معہد علی بن ابی طالب لتحفیظ القرآن الکریم و شعبہ عربی کی سالانہ انجمن کاحسن اختتام

Share Article
annual-programe

نئی دہلی:جامعہ ابوبکر صدیق الاسلامیہ کے ماتحت قائم جنوبی دہلی کے معروف دینی ادارہ معہد علی بن ابی طالب اور شعبہ عربی کے طلباء کی سالانہ انعامی انجمن کا انعقاد نہایت تزک و احتشام کے ساتھ ہوا۔تین دنوں تک جاری رہنے والے اس سالانہ اجلاس کی چھٹی اور آخری نشست آج منعقد ہوئی جو معہد علی بن ابی طالب لتحفیظ القرآن الکریم کے طلباء کے مظاہرہ قراء ت پر مشتمل تھی۔

سالانہ انعامی انجمن کے پہلے دن پہلی نشست میں درجہ اعدادیہ و اولی متوسطہ کے طلباء نے پڑوسی کے حقوق پر تقریریں کیں، بعد نماز مغرب دوسری نشست میں شعبہ عربی کے طلباء نے اختیاری عناوین پر عربی زبان میں تقریریں پیش کیں۔بعد نماز مغرب دوسری نشست میں درجہ ثانیہ و ثالثہ متوسطہ اور ثانویہ اولی کے طلباء نے اصلاح معاشرہ میں نوجوانوں کا کردار کے عنوان سے تقریریں پیش کیں۔تیسرے دن سالانہ انعامی انجمن کی چھٹی نشست منعقد ہوئی جس میں معہد علی بن ابی طالب لتحفیظ القرآن الکریم کے طلباء نے حسن قراء ت و تجوید کا مظاہرہ کیا۔

قابل ذکرہے کہ چھ نشستوں پر مشتمل اس سالانہ مسابقہ کی صدارت اور حکم کے فرائض انجام دینے کے لئے دہلی کے اہم دینی و علمی اداروں کی موقر شخصیات کو دعوت دی گئی تھی جس میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند سے ڈاکٹر محمد شیث ادریس تیمی، جامعہ اسلامیہ سنابل سے مولانا فضل الرحمن ندوی، جامعہ ریاض العلوم سے مولانا عبدالنور شبلی، المرکزالاسلامی الثقافی الہندی للترجمۃ والتالیف سے مولانا محمد فضل الرحمن ندوی،اقرا گرلس انٹرنیشنل اسکول جیت پور سے مولانا سعیدالرحمن نورالعین سنابلی اور عبداللہ سلفی اور انجینئر اطیع اللہ ومولانا محمد خورشید مدنی ،مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ماتحت چلنے والا ادارہ المعہد العالی للتخصص فی الدراسات الاسلامیہ کے باحث محمدغفران فیضی اور جے این یو سے فیض الرحمن تیمی کے نام خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔علاوہ ازیں شعبۂ عربی کے اساتذہ مولانا شبلی سلفی، مولانا زہران عالیاوی اور مولانا اسد اللہ تیمی نے بھی حکم کے فرائض انجام دیئے۔

تمام نشستوں کے بعد اجلاس کے صدور اور حکم حضرات نے اپنے قیمتی تاثرات پیش کرتے ہوئے اسلامی علوم کی نشر و اشاعت کے تعلق سے بانی جامعہ و مدیر معہد علی بن ابی طالب لتحفیظ القرآن الکریم مولانا محمد اظہر مدنی کی مخلصانہ کوششوں کو سراہا اور دہلی کے ایک غیر آباد علاقہ میں ملت کے نونہالوں کے لئے دینی تعلیم و تربیت کا عمدہ و معیاری انتظام کرنے پر انہیں مبارکباد پیش کی۔نیز اس بات پر بھی مولانا محمد اظہر مدنی کو سراہا کہ انہوں نے اپنی نوعیت کے اس منفرد ادارہ کے نصاب تعلیم کو جدید تقاضوں کو ملحوظ رکھ کر ترتیب دیا ہے اور اس میں اسلامی علوم و فنون کے ساتھ ساتھ عصری تعلیم کا بھی انتظام کیا ہے۔نیز کمپیوٹر کی تعلیم پر خصوصی توجہ دی ہے ۔

علاوہ ازیں ، باہر سے تشریف لانے والے تمام مہمانوں نے طلباء کو نصیحت کرتے ہوئے انہیں حفظ قرآن کریم اور دینی و شرعی علوم میں ایمانداری کے ساتھ محنت کرنے اور اللہ کی رضا و معرفت کے لئے دینی علم حاصل کرنے کی طرف ان کی توجہ مبذول کرائی۔خیال رہے کہ سالانہ مسابقہ میں پوزیشن حاصل کرنے والے طلباء اور ان کے مابین انعامات کی تقسیم 17؍مارچ 2019ء بروز اتوار کو ایک عظیم الشان پروگرام میں کیا جائے گا جس میں دہلی و اطراف دہلی سے متعدد علمائے کرام،مختلف علمی اور سماجی شخصیات کی شرکت متوقع ہے اور ان شاء اللہ اس عظیم اجلاس کی صدارت مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیر حضرت مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی فرمائیں گے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *