اب فیصلہ سپریم کورٹ کو کرنا ہے

سنتوش بھارتیہ
اب فیصلہ سپریم کورٹ کو کرنا ہے۔ 60سال بعد الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلہ نے کئی سوال کھڑے کردئے ہیں۔ بغیر کسی ثبوت اور تصدیق کے کورٹ نے کہہ دیا کہ رام کی پیدائش وہیں ہوئی ہے، جہاں بیس سال قبل بابری مسجد کے گنبد تھے۔یہ عقیدہ ہے اور اسے عدالت نے تصدیق اور ثبوت کی شکل میں مانا ہے۔اگر جائے پیدائش کورٹ مانتا ہے تو کہیں ان کا محل ہوگا کہیں راجا دشرتھ کا دربار ہوگا، کہیں تین مہارانیوں کی رہائش رہی ہوگی۔کوئی اسے کترک کہے گا مگر عدالت اگر ایسی ہی بنیاد پر فیصلہ دے دے تو کیا کہیں گے؟ اسلئے امید کرنی چاہئے کہ سپریم کورٹ

Read more

ملک کو کہاں جانا ہے فیصلہ کیجئے

سنتوش بھارتیہ
الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج دیا جائے گا، لیکن اہم یہ ہے کہ ملک میں دانستہ طور پر تناؤ کا ماحول بننے دیا گیا، جو لوگ روزانہ ٹیلی ویژن دیکھتے ہیں اور اخبار پڑھتے ہیں، انہیں بھی یہ شک ہے کہ فیصلہ رام مندر تھا یا بابری مسجد، اس پر آنے والا ہے۔ بہت کم لوگوں کو اس بات کا علم ہے کہ فیصلہ ٹائٹل سوٹ یعنی زمین کس کی ہے، اس پر آنے والا ہے۔

Read more

ہماری برادری کی جے ہو

سنتوش بھارتیہ
کیاہماری دنیا سچ مچ اندھیری اور اندھی ہوتی جارہی ہے؟ ہماری دنیا سے مطلب ہم صحافیوں کی دنیا سے ہے۔ ہم اس لئے یہ بات اٹھارہے ہیں ،کیونکہ صحافیوں کو غیر تحریری اختیارات ملے ہیں،جن کی سبھی عزت کرتے ہیں۔ اس بات پر تمام لوگوں کا اتفاق ہے کہ مقننہ، عدلیہ اور عاملہ کی طرح میڈیا بھی مساوی طور پردستور کاستون ہے اور اسے تینوں پر تبصرہ اور تنقید کرنے کا پورا اختیار ہے۔ کسی کو بھی کہیں بھی روک کر سوال پوچھنے کا حق صرف صحافیوں کا دیا گیا ہے اور لوگ بھی اس حق کی عزت کرتے ہیں۔ عام لوگوں کے درمیان اب تک یہ خیال عام ہے

Read more

پاکستان کے ابرار الحق سے سبق لیجئے

سنتوش بھارتیہ
پاکستان شاید اس وقت تاریخ کے سب سے بڑے المیہ سے دوچار ہے۔سیلاب کی تباہ کاریوں نے جہاں اس کے ایک چوتھائی حصہ کوشدید طور پر متاثر کیا ہے وہیں کرکٹ میچ کی اسپاٹ فکسنگ نے پوری دنیا میں اس کا سر شرم سے جھکا دیا ہے۔ یوں تو مملکت خدادا پاکستان بدعنوانی اور کرپشن کے عفریت سے کبھی بھی پاک نہیں رہا ہے، تاہم یہ دور اس کی تاریخ کا سب سے بدترین دور ہے۔سیلاب نے تقریباً2کروڑ لوگوں سے ان کا آشیانہ چھین لیا ہے۔ اس کے ایک چوتھائی علاقوں میں ابتری و بے چینی کے حالات ہیں اورلوگ بھوک و پیاس سے تڑپ کر اپنی جان دے رہے

