صرف آر پی یادو ہی کیوں دیگر جج کیوں نہیں؟

پربھات رنجن دین
اتر پردیش اسٹیٹ پبلک سروسیز ٹریبیونل کے چیئرمین جسٹس آر پی یادو کو ریاستی حکومت نے برخاست کردیا ہے۔ سیکڑوں کروڑ روپے کے پی ایف گھوٹالے میں داغی جج آر پی یادو کو اترپردیش کی حکومت نے پبلک سروسیز ٹریبیونل کا چیئرمین بنا دیا تھا،پھر ایسی کون سی قانونی پیچیدگی اچانک آ گئی کہ حکومت کو انہیں برخاست کرنے کا فیصلہ کرنا پڑا؟ پی ایف گھوٹالے میں داغی ججوں کی لسٹ لمبی چوڑی ہے، پھر تنہا آر پی یادو ہی کیوں؟ اس راز سے بھی پردا اٹھے گا، لیکن ابھی یہی رنگ دینے کی کوشش ہے کہ پی ایف گھوٹالے میں داغ دار ہ

Read more

آدرش سے بڑا فوج کی سینٹرل کمانڈ میں گھوٹالہ

پربھات رنجن دین
ممبئی آدرش سوسائٹی گھوٹالہ کے تار لکھنؤ سے جڑے ہیں۔ ممبئی اور لکھنؤ کے اس لنک کو اگر گہرائی سے دیکھا جائے تو ممبئی کے آدرش سوسائٹی گھوٹالہ سے بڑاگھوٹالہ سینٹرل کمانڈ ہیڈ کوارٹر لکھنؤ میں کھلے گا۔ممبئی آدرش سوسائٹی گھوٹالے کو غور سے دیکھیں تو آپ پائیں گے کہ گھوٹالہ کرنے والے افسران کا لکھنؤ سے ممبئی ؍پنے میں رابطہ مسلسل رہا ہے۔ اسے قائم رکھنے میں ڈیفنس اسٹیٹ سروس کے ڈائریکٹر جنرل بال شرن سنگھ نے اہم کردار ادا کیا ۔ ابھی ریٹائرہونے سے قبل تک وہ اپنی حرکتوں سے باز نہیں آئے۔پنے چھائونی کی اہم افسر ر

Read more

پچاس ہزار بچوں کی موت کا ذمہ دار کون ؟

پربھات رنجن دین
شمالی ہند میں پھیلا نامعلوم بخار کہیں بایو دہشت گردی کا نتیجہ تو نہیں…۔ مشرقی اترپردیش، شمال مغربی بہار اور اس سے ملحق نیپال کے ترائی علاقے میں دماغی بخار سے روزانہ ہونے والی اوسطاً 100بچوں کی موت کی آخر وجہ کیا ہے؟ مشرقی اترپردیش کے پچھڑے اضلاع کہیں بایو دہشت گردی کی تجربہ گاہ اور یہاں کے لوگ کہیں ’گنی-پگ‘ تو نہیں بنائے جارہے ہیں؟ اس سوال سے پورا ملک اور خاص طور پر شمالی ہند کے لوگ گھرے ہوئے ہیں، لیکن جواب دینے یا ذمہ داری لینے کے لیے کوئی راضی نہیں ہے…۔ نہ ریاستی حکومت اور نہ ہی مرکزی حکومت۔ مشرقی اترپردیش کے گورکھپور، کشی نگر، دیوریا، سنت کبیر نگر سمیت 8اضلاع میں جاپانی انسیفلائٹس وبا کی طرح پھیل گیا ہے۔ اس کا شکار زیادہ تر بچے ہو رہے ہیں

Read more

یہ ایک منصوبہ بند لوٹ ہے

پربھات رنجن دین
پی ایف گھوٹالہ دیگر گھوٹالوں کی طرح نہیںہے، بلکہ یہ ایک منصوبہ بند گھوٹالہ ہے، جس میں ججوں نے اپنے ماتحت ملازمین کو اکسا کر کروڑوں روپے کا چونا لگایا۔ اسی پیسے سے عیاشیاں کیں، لیکن خودکو علیحدہ رکھا۔ اطمینان بخش طریقہ سے سوچ سمجھ کر کئے گئے کروڑوں روپے کی سرکاری دولت کے گھپلے میں کسی بھی جج یا جوڈیشل افسرک

Read more

اب چدمبرم صاحب کو جواب دینا ہی ہوگا

پربھات رنجن دین
نکسلیوںکے خلا ف فوج اتارنے پر آمادہ وزارت داخلہ نکسلی تنظیموں کو اربوں روپے کا فنڈ دینے والے صنعت کاروں اور سرمایہ داروں کی لسٹ 2007 سے دبائے بیٹھی ہے اور اس پر کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ نکسلیوں کو فنڈنگ کرنے والوں میں سرکاری محکمے اور تنصیبات بھی شامل ہیں۔ حکومت کے نرم رویے سے نکسلیوں کو دی جانے والی

Read more

نکسلیوں کے خلاف فوج کا استعمال غیر مناسب

پربھات رنجن دین
پہلے فوج نے اور اب سبکدوش ہو چکے سینئر فوجی افسران نے حکومت کی مجوزہ فوجی تعیناتی پالیسی کے حوالے سے اپنی مخالفت کا اظہار کیا ہے۔ جو بات حکومت کو سمجھنی چاہئے، اسے ملک کی فوج حکومت کو سمجھانے کی کوشش کر رہی ہے کہ ترقیاتی کاموں میں جنگی پیمانے کی تیزی لائے اور بد عنوانیوں کے

Read more

کون جیتے گا؟ راہل یا مایاوتی

پربھات رنجن دین
ملك میں سیاست کا محور طے کرنے والی ریاست اترپردیش میں اسمبلی انتخابات تو 2012میں ہونے ہیں، لیکن کئی اہم سیاسی جماعتوں کے بڑے لیڈران یہ ماننے لگے ہیں کہ ریاست میں اسمبلی انتخابات پہلے بھی ہوسکتے ہیں، کیسے؟ وہ اس کا کوئی منطقی یا اطمینان بخش جواب نہیں دے پاتے۔ ملائم سنگھ یادوجیسے سینئر لیڈر بھی ک

Read more