بندیل کھنڈ میں دراڑ

سریندر اگنی ہوتری
اترپردیش کا بندیل کھنڈ سرخیوں میں ہے۔ ووٹوں کی خاطر سب کی نظر بندیل کھنڈ کی سر زمین پر ہی ہے۔ سال 1987کے راٹھ اسمبلی ضمنی انتخابات میں بی ایس پی یہاں پہلی بار دوسرے نمبر پر آئی تھی۔ یہاں سے بندیل کھنڈ میں بی ایس پی کے پیر جمنے شروع ہوئے اور آج سب سے زیادہ ممبران اسمبلی کے ساتھ یہ پارٹی برسراقتدار ہے۔ لیکن اب بی ایس پی میں سب کچھ ٹھیک نہیں چل رہا ہے۔ اسی بات کو مدنظر رکھتے ہوئے راہل گاندھی نے اتر پردیش کے اسمبلی الیکشن جیتنے کا راستہ بندیل کھنڈ کی اوبڑ کھاب

Read more

وعدوں کا مارا بندیل کھنڈ

سریندر اگنی ہوتری
بندیل کھنڈ میں چتر کوٹ کے گھاٹ پر نہ تو سنتوں کا ہجوم ہے اور نہ چندن پیسنے کے لیے تلسی داس جی ہیں لیکن ہاں بندیل کھنڈ کا درد سننے کے لیے وزیر اعظم منموہن سنگھ اور کانگریس کے جنرل سکریٹری راہل گاندھی ضرور باندہ آئے۔ انھوں نے پانی کی سہولت کے لیے دو سو کروڑ روپے دینے کا وعدہ کر کے آنسو پونچھنے کی کوشش کی ہے، لیکن یہاں کے عوام کے دکھ درد دور ہوتے نظر نہیں آرہے ہیں۔ رو رو کر اپنا حال بتانے والوں میں بھوک اور قرض کے تلے دب کر مرے ہوئے کسانوں کے اہل خانہ تھے، پنشن اور راشن کے لیے بھٹک رہے ضعیف تھے، روزگار گارنٹی سے دھوکہ کھائے مزدور تھے اور دبنگوں، دلالوں کی لاٹ

Read more

اتر پردیش میں جل، جنگل اور زمین کی لڑائی

سریندر اگنی ہوتری
سون بھدر، چندولی کے بعد الٰہ آباد منڈل کے کوشامبی، فتح پور اور باندہ منڈل کے چترکوٹ، مہوبہ میں لال سلام کے روپ میں ماؤنواز دستک دینے لگے ہیں۔ چترکوٹ ضلع میں پانی، زمین اور جنگل پر دبنگوں کے قبضے کے سبب حالات خوفناک ہو رہے ہیں۔ حکومت کا کردار بڑے زمیندار کی شکل میں ہو جانے کے سبب ملک خانہ جنگی کی جانب لمحہ بہ لمحہ آگے بڑھ رہا ہے۔ یہ آہٹ بھلے ہی اندھی بہری ہو اور گونگی حکومتوں کی سمجھ میں نہ آئے، لیکن بدامنی سے ہونے والے نقصان کا تصور ہمارے اندر سنسنی پیدا کر دیتا ہے۔ این ڈی اے حکومت نے غیرملکی آقاؤں اور سرمایہ داروں کے دباؤ میں سیلن ایکٹ کو شہری علاقہ میں غیرمؤثر ب

Read more

امبیڈ کر گائوں: کہیں دھوپ، کہیں چھائوں

سریندر اگنی ہوتری
بی ایس پی کی مکھیا اور اتر پردیش کی وزیر اعلیٰ مایاوتی نے 2012کے انتخابات جیتنے کے لئے ایک بار پھر کانشی رام رہائشی اسکیم کا تڑکا لگایا ہے اور وہ اب تک 72اضلاع کا دورہ کر چکی ہیں۔ درج فہرست ذات اور درج فہرست قبائل اکثریت والے گائوں کو امبیڈ کرگائوںکی شکل میں مجموعی ترقی کا تصور کتنا حقیقت ہے، کتنا فسانہ ،یہ سامنے آنے لگا ہے۔
چوتھی دنیا نے جب ریاست کے دیہی ترقیات کے ریاستی وزیر رتن لال اہروار کے آبائی ضلع جھانسی کے بلاک مئورانی پور کے گائوں بمہوری سے اپن

Read more

قومی دیہی صحت مشن اسکیم: یہاں بھی گھوٹالہ

سریندر اگنی ہوتری
اترپردیش میں پانچ سال قبل نافذ ہوئی قومی دیہی صحت مشن اسکیم میں کارڈ بنوانے سے لے کر علاج کرانے تک کی راہ میں روڑے ہی روڑے نظر آرہے ہیں۔ محکمہ دیہی ترقیات کے ذریعہ چلائی جارہی اسکیم کے حوالے سے کیے جارہے بڑے بڑے دعوے کھوکھلے نظر آرہے ہیں، کیوں کہ اس اسکیم کا مقصد تھا غیررسمی طبی خدمات فراہم کرنے والے نظام کو یقینی بنانا ، لیکن اتنے سال گزرجانے کے باوجود یہ اسکیم عام لوگوں کو طبی خدمات فراہم کرنے میں ناکام رہی ہے۔ مرکز کی اس اہم

Read more

گیس ختم ورنہ بن جاتا بھوپال

سریندر اگنی ہوتری
سنڈیلہ کے صنعتی علاقہ میں بریک فیلڈ میں کام کرنے والے پرمجیت سنگھ، گنیش سنگھ، رادھے شیام، رام پال نے بتایا کہ آدھی رات بعد انہیں اچانک سانس لینے میں پریشانی ہوئی تب انہوں نے شور مچایا۔ رات میں تقریباً دو بجے ان کی آنکھ اچانک کھل گئیں، گیس سے دم گھٹنے لگا، آنکھوں میں جلن ہونے لگی۔ سڑک پر بھی شور و غل سنائی دے رہا تھا۔ لوگ کہہ رہے تھے کہ بھاگو!امت لیب سے گیس نکل رہی ہے، زہریلی گیس ہے، لوگ مر رہے ہیں، شہر سے دور ہوجاؤ۔ گھر میں نہ تو کوئی سواری تھی نہ ہی کوئی مرد تھا، خواتین بچوں کو

Read more

مشن 2012کے لئے کانگریس تیار

سریندر اگنی ہوتری
اتر پردیشمیں اقتدار حاصل کرنے کے لیے 125 سال پرانی کانگریس پارٹی نے اپنے یووراج راہل گاندھی کو جنگ کے میدان میں سپہ سالار کی شکل میں سامنے لانے کا ذہن بنالیا ہے۔ کانگریس بڑی ہی سوچی سمجھی حکمت عملی کے تحت شطرنج کی بساط بچھا رہی ہے۔ کانگریس کا ایک ایک قدم جہاں مایا حکومت کو خوف زدہ کر رہا ہے، وہیں دوسری جانب کانگریس کے کارکنان میں ایک نیا حوصلہ پیداکر رہا ہے۔ اس کا اندازہ درج فہرست ذات/ درج فہرست قبائل کمیشن کے قومی صدر ڈاکٹر پی ایل پونیا کے ذریعہ ریاست میں کیے جارہے اجلاس میں جمع ہونے والی بھیڑ سے لگایا جاسکتاہے۔ ان اجلاس کی کامیابی کودیکھ کر ریاستی حکومت نے مرکزی وزرا کے ریاست میں نجی دورے اور پارٹیوں کے پروگرام میں ح

Read more

کسان حکومت سے آر پار کی لڑائی کے لئے تیار

سریندر اگنی ہوتری
یہ محض اتفاق نہیں ہے کہ پورے اترپردیش میں اراضی تحویل کے خلاف اٹھتی آوازیں آر پار کی لڑائی میں تبدیل ہو رہی ہیں۔ تحویل والے علاقہ سے کسانوں کی خیریت لے کر واپس لوٹے لوک تانترک سماجوادی پارٹی کے قومی صدر رگھو ٹھاکر کہتے ہیں کہ اجتماعی سرمایہ داری نے زمین ہڑپنے اور اس کے ذریعے زیادہ سے زیادہ پیسہ کمانے کا ایک آسان راستہ تلاش کرلیا ہے۔ ابھی تو یہ آغاز ہے۔ آخر جب کسانوں کے لیے اراضی رکھنے کی حد طے ہے تو پھر یہ نئے زمیندار کیوں پیدا کیے جارہے ہیں۔ اس طرح تو انگریزی حکومت کے

Read more

بدعنوانیوں سے عبارت ہے لکھنؤ ڈیولپمنٹ اتھارٹی

سریندر اگنی ہوتری
لکھنؤڈیولپمنٹ اتھارٹی کو راجدھانی کے باشندے لوٹو ڈاکہ ڈالو اتھارٹی کے نام سے جانتے ہیں۔اس نام پر کچھ لوگوں کو اعتراض ہو سکتا ہے لیکن جب سچائی سامنے آتی ہے تو ہر ایک یہ ماننے کو تیار ہو جاتا ہے کہ یہ نام جس نے بھی دیا ہے درست دیا ہے۔ایل ڈی اے کے نائب صدر کا عہدہ کبھی پھولوں کا تاج مانا جاتا تھا تو اب کانٹوں بھرا تاج نظر آرہا ہے۔ایل ڈی اے کے سامنے کئی چیلنجز آئے ہیں۔ان میں امین آبادمیں تعمیر پارکنگ میں دکانوں سے لیکر ایل ڈی اے افسروں کے ذریعہ دبائی گئی دس لاکھ بیگھہ زمین کو خالی کرنے کے ساتھ ڈالی باغ کثیر منزلہ عمارت کے سامنے کی متنازعہ زمین کا معاملہ بھی شامل ہے۔چھوٹ کی زمین کو الاٹمنٹ کرنے سے لیکرمتبادل و لوور کھنڈ میںاراضی گھوٹالہ ہو یا غریبوں کو مفت

Read more

کسانوں کی سننے والا کوئی نہیں

سریندر اگنی ہوتری
اتر پردیش کے دیہی علاقوں میں کھاد-بیج کی شدید قلت ہے۔ گورکھپور- دیوریا شاہراہ پر چوری چورا میں واقع ’کرشک بھارتیہ سیوا کیندر‘ پر کھاد اور بیج نہ بانٹنے سے مشتعل کسانوں نے راستہ جام کر دیا۔ پولس نے کسانوں پر لاٹھیاں برسائیں، جس سے کئی کسان زخمی ہوگئے۔ کسانوں کا الزام ہے کہ کھاد-بیج کی کالا بازاری کی جارہی ہے۔ یہی حال سکری گنج بیل گھاٹ بلاک کی سہکاری سمیتی کوٹیاں بشونی کا ہے۔ کسان رادھے شیام، سنتوش، رما شنکر، امرجیت، بلونت، جے پرکاش، سنگم، روندر پرتاپ سنگھ وغیرہ کا کہنا ہے کہ ڈہرا ٹیکر نیائے پنچایت میں کم سے کم چار ٹرک کھاد مزید چاہئیں۔ پپرائچ علاقہ کے گوداموں میں کھاد ہونے کے باوجود بھی تالے لٹ

Read more
Page 1 of 212