مسلمانوں کے لئے کانگریس سب سے زیادہ نقصان پہنچانے والی پارٹی

وسیم راشد
ایک کہاوت مشہور ہے ’’ پہاڑ اپنی جگہ بدل سکتا ہے مگرکسی کی فطرت نہیں بدل سکتی‘‘۔شاید یہ کہاوت کانگریس پارٹی پر فٹ آتی ہے۔کانگریس نے بار بار جھوٹے وعدوں ،دلاسوں سے مسلمانوں کو بہلانے کی کوشش کی اور مسلمانوں نے بار بار کانگریس کو نکارا، لیکن پھر بھی کانگریس کو یہ بات سمجھ میں نہیں آرہی ہے کہ اب مسلمانوں نے اس پر بھروسہ کرنا چھوڑ دیا ہے ۔ ابھی گزشتہ سال کی بات ہے جب پانچ ریاستوں میں اسمبلی الیکشن ہورہے تھے ،تو اس وقت مسلمانوں کو لبھانے کے لئے ایک کانگریسی وزیر نے

Read more

خوب منائیے جشن ! مسلمانوں کے لئے تو آپ نے کچھ نہیں کیا

وسیم راشد
ابھی کچھ دنوں پہلے دہلی میں شیلا سرکار کے چودہ سال مکمل ہونے پر سکریٹریٹ میں ایک شاندار تقریب منعقد کی گئی۔ اس تقریب میں کانگریس کے لیڈروں نے شیلا سرکار کی خوب تعریف کی۔خود شیلا دیکشت نے گزرے ہوئے چودہ برسوں میں اپنی بہترین کارکردگی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’وہ دہلی کو انتظامی معاملوں میں رول ماڈل بنانے کا عزم رکھتی ہیں‘‘۔شیلا دیکشت کے اس بیان پر بھلا کسی کو کیا اعتراض ہوسکتاہے۔ہر وزیر اعلیٰ کا یہ فرض بنتا ہے کہ وہ اپنی ریاست کو رول ماڈل بنانے کے بارے میں سوچے اور ا

Read more

خدا کے لئے متحد ہو کر ان بے گناہ نوجوانوں کے لئے لڑو

وسیم راشد
آزادی کو 65سال گزر چکے ہیں۔یہ عرصہ کسی بھی قوم یا طبقے کو منظم ہونے کے لئے کافی ہوتا ہے،مگر افسوس کی بات ہے کہ اس طویل عرصے میں مسلم تنظیمیں متحد و منظم نہیں ہوسکیں،جس کا فائدہ متعصب سیاسی پارٹیاں،ادارے اور پولیس میں مسلم دشمن ذہنیت کے حامل افسران اٹھا رہے ہیں ۔اگر مسلم تنظیمیںایک پلیٹ فارم پر جمع ہوکر آواز اٹھائی ہوتیںتوبے قصور مسلم نوجوانو

Read more

غریب کسان خودکشی نہ کریں تو کیا کریں

وسیم راشد
فروری2008 میں یو پی اے حکومت نے کسانوں کے قرضوں کی معافی کا اعلان کیا تھا۔ اس اسکیم نے کسانوں کو جیسے نئی زندگی دے دی تھی اور ظاہر ہے، اس فیصلہ سے کسانوں کو پہلی بار بڑی راحت ملنے والی تھی۔ اس اسکیم کا فائدہ ان کسانوں کو ہونا تھا، جنھوں نے بینکوں سے کھیتی کے لیے قرض لیے تھے۔ 52000 کروڑ سے بڑھا کر یہ رقم 60416 کروڑ روپے کر دی گئی تھی۔ یہ اسکیم صرف 30 دن کے لیے تھی۔ 30 جون، 2008 تک یہ اسکی

Read more

بجٹ کیسا بھی آئے، مسلمانوں کی تقدیر نہیں بدلتی

وسیم راشد
سال 2013-14 کا بجٹ پیش ہونے سے پہلے بڑی امید تھی کہ اس میں مسلمانوں کے لئے کچھ خاص اعلان ہوگا ۔خاص طور پران کی تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کے لئے نہ صرف مختص رقم میں خاطر خو اہ اضافہ کیا جائے گا بلکہ ان کو نافذ کرنے کے لئے ٹھوس حکمت عملی بھی اپنائی جائے گی مگر بجٹ میں ایسا کچھ نظر نہیں آیا ۔حکومت م

