فلیٹ میں ملی ایک اور اداکارہ کی لاش، بوائے فرینڈ کی تلاش میں نکلی پولیس کی کئی ٹیم

Share Article
Actress Yashika

 

ساؤتھ کے سلور پردے کی معروف ومشہور اداکارہ یاشیکا عرف مری شیلا زیبرانی کی لاش اس کے اپنے فلیٹ سے ملی ۔ بتایا جا رہا ہے کہ اداکارہ نے خودکشی کر لی ہے۔ اداکارہ یاشیکا عرف مری شیلا زیبرانی نے اپنے چنئی کے پیراوللور واقع اپنے گھر میں پنکھے سے لٹک کر خودکشی کی ہے۔ اکارہ نے خودکشی سے پہلے اپنی ماں اور بوائے فرنٹ کو وہاٹس ایپ میسج کے ذریعے سوسائڈ نوٹ بھی بھیجا، جس میں انہوں نے اپنے بوائے فرنٹ موہن بابو پر کئی سنگین الزام لگایا ہے۔

 

 

چنئی: چکاچوند سے اچانک گمنامی کے اندھیرے میں ایک اور اداکارہ ہمیشہ کے لئے لاپتہ ہو گئی۔ ساؤتھ کی فلموں اور ٹی وی سیریلس کا ایک معروف چہرہ ہمیشہ کے لئے اپنے مداحوں سے دور ہوگیا۔ ساؤتھ کے سلور پردے کی معروف ومشہور اداکارہ یاشیکا عرف مری شیلا زیبرانی کی لاش اس کے اپنے فلیٹ سے ملی ۔ بتایا جا رہا ہے کہ اداکارہ نے خودکشی کر لی ہے۔ اداکارہ یاشیکا عرف مری شیلا زیبرانی نے اپنے چنئی کے پیراوللور واقع اپنے گھر میں پنکھے سے لٹک کر خودکشی کی ہے۔ اکارہ نے خودکشی سے پہلے اپنی ماں اور بوائے فرنٹ کو وہاٹس ایپ میسج کے ذریعے سوسائڈ نوٹ بھی بھیجا، جس میں انہوں نے اپنے بوائے فرنٹ موہن بابو پر کئی سنگین الزام لگایا ہے۔پولیس کے مطابق، اداکارہ یاشیکا اور موہن بابو کا گزشتہ کئی برسوں سے افیئر تھا۔ دونوں کی محبت کی کہانی اس وقت شروع ہوئی جب وہ وڑاپلانی کے ایک ہوسٹل میں رہتی تھیں۔ چند ماہ بعد ان دونوں نے پیراوللور کے جی کے ایم میں کرایہ پر ایک گھر لیا اور ’لیوان‘ میں رہنے لگے۔ حال ہی میں دونوں کے درمیان کسی بات کو لے کر جھگڑا ہوا اور موہن بابو ناراض ہو کر گھر چھوڑ کر چلا گیا۔ بس اسی بات سے ناراض ہو کر اداکارہ نے خودکشی کر لی۔

 

اداکارہ نے اپنی ماں کو وہاٹس ایپ میسج کے ذریعہ بھیجے گئے سوسائڈ نوٹ میں لکھا ہے کہ، موہن نے اس سے شادی کرنے سے انکار کر دیا ہے اور اس کو وہ پریشان کر رہا ہے،اس نے اپنی ماں سے موہن کو سخت سزا دلانے کے لئے بھی کہا۔ اس کے بعد یاشیکا کی ماں نے موہن کے خلاف پولیس میں معاملہ درج کروا دیا۔ وہیں پولیس کا کہنا ہے کہ فی الحال معاملہ درج ہو گیا ہے اور وہ موہن کی تلاش کر رہی ہے، ساتھ ہی یاشیکا کی خودکشی کے پیچھے کی وجوہات کو بھی جاننے کی کوشش کر رہی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *