خواتین ریزرویشن بل: مرد ممبران پارلیمنٹ کو اعتراض کیوں

فردوس خان
خواتین کو بااختیار بنانے کے تمام دعووں کے باوجود خواتین ریزرویشن بل گزشتہ ڈیڑھ سال سے بھی زیادہ مدت سے لوک سبھا میں زیر التوا ہے، کیونکہ زیادہ تر مرد ممبران پارلیمنٹ نہیں چاہتے کہ خواتین سیاست میں آئیں۔ انھیں ڈرہے کہ اگر ان کی سیٹ خاتون کے لئے ریزرو ہو گئی تواس صورت میں وہ الیکشن کہاں سے لڑیں گے۔ دراصل، کوئی بھی ممبر پارلیمنٹ اپنا انتخابی حلقہ نہیں چھوڑنا چاہتا۔ حالانکہ خواتین ریزرویشن بل کی مخالفت کرنے والی سیاسی

Read more

اعلانات تو ہو گئے، عمل کب ہوگا؟

سرکار نے عورتوں کے لیے الگ سے بینک کھولنے کا اعلان کیا ہے۔ اس اعلان کے فوراً بعد ہی اس پر تنقیدوں کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔ اس بینک کو کھولنے کے پیچھے سرکار کی کیا منشا ہے، جانتے ہیں اس رپورٹ میں …

Read more

خواتین سے جنسی استحصال: جنوبی کوریا سے سبق لیں

فردوس خان
ہمارے ملک کے چھوٹے چھوٹے گاؤں سے لے کر شہروں تک جنگل بنتے جا رہے ہیں، جہاں پر خواتین محفوظ نہیں ہیں۔ حالت یہ ہے کہ اخباروں کے صفحات عصمت دری اور اجتماعی عصمت دری کی خبروں سے بھرے رہتے ہیں۔ اس سے نمٹنے کے لیے حکومت کو جنوبی کوریا کی طرح سخت قدم اٹھانے ہوں گے۔ حال ہی میں خبر آئی ہے کہ جنوبی کوریا میں عصمت دری کرنے والوں کو نامرد بنا دیا

Read more

پنجاب اسمبلی انتخابات کے نتائج: کانگریس کی ہار کا سبب پنجاب پیپلز پارٹی

فردوس خان
پنجاب میں شرومنی اکالی دل – بی جے پی اتحاد کو دوبارہ اقتدار پر قابض ہونے میں وزیر اعلیٰ پرکاش سنگھ بادل کے بھتیجے اور سابق وزیر مالیات من پریت سنگھ بادل نے اہم رول ادا کیا ہے۔ انہوں نے شرومنی اکالی دل سے الگ ہو کر پنجاب پیپلز پارٹی کی تشکیل کی اور انتخابی میدان میں کود پڑے۔ پنجاب پیپلز پارٹی اور سانجھا مورچہ کے امیدواروں نے یہاں سب سے زیادہ کانگریس کو نقصان پہنچایا۔ کانگریس کے اس نقصان کا سیدھا فائدہ شرومنی اکال

Read more

گریٹر نوئیڈا تحویل اراضی معاملہ: خواب بننے اور ٹوٹنے کی داستان

فردوس خان
تحویل اراضی معاملے میں سرکار کا رویہ اور اعلیٰ افسروں کا لالچ کسانوں،بلڈروں اور اپنے گھر کا خواب سجانے والے لوگوں کے لیے مصیبت کا سبب بن گیا ہے۔ سرکار کی کوتاہی یہ ہے کہ تحویل اراضی نظرثانی بل کو اب تک قانون کا درجہ نہیں دیا گیا۔ انگریزی دور کا قانون آج بھی نافذ ہے، جس کے سبب اکثر عوام اور سرکار کے درمیان ٹکرائو کے حالات پیدا ہو جاتے ہیں ۔ موجودہ تحویل اراضی قانون 1894 میں نافذ کیا گیا تھا۔ اس وقت سرکار نے اس قانون کے ذریعہ عوامی ترقیاتی کاموں کے علاوہ سرمایہ داروں کو فائدہ پہنچانے کا کام کیا تھا۔آزادی کے بعد خاص طور پر 1990 کی دہائی میں لبرل ازم اور نجکاری کو بڑھاوا ملنے کے دور میں اسی قانون کا سہارا لے کر سرمایہ داروں نے لوگوں کی زمینیں ہتھیانا شروع کردیا۔ سال 2005

Read more

بھوکوں کو روٹی دینے کی قواعد

فردوس خان
ملک میں غذائی تحفظ (فوڈ سیکورٹی) بل کو منظوری ملنے سے فاقہ کشی کی وجہ سے ہونے والی اموات میں کچھ حد تک کمی آئے گی، ایسی امید کی جا سکتی ہے۔حال ہی میں یو پی اے کی صدر سونیا گاندھی کی صدارت والی قومی صلاح کار کمیٹی( این اے سی) نے قومی غذائی تحفظ بل 2011 کو منظوری دی ہے۔ اس کا مقصد فاقہ کشی کے شکار لوگوں کو غذائی تحفظ فراہم کرانا ہے۔اگر یہ بل پارلیمنٹ میں پاس ہو جاتا ہے تو ملک کے عوام کو رعایتی قیمتوں پر اشیاء خوردنی مل سکے گی۔بل کے مطابق،46فیصد گائوں میں رہنے والے اور 28 فیصد شہر میں رہنے والے خاندانوں کو ترجیحی گروپ میں شامل کیا جائے گا۔ ان خاندان کے فی ممبر سات کلواناج یعنی تین روپے کلو گیہوں

Read more

پھر ٹوٹا پولس کا قہر

فردوس خان
یو پی کے لکھیم پور کھیری ضلع کے نگھاسن تھانہ میں نابالغ کے قتل سے ایک بار پھر پولس کی کارکردگی پر سوالیہ نشان لگ گیا ہے کہ آخر پولس عوام کی حفاظت کے لیے ہے یا ان پر ظلم و ستم ڈھانے کے لیے؟حالانکہ معاملہ کی تفتیش سی بی سی آئی ڈی کے سپرد کی گئی ہے۔ اس معاملہ میں ایس او روی سری واستو ، ایس آئی وی کے سنگھ اور رام ورما سمیت 11پولس اہلکاروں کوبرخاست کر دیا گیا ہے۔ پولس کی نیت کا اندازہ اس بات سے بآسانی لگایا جا سکتا ہے کہ اس معاملہ میں داروغہ وی کے سنگھ، حوالدار ایس کے سنگھ اور رام چندر کے خلاف صرف ثبوت مٹانے کی دفعہ کے تحت کیس درج کیا گیا ہے۔بعد میں دبا ئو پڑنے پر نا معلوم لو

Read more

زخم ابھی تازہ ہیں، ٹیس ابھی باقی ہے۔۔

فردوس خان
وقت بدلا، حالات بدلے، لیکن نہیں بدلیں تو زندگی کی دشواریاں، آنسوئوں کا سیلاب نہیں تھما، اپنوں کے گھر لوٹنے کے انتظار میں پتھرائی آنکھوں کی پلکیں نہیں جھپکیں، اپنوں سے بچھڑنے کی تکلیف سے بے حال دل کو قرار نہ ملا۔ یہی ہے میرٹھ فساد متاثرین کی داستان۔میرٹھ کے ہاشم پورہ میں 22مئی 1987اور ملیانہ گائوں میں23مئی 1987کو حیوانیت کا جو ننگا ناچ ہوا، اس کے نشان آج بھی یہاں دیکھے جا سکتے ہیں۔ ان فسادوں نے یہاں کے باشندوں کی زندگی کو پوری طرح تباہ کر دیا۔ عورتوں کو بیوہ بنا دیا، بچوں کے سر سے باپ کا سایہ ہمیشہ کے لیے اٹھ گیا۔ کئی گھروں کے چراغ بجھ گئے۔ فسادیوں نے گھروں میں آگ لگا دی، لوگوں کو زندہ جلا دیا، عورتوں کو تلوار وںسے کاٹا گیا، معصوم بچوں کو بھی آگ کے حوالہ کر دیا گیا۔عالم یہ تھا کہ لوگوں کو دفنانے کے لیے جگہ کم پڑ گئی۔ یہاں کے قبرستان کی ایک ایک

Read more

راہل گاندھی نہیں چاہتے کہ کسانوں کے مسائل ختم ہوں

کانگریس کی قیادت والی یوپی اے حکومت کی پالیسیاں کچھ اور ہیں اور راہل گاندھی کچھ اور بات کرتے ہیں۔ حکومت لینڈ ایکوائرنگ سے متعلق برسوں پرانے قانون کی سمت میں کوئی قدم نہیں اٹھاتی ہے اور راہل گاندھی اسی قانون کے تحت ہونے والی لینڈ ایکوائرنگ کی مخالفت کرتے ہیں، لیکن صرف وہیں جہاں غیر کانگریسی حکومت ہے۔ یہی رویہ انھوں نے اترپردیش کے گوتم بدھ نگر میں ہوئی لینڈ ایکوائرنگ معاملہ میں اختیار کیا۔ گوتم بدھ نگر کے گائوں بھٹا میں لینڈایکوائرنگ کے خلاف تحریک کر رہے کسانوں پر فائرنگ ہوتی ہے، کسان مرتے ہیں، عورتیں بیوہ ہوتی ہیں، بچے یتیم ہوتے ہیں، لیکن راہل گاندھی ان کی خبر لینے نہیں جاتے۔ مگر جیسے ہی ح

Read more
Page 1 of 212