پٹھان کوٹ دہشت گردانہ حملے کی حقیقت

نارکو پولٹکس اور نارکو ٹیرورزم نے پنجاب کے سرحدی علاقوں کو اپنی گرفت میں لے لیا ہے۔کچھ ہی ماہ قبل گرداس پور کے دینا نگر میں اور اب پٹھان کوٹ میں ہوا دہشت گردانہ حملہ اسی سانٹھ گانٹھ کی منادی ہے۔ واردات کے محض دو دن قبل گرداس پور کے ایس پی کے عہدے سے ہٹایا گیا سلوندر سنگھ اس نکسس کا محض ایک مہرہ ہے ۔پٹھان کوٹ حملے کی گہرائی سے جانچ کر رہی نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) اس سمت میں بھی ٹھوس طریقے سے آگے بڑھ رہی ہے کہ سلوندر سنگھ جیسے مہروں ک

Read more

سیفئی مہا اتسو کا افتتاح کرنے نہیں گئے وزیر اعلیٰ اکھلیش

وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو کی غیر موجودگی میں سیفئی مہا اتسو کا افتتا ح بھی ہوا ور اختتام پذیر بھی ہوگیا۔ وزیر اعلیٰ نے اس بار سیفئی مہا اتسو سے خود کو الگ رکھا۔اس کی سیاسی وجہ بھی ہوسکتی ہے اور خاندانی بھی۔ اکھلیش نہیںگئے، تو ان کی بیوی ڈمپل یادو بھی نہیں گئیں اور اکھلیش کے بچے بھی مہا اتسو میںشریک نہیںہوپائے۔

Read more

سیاستداں عوام کے مذہبی جذباتوں سے کھلواڑ کرتے ہیں

ایودھیا کی سڑکوں اور گلی محلوں میں آپ گھومیں تو کسی بھی شخص کو رام مندر کے بارے میں فکر کرتا ہوا نہیں پائیںگے۔ کسی کو کوئی مطلب ہی نہیں ہے کہ راجستھان سے 2 ٹرک پتھر آگئے کہ4 ٹرک،یا پتھر تراشنے کے کام میں پہلے8 آدمی بطور کاریگر کام کرتے تھے کہ اب 16 کاریگر کام کررہے ہیں۔خبریں تلاشنے اور تراشنے کا کام کرنے والے صحافیوں کو آپ کارسیوک پورم میں پتھر تراشتے کاریگروں سے بات کرتے ہوئے یا وشو ہندو پریشد کے کسی ممبر سے یا پھر بابری مسجد معاملے کے مدعی ہاشم انصاری کے گھر کے آگے کسی سے گفتگو کرتے ضرور پائیںگے۔ ایودھیا کی کل صورت حال یہی ہے کہ رام مندر یا بابری مسجد کے بارے میں ہر طرح کی فکر کا اظہار کرتے ہوئے وہی نظر آئیں گے جو یا تو میڈیا میں ہیں یا سیاست کے کسی خانے میں۔

Read more

چوتھی دنیا کی رپورٹ سے این ٹی پی سی کے سی ایم ڈی

نیشنل تھرمل پاور کارپوریشن (این ٹی پی سی) کے سی ایم ڈی ارون رائے چودھری کی کرتوتوں کے خلاف ’’ چوتھی دنیا‘‘کے متعدد شمارے میں خبر شائع ہونے کے بعد رائے چودھری نے ’’چوتھی دنیا‘‘ کے خلاف قابل اعتراض پرچے بازی شروع کردی ہے۔ سی ایم ڈی کے اشارے پر یہ پرچے دہلی اور آس پاس کے علاقوں میں تقسیم کیے جارہے ہیں اور اخباروں میں منسلک کیے جارہے ہیں۔ سی ایم ڈی کی بوکھلاہٹ اس لیے بھی ہے کہ ’’چوتھی دنیا‘‘ کی خبر کا نوٹس لیتے ہوئے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ کوشل کشور نے بھی این ٹی پی سی کے سی ایم ڈی

Read more

ملک کا سب سے بڑا گھوٹالہ

بجلی گھوٹالے میں پولس کی فائنل رپورٹ کا اپنے دائرۂ اختیار سے باہر جا کرنوٹس لینے اور تین سال تک اس رپورٹ کو دباکر رکھنے والے جج کے خلاف آلہ آباد ہائی کورٹ کے وجیلنس بیورو نے کارروائی شروع کر دی ہے۔ مذکورہ جج کے خلاف شکایت یہ بھی ہے کہ انہوں نے محکمہ انصاف میں پرنسپل سکریٹری رہتے ہوئے حساس امور کو چھپا کر ایک متنازع سرکاری وکیل کے جج بننے میں مدد کی تھی۔ اس معاملہ کے سامنے آتے ہی اتر پردیش کے پاور سیکٹر میں ہوئے اربوں کے گھوٹالے کی لیپا پوتی میں لگے ججوں، نوکر شاہوں اور محکمہ جاتی افسروں کے ساتھ ساتھ سی بی آئی کے بھی قانون کے شکنجے میں آنے کا امکان بڑھ گیا ہے۔ اتر پردیش کا بجلی گھوٹالہ ملک کا سب سے بڑا گھوٹالہ ثابت ہونے والا ہے، جس میں نہ صرف نیتا اور نوکر شاہ، بلکہ جج اور سی بی آئی کے افسر بھی ملوث ہیں۔ یہ دلچسپ اور مزاحیہ ہی ہے کہ اربوں کے بجلی گھوٹالے کی سی بی آئی جانچ کا سرکاری فرمان جاری ہو جانے کے بعد بھی اسے عدالت میں دبائے رکھا گیا اور آخر کار سی بی آئی نے ہی جانچ کرنے سے منع کر دیا۔ بجلی گھوٹالے میں سی بی آئی بھی ملزم ہے۔

Read more

گھوٹالوں کا کارپوریشن این ٹی پی سی

نیشنل تھرمل پاور کارپوریشن لمیٹڈ (این ٹی پی سی) نے سرکاری پروجیکٹ کے لیے قبضے میں لی گئی زمین خفیہ طریقے سے بوفورس – فیم ہندوجا گروپ کو دے دی۔ سرکار کے سیمادری پروجیکٹ کی سینکڑوں ایکڑ زمین ہندوجا گروپ کو دیے جانے کے معاملے میں وزارتِ توانائی مشتبہ طریقے سے خاموشی اختیار کیے ہوئے ہے، جب کہ سنٹرل وجیلنس کمیشن (سی وی سی) نے ضروری کارروائی کے لیے اسے وزارتِ توانائی کو پہلے ہی بھیج دیا تھا۔ یہاں تک کہ وزیر اعظم کے دفتر (پی ایم او) تک کو اس کا علم ہے۔ این ٹی پی سی کے چیئر مین و منیجنگ ڈائرکٹر (سی ایم ڈی) اروپ رائے چودھری نے آندھرا پردیش کے وشاکھاپٹنم میں واقع سیمادری پروجیکٹ کی تحویل میں لی گئی زمین ہندوجا گروپ کو دے کر قانون کی تو دھجیاں اڑائیں ہی، این ٹی پی سی اور ملک کو زبردست اقتصادی اور تجارتی نقصان بھی پہنچایا۔ 19 جون، 2014 کو این ٹی پی سی بورڈ کی میٹنگ میں تجویز پاس کرکے ہندوجا گروپ کو زمین دے دی گئی تھی۔

Read more

یو پی میں سماجوادی پارٹی کی مجلس عاملہ کی تشکیل

سماجوادی پارٹی کے قومی صدر ملائم سنگھ یادو نے اتر پردیش اکائی کی تحلیل شدہ مجلس عاملہ (ایگزیکیوٹو کمیٹی) کی از سر نو تشکیل کر کے نئی مجلس عاملہ کی فہرست جاری کی ہے۔دو دنوں بعد وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو غیر ملکی دورہ سے واپس آئے اور انھوں نے مجلس عاملہ کی ایک متوازی فہرست جاری کر دی۔ یہ سماجوادی پارٹی کا بے جوڑ نمونہ ہے ، جہاں جمہوریت اور انارکی کی ساز باز واضح نظر آتی ہے۔ پارٹی کارکنان کہتے ہیں کہ مکمل فہرست ہی جاری کرنی تھی تو وہ بھی قومی صدر کے ذریعہ ہی جاری ہوتی تو فیصلوں کا وقاربرقرار رہتا۔ریاستی مجلس عاملہ میں ایک بھی سینئر یا قدآور لیڈر کو شامل نہیں کیا گیا ہے۔ یہ بھی کہہ سکتے ہیں کہ ایک بھی قدآور لیڈر ریاستی مجلس عاملہ میں آنے کے لئے تیار نہیں ہوا۔

