اب دہلی دور ہو جائے گی

Share Article

دلیپ چیرین
ملک کا شمال مشرقی خطہ ہمیشہ سے بابوئوں کے لیے عذاب جان رہا ہے۔ بابو اس خطہ میں جانے سے بچنے کے لیے کسی بھی قانون و ضابطہ کو طاق پر رکھنے سے باز نہیں آتے۔نیا ضابطہ یو ٹی کیڈر کے افسران کو بھی متاثر کررہا ہے، نتیجتاً دہلی کے بابو فکر مند ہیں۔اکثر بابو اچھا تعلیمی نظام، باغیوں کا خوف اور ترقی پانے کے موقع کا حوالہ دیتے ہوئے ان ریاستوں میں اپنی خدمات انجام دینے سے گریز کرتے ہیں۔گووا اور میزورم(اے جی ایم یو) کیڈر کے آئی اے ایس اور آئی پی ایس افسران کے تبادلے سے متعلق ضابطوں کو اب مزید سخت کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، تاکہ یہ بابو اپنے اصل کیڈر میں طے وقت کی مدت پوری کریں۔
ذرائع کے مطابق اب آئی اے ایس افسر کو دہلی میں 6سال ، اروناچل اور میزورم جیسے حساس علاقوں میں5سال اور بی درجے کے علاقوں جیسے گووا، چندڈی گڑھ اور پڈو چیری میں تین سال کام کرنا ہوگا۔سب سے پہلے نشانے پر وہ بابو ہیںجو لمبے وقت سے دہلی میں کام کر رہے ہیں۔خیر، ہم جلد ہی وسیع پیمانے پر بابوئوں کی تحریک کی امید کر سکتے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *