لتا کے بیان پر سوشل میڈیا میں ناراضگی، لوگوں نے کہا رانو سے ہو رہی ہے جلن

Share Article

 

لتا منگیشکر کے اس بیان کی مخالفت کرتے ہوئے لوگوں نے ٹویٹ کیا ہے۔ ان میں سے ایک سوشل میڈیا یوزر نے لکھا “میں لتا منگیشکر جی کی بہت بڑی فین ہوں، لیکن ان کی اس رائے نے یہ ظاہر کر دیا ہے کہ بڑے لوگ چھوٹے لوگوں سے کیسا برتاؤ کرتے ہیں۔

 

نئی دہلی: راناگھاٹ کے ریلوے اسٹیشن پر گانا گا کر اپنا پیٹ پالنے والی رانو منڈل نے بالی ووڈ میں بھی اپنی زبردست شناخت بنا لی ہے۔ راناگھاٹ ریلوے اسٹیشن پر رہتے ہوئے رانو منڈل نے لتا منگیشکر کا ‘ایک پیار کا ننغمہ ہے … گانا گا کر شہرت حاصل کی۔ حال ہی میں ان کی اس شہرت پر خود لتا منگیشکر نے بھی اپنی رائے پیش کی تھی۔اگرچہ وہ ان کی اس کامیابی پر خوش ہوئی تھیں، لیکن لتا منگیشکر نے اپنے انٹرویو میں کہا تھا کہ نقل کبھی بھی کامیابی کا پائیدار ذریعہ نہیں ہے۔ ویسے تو انہوں نے یہ بات رانو منڈل کے علاوہ باقی سنگرس کے لئے بھی کہی تھی، لیکن لتا منگیشکر کے اس بیان نے سوشل میڈیا پر کافی لوگوں کو مایوس کر دیا ہے۔

لتا منگیشکر کے اس بیان کی مخالفت کرتے ہوئے لوگوں نے ٹویٹ کیا ہے۔ ان میں سے ایک سوشل میڈیا یوزر نے لکھا “میں لتا منگیشکر جی کی بہت بڑی فین ہوں، لیکن ان کی اس رائے نے یہ ظاہر کر دیا ہے کہ بڑے لوگ چھوٹے لوگوں سے کیسا برتاؤ کرتے ہیں۔

وہیں، دوسرے صارف نے لتا منگیشکر کے بیان پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے لکھا، “ایک غریب عورت اپنی زندگی گزارنے کے لئے ریلوے اسٹیشن پر گانا گاتی ہیں۔ رانو منڈل کی آواز نے سب کا دھیان اپنی کھینچا اور وہ سپر اسٹار بن گئیں۔ لتا جی تھوڑی اور ديالو ہو سکتی تھیں، ان کی تعریف ان کی مدد کر سکتی تھی۔ نقل پر ان کا یہ لیکچر ٹالنے کے قابل ہے۔

ان سب کے علاوہ دیگر یوزر نے لتا منگیشکر کے بیان پر کہا، “اس غریب عورت کے لئے کوئی تعریف نہیں ہے، جو اپنا پیٹ پالنے کے لئے گانا گاتی تھی۔ لتا جی سے اس عمر میں ایسی امید نہیں تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *