اے ایم یو کے سرجنوں نے ایک نئی کامیابی حاصل کی

Share Article

JNMC-cardiologists

علی گڑھ: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج (جے این ایم سی)کے پیڈیاٹرک ایویلوئیشن اینڈ کارڈیئک سرجری یونٹ (پی سی ای۔سی ایس) نے ایک نئی کامیابی حاصل کی ہے۔ یہاں پر 6سال کے ایک بچے کی خون کی سکڑی ہوئی شریان (شہ رگ) کو مصنوعی نلکی (اِسٹینٹ) ڈال کر اور بیلوننگ کے ذریعہ کشادہ کیا گیا۔ عام طور سے ایسے مریضوں کی اوپن ہارٹ سرجری کی جاتی ہے ، لیکن مذکورہ کیس میں ایسا نہیں کیا گیا اور جے این ایم سی کے ڈاکٹروں کے نام ایک نئی کامیابی درج ہوگئی۔
shoeb
ہردوئی سے تعلق رکھنے والے شعیب کی شہ رگ سکڑی ہوئی تھی جس سے اسے سینے میں شدید درد رہتا تھا، سانس پھولتی تھی اور خون کا دباؤ بڑھ جاتا تھا۔ اس کا علاج قومی اطفال صحت پروگرام (آربی ایس کے) کے تحت مفت میں کیا گیا۔ جے این ایم سی میں پروجیکٹ کے کنوینر پروفیسر تبسم شہاب نے کہاکہ کامیاب اسٹینٹنگ عمل سے جے این ایم سی ملک کے چنندہ طبی مراکز میں شامل ہوگیا ہے۔ پی سی ای۔سی ایس یونٹ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ اس طرح کے معاملے ابھی تک نئی دہلی ریفر کئے جاتے تھے، لیکن اب جے این ایم سی میں مذکورہ بیماری کا علاج شروع ہونے سے لوگوں کو راحت ملے گی۔

پیڈیاٹرک کارڈیالوجسٹ ڈاکٹر مرزا ایم کامران نے کہاکہ اِس طرح کے آپریشن میں خاص قسم کی مہارت درکار ہوتی ہے کیونکہ آپریشن کے دوران دل کی شاہ رگ کے اندر کشادہ ہونے والے اِسٹینٹ کا استعمال کیا جاتاہے۔ پی سی ای۔سی ایس یونٹ کے نوڈل افسر ڈاکٹر شاد عبقری نے کہا کہ جے این ایم سی میں دستیاب جدید ترین طبی سہولیات سے علی گڑھ اور اس کے اطراف کے لوگوں کو واقف کرانا ضروری ہے ، تاکہ وہ اس کا فائدہ اٹھاسکیں۔ مذکورہ آپریشن میں اے ایم یو پرو وائس چانسلر پروفیسر ایم ایچ بیگ اور ڈاکٹر اعظم حَسین، ڈاکٹر مہتاب عالم (ریڈیو ڈائیگنوسِس شعبہ)، ڈاکٹر شمیم (انستھیسیالوجی شعبہ) اور ڈاکٹر شہزاد نے اہم رول ادا کیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *