آندھراپردیش : پولنگ کے دوران وائی ایس آرکانگریس اورتلگودیشم کے کارکنوں میں جھڑپ

Share Article

 

آج ملک میں عام انتخابات کے پہلے مرحلے کی پولنگ اختتام کو پہنچی ۔ پولنگ کے دوران مختلف حصوں سے جھڑپیں اور تشدد کی خبریں بھی موصول ہوئی ۔آندھراپردیش میں پولنگ کے دوران تلگودیشم اور وائی ایس آر کانگریس کارکنوں کے درمیان جھڑپوں کے واقعات پیش آئے۔جس میں دونوں جماعتوں کے ایک ،ایک کارکن ہلاک ہوگئے ہیں۔ ریاست میں اسمبلی کی 175 اور لوک سبھا کی 25 نشستوں کے لئے آج صبح سے پولنگ کاعمل جاری تھا۔اس دوران ضلع اننت پورکے تاڑی پتری اسمبلی حلقہ میں ایک پولنگ بوتھ پر تلگودیشم اور وائی ایس آر کانگریس کے کارکنوں میں جھڑپ ہوئی ایک دوسرے کے خلاف چاقوں، لاٹھیوں سے حملہ کئے گئے۔جس کے نتیجہ میں تلگودیشم کارکن بھاسکرریڈی اور وائی ایس آر کانگریس کے کارکن پلاریڈی کی موت ہوگئی۔چند افراد زخمی بھی ہیں۔
وہیں ایک دوسرے واقعہ میں آندھراپردیش اسمبلی کے اسپیکرکوڈیلاشیواپرساد راؤپرضلع گنٹورکے ستن پلی میں وائی ایس آرکانگریس کے کارکنوں نے حملہ کیاگیا۔جس کے نتیجہ میں وہ گر پڑے۔شیواپرساد تلگودیشم کے امیدوار ہیں۔وہ ضلع کے راجوپالم منڈل کے انی میٹلا گاوں میں پہنچے۔جب وہ مرکزرائے دہی پہنچے تواس پربرہم وائی ایس آرکانگریس کے کارکن بڑی تعداد میں وہاں جمع ہوگئے اور ان کے خلاف نعرے بازی کی۔

 

Image result for andhra pradesh voters struggle

 

دریں اثنا آندھراپردیش کے وزیراعلیٰ این چندرابابونائیڈو نے ووٹنگ کے دوران پیش آئے پرتشدد واقعات کی مذمت کی۔اس کے علاوہ انہوں نے مرکزی الیکشن کمیشن کو ایک مکتوب روانہ کیا۔ جس میں نائیڈو نے کہا کہ صبح 7 بجے سے 9:30 بجے تک کئی پولنگ بوتھس پر ای وی ایمس میں خرابی کے سبب ووٹنگ متاثررہی ہے۔ اور کئی افراد حق رائے دہی سے محروم ہوگئے ہیں۔ اس لیے چندرابابونائیڈو نے ریاست میں اسمبلی اور لوک سبھا الیکشن دوبارہ منعقد کروانے کی مانگ کی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *