ایئر انڈیا نے ممبر اسمبلی چندراکر کو اپنی خاتون اہلکار کے ساتھ بدسلوکی کا قصوروار مانا

Share Article

 

مہاسمند ممبر اسمبلی ونودچندراکر پر ایئر انڈیا نے اپنی خاتون اہلکار سے بدسلوکی کا مجرم قرار دیتے ہوئے ان کے خلاف سخت کارروائی کی بات کہی ہے۔ خاتون ملازم کا الزام ہے کہ گزشتہ 7 اگست کو رائے پور سے دہلی جانے والی فلائٹ چھوٹنے کا مقررہ وقت ساڑھے 6 بجے تھا ۔طیارے میں بیٹھنے کے مقررہ وقت پر ممبر اسمبلی چندراکر نہیں پہنچے تھے اور تاخیر سے پہنچے ممبر اسمبلی کو ایئر انڈیا کی خاتون ملازم نے جب قوانین سمجھائے ، تو ممبر اسمبلی خاتون ملازم پر ہی بھڑک گئے اور اس کا سیل فون چھین لیا۔

ائر انڈیا کے مطابق خاتون ملازم کی شکایت پر معاملے کی جانچ شروع ہو ئی اور اب تک کی رپورٹ کے مطابق خاتونملازم کی شکایت درست پائی گئی ہے۔ ممبر اسمبلی پر الزام یہ بھی ہے کہ، انہوں نے اس طرح بدسلوکی کی کہ ا س نے رات کو گھر جانے سے انکار کر دیا۔

ایئر انڈیا کے ترجمان دھننجے کمار کے مطابق عبوری جانچ میں خاتون ملازم کے ساتھ بدسلوکی کی شکایت کو درست پایا گیا ہے۔ ہم تفصیلی جانچ کریںگے اور ضروری قانونی کارروائی کریں گے۔ اس پورے معاملے میں مجرم بتائے جا رہے مہاسمند ممبر اسمبلی ونودچندراکر نے پورے الزام کو خارج کرتے ہوئے بدسلوکی کی مجرم ایئر انڈیا کی خاتون اہلکار کوہی بتایا ہے۔ ممبر اسمبلی ونود چندراکر کے مطابق ان کے ساتھ زیادتی ہوئی۔ میں نے اسی وقت ایئر انڈیا کے سی ایم ڈی ا اشونی لوہانی کو فون پر بتایا اور ان کے کہنے پر وہاٹس ایپ سے شکایت بھیجی۔ میں نے کوئی بدسلوکی نہیں کی۔ سی سی ٹی وی فوٹیج نکلوا لیں، میں تو شکایت کنندہ ہوں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *