افغان حکومت کی طالبان کو ایک ماہ کی جنگ بندی کی تجویز

Share Article

افغانستان میں امریکہ اور طالبان کے ذریعہ جاری امن کی کوششوںکو پھر ایک بار تیزر کرنے کی قواعد شروع ہوگئی ہے ۔اس بار افغان حکومت نے طالبان کی جانب امن کی کچھ تجاویز رکھی ہیں۔میڈیا ذرائع کے مطابق افغان حکومت نے امن مذاکرات کے لیے طالبان کو ایک ماہ کی جنگ بندی کی تجویز پیش کر دی ہے۔ افغان قومی سلامتی کے مشیر کا کہنا ہے افغانستان ایک ماہ کے لیے طالبان کو جنگ بندی کی تجویز دے رہا ہے جس کے بعد امن بات چیت کا آغاز کیا جائے گا۔

افغانستان کے قومی سلامتی کے مشیر نے طالبان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ملک میں ایک ماہ کے لیے جنگ بندی کا اعلان کریں تاکہ پتہ چل سکے کہ ملک میں جاری قتل و غارتگری میں ملوث جنگجو ان کے کنٹرول میں ہیں بھی یا نہیں۔کابل میں میڈیا سے بات چیت میں حمد اللہ مْحب نے کہا کہ ان کی نظر میں طالبان اب کوئی منظم تنظیم نہیں رہی اور ان کے کچھ کمانڈر داعش میں شامل ہو چکے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا، “اگر طالبان واقعی امن چاہتے ہیں تو انہیں ثابت کرنا ہوگا کہ اْن کا اپنے کمانڈروں پر کتنا کنٹرول ہے اور وہ اپنی قیادت کا کتنا حکم مانتے ہیں۔”اکثر افغان تجزیہ نگار یہ سوال اٹھاتے رہے ہیں کہ قطر میں موجود طالبان نمائندوں کا ملک کے اندر برسرپیکار جنگجوؤں پر کوئی خاص اثر نہیں اس لیے ان سے مذاکرات کی افادیت بھی محدود ہے۔افغان قومی سلامتی کے مشیر کا بیان ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب امریکہ نے چین کے میزبانی میں طالبان اور افغان سیاستدانوں کے درمیان مذاکرات بحال کرنے کا خیرمقدم کیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *