لندن نامہ

حیدر طبا طبا ئی
ہمیشہ سے پوری دنیا میں لندن سیاست کا بڑا مرکز رہا ہے، جہاں جہاں انگریزوں کی حکومت رہی ہے ان ممالک اور ہر خطۂ زمین سے متعلق سیاسی سرگرمیوں کا مرکز لندن ہی رہا ہے۔ مسلم ممالک کے علاوہ ہندوستان کی اہم شخصیات کا تعلق بھی لندن ہی رہا ہے۔ محمد علی جناح ، پنڈت جواہر لال نہرو، مہاتما گاندھی ،جے پرکاش نرائن بھی لندن کے فارغ التحصیل تھے بلکہ یوں کہا جائے کہ ان لوگوں نے یہاں پڑھ کر یہاں کی رموز سیاست کا جواب دیا ۔ ہندوستان

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی
لیبیا میں معمر قذافی کا خاتمہ بخیر ہوچکا۔ اگر امریکہ و یوروپ نہ ہوتے تو آج قذافی ہوتے۔ اب ان کے خاندان کا ایک اہم رکن سیف الاسلام زندہ ہے۔ابھی لیبیا کے نئے رہبران یہ ہی نہیں جانتے کہ جمہوریت کے راستے کشادہ رکھنے کے لیے، عوام کے جذبہ و احساس کو پذیرائی بخشنے کے لیے تمام سیاسی و سماجی معاملات کو منتخب نمائندوںکی اجتماعی فکر کے ذریعے سلجھایا جاتاہے۔یہ لیبیائی اب بھی امریکی و یوروپی استبداد کی گرفت میں ہیں ۔ لندن سے ان نوگرفتاران سیاست کے لیے ہر روز فرمان جاری ہوتے ہیں۔ اب یہ حالت ہے

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی
پچھلے دنوں فلسطین کا مسئلہ بہت گرم خبر بن گیا اور دنیا بھر میں اخبارات، رسائل اور الیکٹرانک میڈیا میں اس بات پر تبصرے ہوتے رہے ۔ماہرین نے کھل کر تبصرہ کیا۔ وجہ یہ ہے کہ تقریباً گزشتہ چایس سالوں سے مغربی لیڈروں کے جھوٹے وعدے پر بھروسہ کرکے اب فلسطین کے موجودہ صدر جناب محمود عباس نے 23 ستمبر 2011 کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں آزادیٔ فلسطین کا مطالبہ کیا ، پھر دوسرے دن سکریٹری جنرل بان کی مون کو ایک درخواست پیش کردی ۔ بس ایک طوفان برپا ہوگیا۔ صرف ای

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی
برطانیہ میں قومی قیادت کے دعویداروں اور سچائی کا دم بھرنے والوں یعنی ٹوری پارٹی کے رہنمائوں کے حقیقی خد وخال اب کھل کر سامنے آ چکے ہیں۔ وہ جو اپنی آستینوں میں انقلاب لیے پھرتے ہیں، اب ان کی فکری تجوریاں خالی ہو چکی ہیں۔ گزشتہ دنوں مانچسٹر میں ٹوری پارٹی کی سالانہ کانفرنس میں ٹوری حکومت کے عوامی فنڈ میں کٹوتیوں کے خلاف 35 ہزار سے زیادہ افراد نے مظاہرہ کیا۔ مظاہرین کی جانب سے ٹوریز آئوٹ کے نعرے، ہارن اور سیٹیاں بجانے کے ساتھ ساتھ جھنڈے اور بینر لہرائے گئے، جن پر

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی، لندن (یو کے)
اسامہ بن لادن کے گھر ایبٹ آباد سے جو کاغذات ڈائریاں اور سی ڈی برآمد ہوئی ہیں ان کی روشنی میں بتایا گیا ہے کہ اسامہ اس سال 9/11کی سالگرہ پر اوبامہ کا طیارہ گرا کر اُنہیں قتل کرنا چاہتا تھا۔ وہ ڈیوڈ پیٹر یاس کو بھی قتل کرنا چاہتا تھا۔ انتہا پسند اس سلسلے میں اپنی ٹیم جمع کر رہے تھے، دستاویز سے انکشاف ہو اہے ۔
گذشتہ جمعرات کو ہائوس آف کامنز میں ہیومن رائٹس سوسائٹی کے ایک جلسہ میں پاکستان کے ممتاز سیاستداں اور ماہر قانون ایس ایم ظفر نے تقریر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں فوجی نظام پڑوس کی وجہ سے رائج ہوتا ہے اورجمہوری نظام کو پڑوسی اتنی عزت نہیں دیتے اس وجہ سے پاکستان ا