Read more

بابری مسجد،رام جنم بھومی تنازعہ پر فیصلہ : سیکولرازم کے لئے ایک چیلنج

سنتوش بھارتیہ
تاریخی واقعات چیلنجز لے کر آتے ہیں ۔ بابری مسجد – رام جنم بھومی تنازعہ آزاد ہند کا پہلا ایسا واقعہ ہے، جس نے ہماری قومیت اور سیکولرازم کو ایک ساتھ چیلنج دیا ہے۔ 60برس سے چل رہے تنازعہ کی سماعت ختم ہو گئی ہے۔ اب فیصلہ کا وقت آگیا ہے۔ حالانکہ یہ بھی طے ہے کہ فیصلہ آتے ہی معاملہ سپریم کورٹ پہنچ جائے گا۔ یہ کوئی

Read more

کیسے منائیں ہم عید؟

سنتوش بھارتیہ
رمضان کا مقدس مہینہ رخصت ہوا چاہتا ہے اور شادمانیوں و مسرتوں کے دن عید کی آمد آمد ہے۔چاروں طرف خوشیوں کا ایک شور بپا ہے اور شور ہو بھی کیوں نہیں! مسلمانوں کوایک ماہ تک بھوکا پیاسا رہ کر یہ دن نصیب ہوتا ہے۔ اللہ ایک ماہ تک ماہ رمضان کے ذریعہ اپنے بندوں کے صبر کا امتحان لیتا ہے، جو برگزیدہ بندے اس امتحان میں کامیاب ہوجاتے ہیں ان کے لیے رب کائنات کی جانب سے تحفتاً عید کا دن پیش کیا گیا ہے۔یوں تو بالخصوص یہ دن روزہ داروں کے لیے ہے تاہم غیر مذاہب کے لوگ بھی اس دن روزہ داروں کی خوشی میں شریک ہوتے ہیں اور باہمی رواداری و فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی عمدہ نظیر پیش کرتے ہیں۔یقیناً عظیم مذہب ہے اسلام۔خوشی کے دن (عید) کو بھی عبادت سے خالی نہیں

Read more

آخر حکومت کب سمجھے گی؟

سنتوش بھارتیہ
لال گڑھ میں ممتا بنرجی کی ریلی ہوئی۔ اس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ مارکسوادی کمیونسٹ پارٹی اور بی جے پی نے الزام لگایا کہ یہ سارے ماؤنوازوں کے حامی اور مسلح افراد تھے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ تیس سے پچاس ہزار افراد اگر ہتھیار لے کر اکٹھا ہو سکتے ہیں، جیسا کہ الزام لگا ہے تو مقامی و مرکزی حکو مت کے لیے ڈوب مرنے کی بات ہے۔ اس لیے کیوںکہ یہ عام لوگوں کی بے اطمینانی کا مظاہرہ ہے اور حکومت پر اعتماد نہیں ہے۔ ممتا بنرجی کو اس لیے گھیرا جارہا ہے کہ انہوں نے کیوں آزاد کی موت کا سوال وہاں اٹھایا۔

Read more

یہ ہم کس جانب بڑھ رہے ہیں؟

سنتوش بھارتیہ
انیس سو سینتالیس میں آزادی ملی اور سن 50میں ملک کو اس کا آئین ملا اور ہندوستان جمہوریہ کہلایا۔ایک پوری نسل جو 45یا 50میں پیدا ہوئی اپنی جوانی گزار چکی اورمتوسط عمر پار کر کے بڑھاپے کی جانب جا رہی ہے۔ ملک کو ترقی کی جانب بڑھنا چاہئے تھا ،لیکن ہم جانتے ہیں کہ ہم کس جانب بڑھے ہیں۔
آخر کب سوچنے کا وقت آئے گا کہ ملک کو بنیادی ڈھانچہ کی ضرورت ہے، جس کا فیصلہ لینے کے لئے کسی نظریہ کی ضرورت نہیں ہے۔ بی ج

Read more

کیا کوئی آدمی ونو بابھاوے جیسا نہیں ہے؟

سنتوش بھارتیہ
کشمیر میں ایک ماہ سے زائد عرصہ سے تشدد کا سلسلہ جاری ہے۔ تشدد بھی دہشت گردوں کا نہیں، عام آدمی کا۔ عام آدمی بھی تشدد برپا نہیں کر رہا ہے، بلکہ کشمیر انتظامیہ کی مخالفت کر رہا ہے۔ سیکورٹی دستے ،انتظامیہ، حکومت سبھی سے وہ ناراض ہیں۔ مخالفت جب تک بندوق کی گولی سے ہو تو اس کا مقابلہ حکومت گولی سے کرسکتی ہے، لیکن

Read more