جموں، مرکزی حکومت کے فیصلے کے بعد منگل دوپہرکو قومی سلامتی کے مشیر (این ایس اے) اجیت ڈوبھال سرینگر پہنچیں گے۔ ڈوبھال اپنیدورہ کے دوران ریاست کی حفاظت کے انتظام کا جائزہ لیں گے اور سیکورٹی حکام کے ساتھ ملاقات بھی کریں گے۔ اس کے پیش نظر جموں و کشمیر میں سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔ موجودہ وقت میں نیم فوجی دستوں کے جوان مورچہ سنبھالے ہوئے ہیں۔ سری نگر اور جموں میں دفعہ 144 لاگو ہے۔ موبائل اور انٹرنیٹ سروس بھی بند ہے۔ اس کے علاوہ ڈوڈہ، کشتواڑ، بانہال اور رام بن میں کرفیو لگایا گیا ہے۔
 
بتایا جاتا ہے کہ منگل کی صبح کچھ ایک لوگ اپنے گھروں سے نکل کر روزانہ کے استعمال کی چیزیں لینے کے لئے نکلے ہیں۔ فی الحال وہاں حالات معمول ہیں لیکن کریانے کی دکانوں کے علاوہ دیگر دکان اور ادارے بند ہیں۔
 
ڈی جی پی دلباغ سنگھ نے بتایا کہ مشرق شمالی اور جنوبی کشمیر میں مکمل طور امن کا ماحول ہے۔ وادی میں ابھی تک کسی ناخوشگوار واقعہ کی اطلاع نہیں ہے۔ احتیاط کے طور پر بھاری سیکورٹی فورسز کی جگہ جگہ تعیناتی کی گئی ہے۔ ساتھ ہی کہیں بھی لوگوں کو گروپ میں کھڑے نہیں ہونے دیا جا رہا ہے۔
قابل ذکر ہے کہ مرکزی وزیر داخلہ نے گزشتہ دن پیر کو راجیہ سبھا میں جموں کشمیر سے دفعہ 370 اور 35 اے کو ہٹانے کی قرارداد پیش کی، جو61 کے مقابلے 125 ووٹوں سے پاس ہوگئی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here