Read more

ہنگامۂ حیات کی شاعر ثروت زہرا

حیدر طبا طبائی
ان کے مجموعہ کلام بنام’ جلتی ہوا کا گیت‘ میں ظاہری شان و شوکت کے بجائے معنوی خوبیاں ملتی ہیں، وارداتِ قلب کا انداز بھی بدلا ہوا ہے، اشعار میں اظہارِ درد و غم ، کاوش و محنت اور اسلوب بیان بہت خوب ہے۔
ابن معتز کی رائے ہے کہ عمدہ شعر وہ ہے جو دل سے کسی چیز کو پوشیدہ نہ رکھے۔ ابن معتز شعر کو سرور و آگہی کا باعث کہتے ہیں۔ان کا قول ہے کہ ایسا کب

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی
وقت و ساعتیں گزر رہی ہیں اور قبل اس کے ہمیں آئندہ کی خبر ہو، ماضی کی بخیہ گری سامنے آنے لگتی ہے ۔ رازوں کو پوشیدہ رکھنے والے پردے اٹھ جاتے ہیں اور گزرہ ہوا سچ سامنے آ جاتا ہے۔ شہزادی ڈائنا کی پر اسرار موت پر مبنی فلم جس کو خود برطانوی پروڈیوسر اور دیگر تمام لوگوں نے برطانیہ میں ہی بنایا ہے اب یہ فلم برطانیہ میں ہی نہیں ریلیز ہو سکے گی۔ اس فلم کی نمائش پر اس لیے پابندی لگی ہے کہ اس دھماکہ خیز فلم میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ شہزادی ڈائنا کو خود برطانوی اسٹیبلشمنٹ نے قت

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی
لندن میں اب پانچ علاقوں میں آر ایس ایس کی شاخائیں لگائی جاتی ہیں جن میں بچوں کو صرف ورزش کرنا ڈرل کرنا اور وندے ماترم گانا سکھایا جاتا ہے۔ لیکن اندر ہی اندر زہر پھیلانے کی سازشیں جاری ہیں چنانچہ گزشتہ چار جون کو رام دیو کی حمایت میں ستیہ گرہ کرنے کی بھی بات کہی گئی تھی جو ہر ہندوستانی نے مسترد کردی ورنہ سرکاری اقدامات سے پرے دوسرے لوگ دخل اندازی کرسکتے تھے۔ رام دیو دہلی والوں کو اُلّو بنانے میں کسی حد تک کامیاب ہو جائیں۔ قیامت کی گرمی میں ٹھنڈے کولر لگے قیمتی پنڈال اور مُفت کھانے کے لالچ میں کئی لاکھ آجائیں گے، اب یہ مسائل لندن

Read more

لندن نامہ

حیدر طبا طبائی
اسامہ کی موت پر پورے مغرب میں کھلبلی مچی ہوئی ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ عراق میں سقوط کے فوراً بعد صدام کو ایک جونیئر افسر نے اپنے گھر میں نہایت خفیہ طور پر رکھا ہوا تھا، جہاں سے پکڑ کر امریکہ نے اس کی داڑھی بڑھوائی پھر ایک اپنے بنائے ہوئے غار میں اس کو اتار اگیا۔ پھر دانتوں کا معائنہ ہوا، یعنی اپنے اسیر کو ذلیل و خوار کیا گیا، لیکن اسامہ نے جیسے ہی اپنے گھر کی چھت پر ہیلی کاپٹروں کی آواز سنی تو اپنی یمنی بیوی امل السادہ کو بیدار کر کے کہا کہ اب میرا وقت آخر آگیا تم فوراً دوسری منزل پر چلی جاؤ اور امل کے جاتے ہی اسامہ نے ڈائنامائٹ کا وہ آہنی خود پہن کر اپنے کو اڑا لیا۔ اب اسامہ کے بدن کے ٹکڑے در و دیوار او

Read more

لندن نامہ

حیدطباطبائی
لندن میں پاکستانیوں کی ایک بہت بڑی تعداد سوگ میں ڈوبی ہوئی ہے، کیوں کہ یہ لوگ دہشت گردی سے محبت کا ناطہ رکھتے ہیں اور اسامہ ان کا محبوب تھا، ا س کے باوجود کہ ازل سے انسانوں کی فطرت خدا فراموش فرعونوں سے نفرت کرتی چلی آئی ہے۔ عہد حاضر میں فرعون بھی بذریعہ زر انسانوں کا محبوب بن جاتا ہے، ایسا ہی اسامہ بھی تھا۔ برطانوی لوگوں کے مطابق نہ اس کی حکمت عملی اسلامی تعلیمات کے مطابق تھی، نہ وہ ایک مرد دانا کی طرح عہد حاضر کی زمینی حقیقتوں کا شعور رکھتا تھا، وہ تو بس شادیاں کرو، انسانوں کو مارو اور عیش کرو پر یقین رکھتا تھا۔ نہ اس کے منتخب کردہ راستے نے بالعموم امت مسلمہ کے مفادات کی آبی

Read more
Page 1 of 512345