طلاق ثلاثہ پراسدالدین اویسی کا وزیرقانون کوخط

Share Article
Asaduddin_Owaisi
وزیراعظم نریندرمودی کی قیادت میں 15دسمبرکوہوئی کابینہ کی میٹنگ میں مسلم خاتون سے متعلق طلاق ثلاثہ بل کومنظوری دے دی گئی ہے، جس میں ایک بار میں تین طلاق بولنے کوغیرقانونی بتاتے ہوئے ایساکرنے والے کوتین سال کی جیل کی سزاہوسکتی ہے ۔یہ بل پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس میں سرکارکااہم ایجنڈاہے۔سرکارکے اس قدم کی مخالفت کرتے ہوئے ایم آئی ایم کے سربراہ رکن پارلیمان اسد الدین اویسی نے مرکزی وزیر قانون روی شنکر پرساد کے نام ایک خط لکھاہے۔اس خط میں انہو ں نے سرکارکے اس قدم کوافسوسناک بتاتے ہوئے اس پرجینڈرجسٹس کے نام پرسیاسی فائدہ اٹھانے کا الزام لگایا۔اویسی نے یہ بھی کیاکہ سرکارکواس قانون کے سلسلے میں آل انڈیامسلم پرسنل لاء بورڈ سے رائے ومشورہ کرکے ان کے خیال کوجاننے چاہئے۔
اپنے خط میں اویسی نے تین طلاق کو جرائم میں شامل کرنے اور شوہر کو تین سالوں کیلئے جیل بھیجنے کی سزا کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ قانون غلط اور سرے سے بے بنیاد ہے۔انہوں نے لکھاکہ اس قانون اور تحفظ خواتین کے نام پر بڑے پیمانے پر مسلمانوں کو جیل بھیجنا آسان ہوجائے گا اور یہ مسلمانوں کو جیل بھیجنے کی ایک گہری سازش ہے جو ناقابل قبول ہے۔واضح رہے کہ سرمائی اجلاس میں تحفظ خواتین کے تحت ایک ساتھ تین طلاق دینے کے خلاف بل پیش کیا جائے گا جس میں تین طلاق دینے والوں کیلئے تین سال جیل کی سزا تجویز کی گئی ہے۔
Share Article

One thought on “طلاق ثلاثہ پراسدالدین اویسی کا وزیرقانون کوخط

  • December 16, 2017 at 7:08 am
    Permalink

    iske zimnadar Kon sirf modi sarkar nahi balki bikao Muslim mard aur aurtain

    Reply

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *