آرمی چیف بپن راوت نے تیجس سے بھری پرواز، کہا- اب بڑھے گی فوج کی طاقت

Share Article

 

ہندوستان میں بنے ایل سی اے تیجس کو جمعرات کو فائنل آپریشنل کلیئرنس ملا اور آج رسمی طور پر تیجس کو فضائیہ میں شامل کیا گیا۔

 

Image result for aero india 2019

بنگلور: ہندوستان میں بنے ایل سی اے تیجس کو جمعرات کو فائنل آپریشنل کلیئرنس ملا اور آج رسمی طور پر تےجس کو فضائیہ میں شامل کیا گیا۔ تیجس میں فوج کے سربراہ بپن راوت نے سوار ہو کر اڑ گئے۔ بنگلور میں ہو رہے ایرو انڈیا 2019 تقریب کے دوران آرمی چیف نے اس پر مختصر پرواز بھر دیسی لڑاکا طیارے کا معائنہ۔

 

پرواز کے بعد فوجی سربراہ بپن راوت نے کہا کہ تیجس پرواز بھرنے شاندار موقع تھا۔ اندھیرے میں ٹارگیٹ پر درست نشانہ لگانے کے قابل ہے۔ ایچ اے ایل اور ڈی آر ڈی او کا شکریہ۔ میں تجربے کی بنیاد پر میں کہہ سکتا ہوں کہ اس طرح کے جہاز بیڑے میں شامل ہونے سے مسلح افواج کی طاقت میں اضافہ ہوگا۔

 

Image result for aero india 2019

ہندوستان کا ہلکا لڑاکا طیارے تیجس ایم کے آئی کو آخری آپریشن منظوری (اےپھوسي) ملنے کے بعد ایف او سي کا باقاعدہ اعلان محکمہ دفاع کے آر اینڈ ڈی سیکرٹری، دفاعی تحقیق اور ترقی کی تنظیم کے صدر جی۔ ستیش ریڈی نے کی۔ ایرو انڈیا شو کے مختلف ایف او سي سرٹیفکیٹ اور رہائی ٹو سروس ڈاکومنٹ فضائیہ سربراہ کو سونپا۔

 

Image result for aero india 2019

 

تیجس جہاز کو بدھ کو فائنل آپریشنل کلیئرنس مل گیا تھا۔ اس کے ساتھ یہ طیارہ اب ہندوستانی فضائیہ کا حصہ بن چکا ہے۔ 123 طیاروں کو کلیئرنس دیا گیا ہے۔ یہ تمام طیارے ملک میں بنے ہیں۔ تیجس کئی صلاحیتوں سے لیس ایک جدید ہوائی جہاز ہے جن میں کم وجبلٹي میں نشانہ لگانا، ہوا میں ایندھن بھرا ہوا ہونا، ہوا سے زمین پر نشان لگا ہتھیار کو نشانہ بنانا شامل ہے۔

 

Image result for aero india 2019

 

بنگلور میں ہو رہے ایئر شو (ایرو شو) میں تیجس نے بھی اپنے جلوے دکھائے۔ تاہم، ایئر شو کے آغاز منگل کو حادثے میں ہلاک ہو گئے سوريكر ٹیم کے پائلٹ ونگ کمانڈر کو خراج تحسین پیش دے کر ہوئی۔ ایرو انڈیا کی شرات بدھ کو بنگلور کے اہلكار ایئر فورس بیس پر ہوئی۔سوريكر کے پائلٹ ونگ کمانڈر ساحل گاندھی کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے جےگار، تیجس اور سكھو تینوں جنگجوؤں نے ایک ساتھ سست رفتار میں کافی نیچے اڑ گئے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *