیم راشد
محکمہ سی بی آئی اور عدالت یہ دو ایسے سرکاری ادارے ہیں جن سے عوام کی بہت سی توقعات وابستہ ہوتی ہیں اور ان دونوں ہی اداروں پر ملک کی اہم ذمہ داریاں ہیں۔ ایک ادارہ مجرم تک پہنچنے کی تدبیریں تلاش کرتا ہے، ثبوت و شواہد فراہم کرتا ہے اور پھر عدالت کے چوکھٹ پر لاکر مجرم کو سزا اور بے قصور کو بری ہونے کا پروانہ دلانے کا بندوبست کرتا ہے، اور دوسرا ادارہ قصور وار کو سزا اور بے قصوروں کو بری ہونے کا پروانہ

Read more

مہربانی ہوگی! مسلمانوں کو نیشنل ایشوز سے جڑنے دیجئے

وسیم راشد
انا ہزارے کی تحریک کرپشن کے خلاف ہے اور اس میں سبھی کو ساتھ ضرور دینا چاہیے، کیوں کہ کرپشن ایک ایسا عفریت ہے جو سب کو ڈس رہا ہے۔ یہ نہ تو ذات برادری کو دیکھتا ہے اور نہ رنگ و نسل کو۔ یہ عفریت ہمارے ملک کے نوکرشاہوں سے لے کر افسر شاہوں تک سب کے رگ و پے میں اس طرح سما چکا ہے کہ چھوٹے سے چھوٹا کام ہو یا بڑے سے بڑا ،ہر ایک کے لیے کچھ نہ کچھ چڑھاوا چڑھائے بنا کوئی کام نہیں بنتا۔ظاہر ہے یہ ایک ایسی ذہنیت ہے جو ملک کے امن و چین کو دیمک کی طرح چاٹتی جارہی ہ

Read more

سلطانی جمہور کا آتا ہے زمانہ

وسیم راشد
میں رہوں نہ رہوں یہ تحریک جاری رہے گی،یہ بیان ہے ایک ایسے شخص کا جس کا نام آج ملک کے بچہ بچہ کی زبان پر ہے۔یہ جملہ ہے آج کے سپر ڈائنمک کردار کے خالق انا ہزارے کا جو ایک ایسے نعرے کو لے کر اٹھے ہیں جو کروڑوں ہندوستانیوں کے دل کی آواز بنگیا ہے ۔یہی وجہ ہے کہ ان کے ایک اشارے پر ملک کے بچے جوان سبھی ان کے پیچھے ہو لیے ۔ جو جذبہ ملک کے سیاست داں 64 برسوں میں پیدا نہیں کرسکے اس جذبے کو انا ہزارے نے چند مہینوں کی بے لوث تحریک سے پیدا کردیا،بلکہ ان سیاست دانوں کی وج

Read more