ممتا لہر

دلیپ چیرین
مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی خود کو اپنے پیش رو بدھا دیو بھٹا چاریہ کے کام کرنے کے طریقے سے الگ رکھنا چاہتی ہیں۔ اس فیصلہ پر مرکزی حکومت میں وزیر کے طور پر کام کرنے کے ان کے تجربہ کا اثر ہے یا کچھ اور، کہہ نہیں سکتے، لیکن ایسا لگ رہا ہے کہ دیدی رایٹرس بلڈنگ میں بھی پی ایم جیسا ماڈل تیار کرنا چاہتی ہیں۔ ممتا کا وزیر اعلیٰ کا دفتر، جسے سپر سی ایم او کہا جا رہا ہے، میں چہیتے بابو ہوں گے، جو براہِ راست ان کے کنٹرول میں کام کریں گے۔ بدھا دیو کے دورِ حکومت میں جہاں ان کے دفتر میں سات سے آٹھ ملازم ہوتے تھے، وہیں ممتا کے دفتر میں اس سے دو گنے ملازم ہوں گے۔ ایسا اس لیے کیوں کہ وزیر اعلیٰ نے

Read more

بابوئوں کی نقل مکانی

دلیپ چیرین
مغربی بنگال اور تمل ناڈو میں سیاسی بدلائو ہوتے ہی، توقع کے مطابق راجدھانی سمیت ریاست کے کئی حصوں میں انتظامی الٹ پھیر کی قواعد شروع ہو گئی ہے۔ افسران کے ٹرانسفر ، پوسٹنگ کا دور شروع ہو گیا ہے۔ اپنی مدت کار کے پہلے دن ہی جے للتا نے ریاست کے چیف سکریٹری وائی ایس مالتی اورداخلہ سکریٹری کے گنان دیسیکن سمیت کئی افسران کو ان کے عہدہ سے ہٹا دیا۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ یہ محض ابھی شروعات ہے۔مغربی بنگال میں تو پہلے سے ہی کئی بابو ریاست سے کوچ کر چکے تھے۔ اس میں ایک نام سمت مترا کا بھی ہے۔وہ اب مرکزی ریوینیو سکریٹری ہیں۔ مترا سال بھر پہلے ہی کولکاتہ سے نکل کر دہلی پہنچ گئے تھ

Read more

بابوئوں کا بابو

دلیپ چیرین
گزشتہ دنوں ایک پرانے دوست کے پی سنگھ کا دہلی میں انتقال ہو گیا ، جس پر بہت سے سینئر بابوئوں کو صدمہ پہنچا۔ویسے تو کے پی سے پہلے ان کے بہت سے دوست اس دار فانی سے رخصت ہو چکے ہیں ، لیکن ان کی یاد میں منعقد پروگرام میں بڑے بڑے بابو بڑی تعداد میں موجود تھے۔ کے پی خود تو کبھی بیورو کریٹ نہیں رہے، لیکن بابوئوں کی بڑی تعداد، جو دہلی اور خاص طور سے اتر پردیش میں اعلیٰ عہدوں پر فائز رہی، انہیں ہمیشہ یاد کرے گی۔ ہندوستان کے بیوکریٹک بورڈپر جس انداز میں کے پی نے لابنگ کرنے کا کام کیا، وہ آج کل کے لابسٹوں کے لئے ایک خواب ہے۔ویسے تو انھوں نے طویل عرصہ کے لئے برلا، آئی ٹی سی اور سری رام ج

Read more

نوکر شاہوں پر سخت ڈی او پی ٹی

دلیپ چیرین
گزشتہ کچھ ماہ سے محکمۂ محنت اور تربیت اپنے ان نوکرشاہوں کی نکیل کسنے میں مصروف ہے، جنہوں نے بار بار کہنے کے بعد بھی اپنی جائیداد کی تفصیلات جمع نہیں کرائی ہیں۔جبکہ ایسا کرنا ان کے لیے ضروری ہے۔اس لیے اب محکمہ نے ایسے نوکرشاہوں کو راستے پر لانے کے لیے ایک طریقہ نکالا ہے۔مثلاً ترقی کے لیے انہیں اپنی جائیداد کی جانکاری محکمہ کے پاس جمع کرنی ہی ہوگی۔نتیجتاً اس حکم کے بعد نوکرشاہوں پر اثر پڑاہے ،خاص طور پر آندھرا پردیش کے آئی اے ایس افسران پ

Read more

نتیش کے نقش قدم پر شیوراج

دلیپ چیرین
بدعنوانی کے خلاف نتیش کمار کی لڑائی کو چاروں جانب سے تعریفیں ملیں۔ جب نتیش کی حکومت نے 2009میں ایک بل پاس کرکے داغی نوکرشاہوں کی ملکیت ضبط کرنے کا انتظام کیا۔تب اس قانون نے نہ صرف سرخیاں بٹوریں بلکہ اسے جم کر تعریف بھی ملی۔نتیش سمیت سب نے یہ مانا کہ اس قانون نے انہیں دوبارہ وزیر اعلیٰ بنانے میں مدد کی۔اب مدھیہ پردیش کی حکومت نے بھی اسی طرح کا ایک بل پاس کیا ہے۔ یہ بل ان بابوئوں کی ملکیت کو ضبط کرنے کی طاقت دیتا ہے، جنھوں نے غیر قانونی طریقے سے بدعنوانی کے ذریعہ پیسہ کمایا ہے۔نیا اسپیشل کورٹ بل2011یہ یقینی بنائے گا کہ پٹواری سے لیکر چیف سکریٹری تک کے خلاف بدعنوانی کے