Read more

یو پی میں قانون ساز کونسل کا انتخاب ہوا دلچسپ

اقتدار اور سیفئی مہوتسو کے نشے میں ڈوبی سماجوادی پارٹی کو یہ بھی ہوش نہیں رہا کہ 23 جنوری کو ہونے والے قانون ساز کونسل کے انتخاب میں کسے امیدوار بنانا ہے اور کسے نہیں۔ قانون ساز کونسل کے جس رکن کی ابھی ڈیڑھ سال کی مدت باقی تھی، سماجوادی پارٹی نے اسے بھی اپنا امیدوار بنا دیا۔ سیفئی میں ناچ و رنگ کی محفل ذرا سست پڑی، تو کسی نے یاد دلایا، تب لیڈروں کو ہوش آیا۔ لہٰذا، آناً فاناً لسٹ بدلی گئی اور پھر نئے امیدواروں کا اعلان کیا گیا۔ لیکن اس نئی لسٹ کو لے کر بھی پارٹی کارکنوں میں ناراضگی ہے۔ دوسری طرف، بہوجن سماج پارٹی بھی بوکھلاہٹ کی شکار ہے، کیو ںکہ اس کا شیرازہ بکھر رہا ہے۔ ڈاکٹر اکھلیش داس نے کہہ دیا کہ مایاوتی ٹکٹ اور پوسٹ بیچتی ہیں۔ یہ بات مایاوتی کو بہت بری لگی تھی، اب جگل کشور نے اس کی تصدیق کر دی، تو شاہانہ انداز والی مایاوتی کو دلت یاد آنے لگے۔ بھارت رتن کے اعلان کے بعد اس انعام کو لے کر

Read more

اکھلیش سرکار کے وزیروں کے کام کاج کا جائزہ ، کچھ ہی میں دم باقی سب بے دم

سماجوادی پارٹی کے اکتوبر ماہ میں لکھنؤ میں منعقدہ تین روزہ قومی اجلاس میں اکھلیش سرکار کے وزیروں کے کام کاج کے طور طریقے، ان کی بدعنوانی اور ان کے عوام مخالف رویے پر ہی بحث مرکوز رہی۔ ایسا اس لیے ہوا، کیوں کہ سماجوادی پارٹی کے قومی صدر ملائم سنگھ یادو نے اس پر اپنی تشویش ظاہر کی تھی۔ یہ ایک ایسا موضوع ہے، جس پر ملائم سنگھ پہلے بھی بولتے رہے ہیں اور اب بھی بول رہے ہیں۔ حالانکہ، ملائم کی اس تشویش میں پارٹی کے غداروں کے مسئلہ کو شامل کرکے اصل مدعے سے توجہ ہٹانے کی کوشش بھی کی گئی، اس کے باوجود ملائم کی باتیں عوام کے دلوں میں تیر کی طرح پیوست ہو گئیں۔ اب یہ بات صاف ہو گئی ہے کہ اکھلیش سرکار کے وزیروں کی کارکردگی پر ہی 2017 کا اسمبلی الیکشن لڑا جائے گا۔ اس اجلاس کے پلیٹ فارم سے پارٹی کے سینئر لیڈر نریش اگروال نے یہ کہا بھی تھا کہ اکھلیش یادو کے سوا کسی بھی وزیر کے پاس کہنے کے لیے اپنا کچھ بھی نہیں ہے۔ یہ بات صحیح بھی ہے، کیوں کہ اگر کچھ خاص سینئر وزیروں کو چھوڑ دیا جائے، تو کام کے نقطہ نظر سے اکھلیش کے کام کے علاوہ، کسی کے پاس بتانے کے لیے کچھ بھی نہیں ہے۔

Read more

اتر پردیش میں راجیہ سبھا انتخابات: سستی نوٹنکی ، سڑک چھاپ ڈرامہ

اتر پردیش کا راجیہ سبھا انتخاب تنازعہ رسہ کشی اور غیر محدود سیاست کی پیداوار ثابت ہوا۔ سب سے زیادہ سیٹیں جیتنے میں اہل سماجوادی پارٹی کی پیٹھ میں چھرا بھونک کر عہدہ حاصل کرنے کے منشاء کا غلبہ رہا، تو محض دو سیٹیں جیتنے کی حیثیت رکھنے والی بہوجن سماج پارٹی میں ایک دوسرے پر کیچڑ پھینکنے کا ایسا سلسلہ چلا جسے بول چال کی زبان میں ’’تُھکم فضیحت ‘‘ کہتے ہیں۔ ایک سیٹ جیتنے والی بی جے پی خاموشی اختیار کئے رہی، یہاں تک کہ آخر تک وہ اپنا امیدوار بھی طے نہیں کر پا رہی تھی۔ کانگریس تو ماشاء اللہ! راہل گاندھی کی جی حضوری اور سماجوادی کی چاپلوسی کا متوازی پروگرام چلاتے رہنے والے، لوک سبھا انتخابات ہرانے والے پی ایل پونیا راجیہ سبھا پہنچ گئے، باقی لیڈر منھ تکتے رہ گئے۔

Read more
Page 9 of 11« First...7891011