Read more

شندے کا اظہار ندامتِ، مصلحت یا سمجھوتہ؟

وسیم راشد
ہمارے ملک کے میڈیا کا مزاج بھی عجیب ہے کہ وہ کسی بھی خبر کی تہہ تک پہنچنے کے بجائے اڑتی ہوئی خبروں کو بنیاد بنا کر بریکنگ نیوز کے طور پر پیش کردیتا ہے۔اس کی اس خبر کا اثر عوام کے ذہن و دماغ پر کیا پڑتا ہے ، اس سے ہمارا میڈیا بے خبرہے یا جان بوجھ کر نظر انداز کررہا ہے۔ ہم نے بارہا کئی چینلوں کو دیکھا ہے کہ جب بھی دہشت گردی کے شبہ میں کسی مسلمان کو پکڑا جاتا ہے تو اس وقت یہ میڈیا جرم ثابت ہونے سے پہلے ہی اسے مجرم قرار دیدیتا ہے اور اینکر گرفتار نوجوان کو انڈین مجاہد کہہ

Read more

افضل گرو کی میت کے ساتھ غیر انسانی سلوک

وسیم راشد
نو فروری کی صبح چینلز کے لئے زبردست مسالہ لے کر نمودار ہوئی۔دھڑا دھڑ افضل گرو کی پھانسی کی سزا سبھی چینلز پر ٹیلی کاسٹ ہونے لگی۔ ہر چینل پر خبر، ہر چینل پر افضل گرو کی پھانسی پر اہم شخصیات کے انٹرویوز، غرضیکہ تمام میڈیا کو اس دن کا موضوع مل چکا تھا۔وہ اس خبر سے پوری طرح کھیل رہے تھے۔جس طرح قصاب کی اچانک پھانسی کی خبر نے سب کو حیرت زدہ کردیا تھا اسی طرح افضل گرو کی خبر نے بھی لوگوں کو حیران کردیا اور ظاہر ہے اتنی بڑی خبر کے بعد کشمیر میں

Read more

نفرت کی سیاست کب تک ؟

وسیم راشد
ہندوستان میں مقدس کنبھ میلہ چل رہا ہے۔یہاں عقیدت مندبڑی تعداد میںروحانی غذا حاصل کرنے کے لئے جمع ہوتے ہیں مگر ہمارے ملک کے سیاست داں اس مقدس میلے پر بھی سیاست کا رنگ چڑھانے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔ البتہ سادھوئوں کے ایک گروپ نے انتہائی سمجھداری سے کام لیتے ہوئے با قاعدہ تنبیہ کی ہے کہ کوئی بھی اس میلے کے تقدس کو پامال نہ کرے۔سادھوئوں کو اس بیان کی ضرورت اس لئے پڑی کہ بی جے پی کے لیڈران خاص طور پر نریندر مودی، اس مذہبی میلے کو اپنی سیاسی امیج بنان

Read more

انا ہزارے کی ریلی: یقینا یہ مسلمانوں کے فائدے کا سودا ہے

وسیم راشد
ملک کے عوام کو عرصہ سے ایک ایسے قائد کا انتظار تھاجو ملک میں ہر طرف پھیلی بد عنوانی اور افسر شاہی کے خلاف آواز بلند کرسکے۔جب انا ہزارے نے حکومت اور حکومت میں بیٹھے افسروں اور لیڈروں کے ذریعہ انجام دیے جارہے گھوٹالوں اور بد عنوانیوں کے خلاف آواز بلند کی تو عوام کو ایسا لگا گویا ان کے دل کی مراد پوری ہورہی ہے اور انہیں ایک ایسا قائد مل گیا ہے جو ملک میں پھیلی بد عنوانی کے خلاف عوام کو متحد کرکے ایک ایسا نظام لانے میں کام

Read more