Read more

زرعی نوکرشاہوں کی مخالفت

دلیپ چیرین
ہندوستان میں کل ہند خدمات جیسے آئی اے ایس اور آئی پی ایس کی طرز پر ہندوستانی زرعی سروس کو نافذ کرنے کے لیے پریشان زرعی محکمہ کے افسران نے وزیر اعظم کے سامنے مانگ رکھی ہے۔پہلے بھی مانگ اٹھتی رہی ہے۔ یہاں تک کہ سرکاری کمیٹیوں اور کمیشنوں نے بھی ایسا کرنے کامشورہ دیا تھا لیکن اس پر ہوا کچھ نہیں،لیکن اس مرتبہ اس مہم کی قیادت کر رہی آل انڈیا فیڈریشن آف ایگریکلچر ایسو سی ایشن، جو کہ ہندوستان کے زرعی ماہرین،زرعی سائنس دانوں اور ا

Read more

عدالت کی پناہ میں

دلیپ چیرین
مسلسل ہو رہے انکشافات نے پبلک سروس سے متعلق افسران کو پریشان کر دیا ہے۔جس کے نتیجے میں پبلک سروس میں مسلسل آ رہی گراوٹ سے سابق نوکر شاہ فکر مند نظر آ رہے ہیں اور سپریم کورٹ سے اپیل کررہے ہیں کہ وہ اس معاملے میں مداخلت کرے۔ زیادہ تر مبصرین اسے ایک غیر معمولی قدم مانتے ہیں۔سابق کابینی سکریٹری ٹی ایس آر سبرامنیم اور دیگر82سابق نوکرشاہوں ، جن میں ریٹائرڈ الیکشن کمشنر ، ڈپلومیٹ، چیف سکریٹری اور پولس افسران شامل ہیں، نے سپریم کورٹ سے انتظامی اصلاحات جاری کرنے کی اپیل کی ہ

Read more

بڑی تبدیلی کا انتظار

دلیپ چیرین
حال میں کابینہ میں ہوئی تبدیلی کودیکھ کر ایسا لگا، جیسے مذکورہ تبدیلیاںبے دلی سے کی گئی تھیں۔اب بڑے عہدوں پر فائز بابوئوں میں پھیر بدل جو لمبے وقت سے پینڈنگ میں ہے کا انتظار کیا جا رہا ہے۔سب سے پہلے تو سی وی سی کے عہدے پر کون آئے گا، اس کا انتظار ہے؟ذرائع پر یقین کریں تو اس عہدے کے لیے مرکزی خزانہ سکریٹری سشما ناتھ اور مرکزی داخلہ سکریٹری جی کے پلئی کے ناموں پر غور کیا جا رہا ہے۔سپریم کورٹ کے سخت رخ کو دیکھتے ہوئے ایسی امید کی جا رہی ہے کہ حکومت اس عہدے کے لیے ک

Read more

جنگل کی لڑائی

دلیپ چیرین
وزیر ماحولیات جے رام رمیش کی سرگرمی اور تنازعہ پیدا کرنے کی جانب جھکاؤ نے کم مشہور اس وزارت کو موضوع بحث بنا دیا ہے۔ ساتھ ہی اس معاملے میں ماہر نوکرشاہوں کی مانگ بھی بڑھ گئی ہے۔ ذرائع کہتے ہیں کہ مسئلہ دھیرے دھیرے بڑھنے لگا ہے۔ جے رام رمیش نے ایک کمیٹی قائم کی ہے جس کی صدارت قومی صلاح کار کونسل کے ممبر این سی سکسینہ کو سونپی گئی ہے۔ اس کمیٹی کو ان قوانین میں بدلاؤ لانے کے لیے مشورے دینے کو کہا گیا ہے جن سے قومی جنگلاتی علاقے پر کنٹرول کیا جاتا ہے۔ تجزیہ کاروں کے مطابق سکسینہ نے حقوق جنگلات قانون کی بہتر عمل آوری کے لیے کئی مشورے دئے ہیں۔ کمیٹی نے یہ بھی الزام لگایا ہے کہ جنگلات سے متعلق معاملوں سے جڑے نوکر شاہ جنگلات قوانین کو بہتر طریق

Read more

بابوئوں کے دفاع میں شیلا

دلیپ چیرین
مرکزی حکومت کی من مانی نے حکومت دہلی کو پریشان کر دیا ہے۔ اس میں بابوؤں کے تبادلے سے جڑے معاملے بھی شامل ہیں۔ حال ہی میں حکومت دہلی کے چار بابوؤں کے تبادلے سے تو ایسا ہی محسوس ہوا۔ یہ چاروں بابو کافی اہم عہدوں پر فائز تھے۔ اس سے وزیراعلیٰ شیلا دیکشت کافی پریشان ہو گئیں۔ ذرائع کے مطابق سینئر آئی اے ایس افسر رمیش نیگی، کے کے شرما، آر کے ورما اور جے شریواستو کے تبادلے کی بھنک شیلا دیکشت کو بھی پہلے سے نہیں تھی۔ انہوں نے اس پر کہا کہ یہ تبادلے من مانے ڈھنگ سے کیے گئے، لیکن شیلا دیکشت کی وزیرداخلہ پی چدمبرم سے ہوئی بات چیت کے بعد ایسا محسوس ہوتا ہے کہ وزیراعلیٰ نے چدمبرم کو اس بات کے لیے راضی کرلیا ہے کہ ان میں سے کچھ بابوؤں کے تبادلے رو

Read more