اداکارہ ودیابالن نے بتائی رازکی بات

Share Article
vidya-balan
اپنے دمداراداکاری کے بل پربالی ووڈ کی سینئراداکاراؤں میں شامل ودیابالن ان دنوں فلموں کے چلتے نہیں بلکہ جنسی زیادتی پردینے بیانوں کی وجہ سے سرخیوں میں ہیں۔ایک انٹرویومیں ودیابالن نے کہاکہ جب وہ کالج میں تھیں توچھیڑخانی کاشکارہوئیں تھی۔اپنی نئی فلم ’تمہاری سولو‘کے سلسلے میں ودیابالن نے ’نوبھارت ٹائمس ‘کے خاص بات چیت کی۔اس میں انہو ں نے جنسی زیادتی ،اپنی ناکامیوں اورشادی شدہ زندگی کے بارے میں کھل کربات چیت کی۔ودیابالن نے کہاکہ جنسی زیادتی ہمیشہ سے ہوتارہاہے ۔فرق یہ ہے کہ آج لوگ اس مسئلے پربات کررہے ہیں،پہلے ان باتوں کودبادیاجاتاتھا۔انہو ں نے انٹرویومیں بتایاکہ آج اچھی بات ہے کہ ہرلڑکی سوچتی ہے کہ وہ اکیلی نہیں ہے۔آج خودکوقصوروارماننے کے بجائے قصورکاپردہ فاش کرتی ہیں۔انہو ں نے بتایاکہ ’میں جن دنوں لوکل ٹرین سے سفرکیاکرتی تھی،تب مجھے چنبورسے وی ٹی جاناہوتاتھااورکالج کے ان دنوں میں اکثرمجھے کوئی پنچ کردیتا،کوئی چکوٹی کاٹ دیتا،مجھے بہت غصہ آتااورمیں چلاکرہاتھ اٹھادیتی تھی۔مجھے لگتاہے کہ ایسے معاملوں میں چپ نہیں رہناچاہئے‘‘۔
انہوں نے مزیدبتایاکہ ویسے آج مجھے انڈسٹری میں 12سال ہوگئے ہیں اورمجھ سے یہاں ایسی ویسی حرکت کرنے کی کسی کی ہمت نہیں ہوتی،مگرجب میں کالج میں ہوتی تھی تومیں بھی چھیڑخانی کاشکارہوئی۔انہوں نے انٹرویومیں بتایاکہ ’جب میں کالج میں تھی، ایک آرمی جوان وی ٹی اسٹیشن پرکھڑاتھااورمیری طرف دیکھے جارہاتھا۔وہ لگاتاربریسٹ کوگھوررہاتھااوراس نے میری طرف دیکھ کرآنکھ ماری۔غصے کے مارے میرے تن بدن میں آگ لگ گئی، میں اس کے پاس دندناتی ہوئی گئی اوراس سے جاکرکہا،آپ میری طرف ایسے کیوں گھوررہے ہیں؟آپ مجھے دیکھ کرآنکھ کیوں ماری؟آپ ہمارے دیش کے جوان ہیں۔ملک کی حفاظت کرناآپ کی ذمہ ہے اورآپ مجھے آنکھ ماررہے ہیں۔یہ کیاچھچھوراپن ہے؟،میرے ساتھ میری سہیلی بھی تھی اوروہ لگاتارمیراہاتھ کھینچ کرمجھے وہاں لے جانے کی کوشش کررہی تھی، مگرمیں چپ نہیں رہی۔میری پھٹکارسے آرمی جوان بہت شرمندہ ہوگیا۔جنسی زیادتی کی تعریفیں ،زبانیں بہت ہی وسیع ہے۔یہ کچھ بھی ہوسکتاہے۔ہاتھ لگانا، گندی باتیں کرنا یامالیسٹ کرناہی جنسی زیادتی نہیں ہوتا، کئی بارلوگ آنکھوں ہی آنکھوں میں آپ کاریپ کردیتے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *