سچر کمیٹی کی سفارشات کا نفاذ : جھوٹے دعوے ، جھوٹے وعدے، مسلمانوں کی حالت اور خراب

سچر کمیٹی کی تفتیش سے پتہ چلا کہ ہندوستانی مسلمانوں کو بینکوں سے جو قرض ملتا ہے یا پس ماندہ طبقات کے لیے مرکزی حکومت کی طرف سے جو پروگرام شروع کیے گئے ہیں، ان میں مسلمانوں کی حصہ داری بہت ہی محدود ہے۔ اس کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ چونکہ مسلمانوں کے پاس اتنا پیسہ نہیں ہے کہ وہ بینکوں سے قرض (Loan) لینے کے بعد اسے لوٹا سکیں، اس لیے وہ بینکوں سے کم رجوع کرتے ہیں۔ دوسری سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ مسلمانوں کو پتہ ہی نہیں چلتا کہ بینکوں کی طرف سے کس کس قسم کے لون ملتے ہیں یا سرکار کی کون کون سی اسکیمیں ہیں، جن سے مالی فائدہ حاصل ہو سکتا ہے۔ اس کے علاوہ سچر کمیٹی کو بہت سی شکایات ایسی بھی ملیں کہ ہندوستان بھر میں جہاں جہاں مسلمانوں کی

Read more

جامعہ ہمدرد : جہاں قانون کا بس نہیں چلتا

تعلیم گاہ کو ماں کی گود تصور کیا جاتا ہے۔ بچپن میں ماں اپنے بچوں کو جو کچھ سکھاتی ہے، آگے جاکر بچہ وہی کرتا ہے۔ یہی بات تعلیم گاہوں کے بارے میں بھی کہی جاتی ہے۔ ملک کے مستقبل کو اگر روشن بنانا ہے، تو تعلیم گاہوں میں بچوں کی تعلیم صحیح طریقے سے ہونی چاہیے۔ ظاہر ہے، یہ ذمہ داری جتنی درس و تدریس سے جڑے افراد کی ہے، اتنی ہی ذمہ داری ہماری سرکار کی بھی ہے۔ لیکن ہندوستان کی قومی راجدھانی دہلی میں جامعہ ہمدرد کے نام سے ایک ایسی یونیورسٹی ہے، جہاں نہ تو قانون کا زور چلتا ہے اور نہ ہی کسی سرکاری ادارے کا۔ یہاں کے وائس چانسلر ڈاکٹر غلام نبی قاضی نے اپنی ایک الگ سلطنت قائم کر رکھی ہے اور اپنا ایک الگ آئین بنا رکھا ہے۔ ان کے خلاف عدالتوں تک میں معاملے

Read more

وزارت اقلیت امور کو بند کر دینا چاہئے

آج کی دنیا میں مذہبی و لسانی اقلیتوں کو خصوصی اہمیت و حیثیت حاصل ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اقوامِ متحدہ بھی ان اقلیتوں کو تحفظ فراہم کرانے پر ہر طرح سے زور دیتا ہے اور مختلف ممالک کے آئین میں بھی اس کا لحاظ رکھا گیا ہے۔ بعض ممالک میں مذہبی امور سے متعلق مخصوص وزارت بھی قائم ہے، جو کہ مختلف مذہبی کمیونٹیوں کے معاملات کو الگ الگ شعبوں کے تحت دیکھتے ہیں۔ اس تعلق سے سری لنکا کی مثال ہمارے سامنے ہے، جہاں وزارتِ مذہبی امور کے تحت بدھسٹ اور مسلم امور کے الگ الگ شعبے قائم ہیں۔ جہاں تک

Read more

فسادات شروع ہو چکے ہیں

مغربی اتر پردیش کا شاملی اور مظفر نگر ضلع فرقہ وارانہ فسادات کی زد میں ہے، جس کی وجہ سے اب تک سینکڑوں لوگوں کی موت ہو چکی ہے اور ہزاروں فیملی اپنا گھر بار چھوڑ کر محفوظ جگہوں کی تلاش میں نقل مکانی کر رہے ہیں۔ اس علاقہ کے زیادہ تر لوگ عام طور سے کسان ہیں۔ ہندو مسلم بھائی چارے کی زندگی جیتے چلے آئے ہیں۔ اس علاقے میں کبھی فسادات نہیں ہوئے۔ ایسے میں یہ سوال اٹھتا ہے کہ آخر کیا وجہ تھی کہ یہا فرقہ وارانہ تناؤ بڑھا اور فسادات نے اتنی خطرناک صورت اختیار کر لی۔ میڈیا کے ذریعے یہ معلوم ہوا کہ ایک برادری کی لڑکی کے ساتھ دوسری برادری کے لڑکے کا عشق اور پھر اس کے نتیجہ میں دونوں فرقوں کے تین لڑکوں کا قتل ہو جانا ہی فساد کی اصل وجہ بنا۔ اسی کو بہانہ

Read more

سچر کمیٹی کی سفارشات : مسلمانوں کی تعلیمی پسماندگی پر گمراہ کر رہی ہے سرکار

سچر کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں مسلمانوں کی تعلیمی صورتِ حال کو بہتر بنانے پر سب سے زیادہ زور دیا ہے، کیوں کہ ہم سب اس بات سے واقف ہیں کہ تعلیم کے بغیر ترقی کا تصور بے معنی ہے۔ مسلمانوں کے ہر میدان میں پچھڑے ہونے کی بنیادی وجہ تعلیم سے ان کی دوری ہے، اسی لیے سچر کمیٹی نے یو پی اے سرکار کو مشورہ دیا تھا کہ وہ مسلمانوں کی تعلیمی پس ماندگی کو دور کرنے پر خاص توجہ دے، لیکن رپورٹ کو

Read more

سچر رپورٹ کا نفاذ: مسلمان ابھی تک تعلیمی پسماندگی کا شکار

ڈاکٹرقمر تبریز
ڈاکٹر منموہن سنگھ کی قیادت میں 2004 میں جب مرکز میں یو پی اے -Iکی حکومت بنی، تو اس نے مسلمانوں کے تئیں کافی سنجیدگی دکھانی شروع کی۔ سب سے پہلے تو اس نے 2004 کے ہی اخیر میں سپریم کورٹ آف انڈیا کے چیف جسٹس، آنجہانی رنگناتھ مشرا کی سربراہی میں ’قومی کمیشن برائے مذہبی و لسانی اقلیت‘ قائم کیا اور پھر مسلمانوں کی تعلیمی، سماجی و اقتصادی پس ماندگی کا پتہ لگانے کے لیے 2005 میں دہلی ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس راجندر سچر کی قیادت میں ایک سات رکنی سچر کمیٹی کی تشکیل کی۔ مشرا کمیشن نے تواپنی رپورٹ حکومت کو 21 مئی، 2007 کو سونپی، لیکن سچر کمیٹی نے اس سے کافی پہلے، یعنی 17 نومبر، 2006 کو ہی اپنی رپورٹ حکومت کے سپرد کر دی۔

Read more

سچر رپورٹ کا نفاذ ، کتنا سچ، کتنا جھوٹ: مسلمانوں کی سیاسی نمائندگی اب بھی باعث تشویش

ڈاکٹر قمر تبریز
ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے۔ ہمارے آئین نے ملک کے ہر شہری کو جمہوری عمل میں شریک ہونے کا برابری کی بنیاد پر حق دیا ہے۔ لیکن گزشتہ 66 برسوں کے دوران اقتدار پر صرف انہی لوگوں کا قبضہ رہا ہے، جن کا تعلق یا تو بڑی ذاتوں سے ہے یا پھر پیسے کے معاملے میں جو لوگ زیادہ طاقتور ہیں۔ المیہ تو یہ ہے کہ گزشتہ چند دہائیوں سے اقتدار میں داغی، شہ زور اور اس قسم کی دیگر بدعنوانیوں میں ملوث افراد کی حصہ داری بڑھنے لگی ہے۔ مقننہ میں پس ماندہ افراد اور خاص کر مسلمانوں کی ان کی آبادی کے تناسب سے

Read more

سچر رپورٹ کا نفاذ: کتنا سچ، کتنا جھوٹ

ڈاکٹر قمر تبریز

ہندوستان مختلف مذہبوں، تہذیبوں اور افکار و نظریات کا ملک ہے۔ آئین ہند میں بھی اس کی اس حیثیت کو تسلیم کیا گیا ہے اور سیکولر ازم کی مخصوص تشریح کے تحت سبھی کو اپنے اپنے عقیدہ و سوچ کے مطابق نجی و اجتماعی زندگی گزارنے کی آزادی دی گئی ہے۔ جہاں تک ساتویں صدی عیسوی میں اس ملک میں متعارف ہونے والے اسلام کے حاملین کا سوال ہے، تو یہ یہاں انڈونیشیا اور پاکستان کے بعد دنیا کی تیسری سب سے بڑی اور ملک کی دوسری سب سے بڑی مذہبی آبادی ہیں۔ 2001 کی مردم شماری کے مطابق یہ ملک کی کل آبادی

Read more

وائس چانسلر جی این قاضی کی دھاندلیوں کی شکار ہمدرد یونیورسٹی

کیا داخلہ جاتی (Entrance) امتحان دیے بغیر کسی کا میڈیکل کورس میں داخلہ ہو سکتا ہے؟ بغیر انٹریو دیے ہوئے کوئی یونیورسٹی کے کسی اہم ڈپارٹمنٹ کا ڈائرکٹر بن سکتا ہے یا کسی ایسے عہدہ پر فائز ہو سکتا ہے، جس کے لیے اس نے کبھی اَپلائی ہی نہ کیا ہو؟ جس نے کبھی مینجمنٹ یا بزنس اسٹڈیز جیسے سبجیکٹ کا مطالعہ نہ کیا ہو، کیا وہ مینجمنٹ کے اسٹوڈنٹس کو یہ سبجیکٹ پڑھا سکتا ہے؟ کیا کسی یونیورسٹی کا وائس چانسلر ریٹائر ہونے کے بعد بھی اپنے عہدہ پر برقرار رہ سکتا ہے؟ بغیر کسی تجربہ یا ضروری شرائط کو پورا کیے بغیر کوئی کسی یونیورسٹی میں فیکلٹی کا ڈین یا ڈپارٹمنٹ کا ہیڈ بن سکتا ہے؟ یونیورسٹی میں کنسٹرکشن کا (تعمیراتی) کام کیا کسی ایسی کمپنی کو دیا جا سکتا ہے، جس

Read more