پلوامہ میں دہشت گردوں سے انکاؤنٹر میں ایک اور میجر شہید

Share Article

 

میجر شان 31 سال کے تھے اور گزشتہ سال ہی اپریل میں ان کی شادی ہوئی تھی۔ وہ تین بہنوں کے اکلوتے بھائی تھے اور گھر میں سب سے چھوٹے تھے۔

 

Image result for hari singh in pulwama encounter

پلوامہ: جموں و کشمیر کے پلوامہ کے پگلنا میں فوج کا دہشت گردوں کے ساتھ انکاؤنٹر ہوا۔ اس میں ایک میجر سمیت 4 جوان شہید ہو گئے ہیں۔ ان میں شہید ہوئے میجر شان کمار ڈھوڈيال اتراکھنڈ کے دہرادون کے رہنے والے تھے۔ گزشتہ سال اپریل میں ہی ان کی شادی ہوئی تھی۔ وہ تین بہنوں کے اکیلے بھائی تھے۔

 

Image result for hari singh in pulwama encounter

ایک سال پہلے ہی ہوئی تھی شادی
میجر شان 55 قومی رائفل میں تعینات تھے۔ بتایا جا رہا ہے کہ انکاؤنٹر کے دوران وہ دہشت گردوں کو گھیرے ہوئے تھے، تبھی گولی لگنے سے ان کی موت ہو گئی۔

 

Image result for terror ghazi rasheed dead

میجر گھر دہرادون کے نےشروولا روڈ کے 36 ڈگوال راستے پر ہے۔ میجر کے والد کی کنٹرولر ڈیفنس اکاؤنٹ آفس میں تھے اور ان کا انتقال ہو چکا ہے۔ گھر میں ان کی دادی، ماں اور بیوی رہتی ہیں۔
ان تینوں کو شان کی شہادت کا بارے میں پہلے نہیں بتایا گیا تھا۔ تاہم، بعد میں فوج کے افسروں نے بیوی کو ان کے شہادت کی خبر دی۔ دکھ کی یہ خبر سنتے ہی آس پاس کے لوگ تسلی دینے پہنچنے لگے۔ میجر شان 31 سال کے تھے اور گزشتہ سال ہی اپریل میں ان کی شادی ہوئی تھی۔ وہ تینوں بھائیوں کے اکلوتے بھائی تھے اور گھر میں سب سے چھوٹے تھے۔

 

Image result for terror ghazi rasheed dead

پلوامہ انکاؤنٹر میں ہوئے شہید
جموں و کشمیر کے پلوامہ میں اتوار کی رات 12 بجے سے چل رہے انکاؤنٹر میں فوج نے جیش محمد کے دو دہشت گردوں کو ڈھیر کر دیا ہے۔ اس میں پلوامہ حملے کا ماسٹر مائنڈ غازی رشيد بھی مارا گیا ہے۔ پیر کی صبح تک جاری رہی اس تصادم میں 55 قومی رائفلس کے میجر شان سمیت چار جوان شہید ہوئے ہیں۔ ان میں هريانہ کے ریواڑی کے رہنے والے سپاہی ہری سنگھ، راجستھان کے جھنجھنو کے سیوارام اور میرٹھ کے اجے کمار شہید ہو گئے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *