بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی سربراہ مایاوتی نے یوپی حکومت کی طرف سے 25 ہزارہوم گارڈوں کی مبینہ طور پر ڈیوٹی ختم کرنے کو لے کر حمل بولا ہے۔
انہوں نے بدھ کو ٹویٹ کیا کہ یوپی حکومت اپنی غلط اقتصادی پالیسیوں کی سزا 25 ہزار ہم گارڈوں کو برخاست کرکے ان کے خاندان کے لوگوں کو کیوں دے رہی ہے۔ اس سے ریاست میں افراتفری اور زیادہ بڑھے گی۔ حکومت روزگار دینے کے بجائے بے روزگاری کو اور کیوں بڑھا رہی ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے مشورہ دیا ہے کہ حکومت مفاد عامہ پر مناسب توجہ دے تو بہتر ہو گا۔
اگرچہ محکمہ جاتی وزیر چیتن چوہان نے یقین دلایا ہے کہ کسی بھی ہوم گارڈ کو بے روزگار نہیں ہونے دیا جائے گا۔ روٹیشن کے حساب سے سب ہوم گارڈ کو کام ملے گا۔ پولیس محکمے سے جو ہوم گارڈ ہٹائے بھی جا رہے ہیں انہیں پرانے بجٹ کے مطابق ایڈجسٹ کرنے کی اپیل بھی کی گئی ہے۔
چیتن چوہان نے کہا کہ پولیس افسران کو مشورہ دیا گیا ہے کہ جو بجٹ 500 روپے کے حساب سے پورے سال بھر کا ہے اس بجٹ میں وہ جتنے ہوم گارڈ کو ڈیوٹی دے سکتے ہیں، دی جانی چاہئے۔ چوہان نے کہا کہ اس کے علاوہ جو ہوم گارڈ ہمارے پاس واپس آئیں گے ان کی ڈیوٹی لگائی جائیں گی۔ کسی کو بھی بے روزگار نہیں کیا جائے گا اور نہ ہی نکالا جائے گا۔ ڈیوٹی ختم ہونے کا مطلب کام ختم ہونا نہیں ہے۔ ہمارے پاس جو بھی ڈیوٹی ہیں، انہی میں سب کو ایڈجسٹ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ خزانہ نے ہوم گارڈ کے لئے الگ سے بجٹ دینے میں کچھ پریشانی ظاہر کی تھی، جس کے بعد یہ مسئلہ پیدا ہوا۔ بات چیت کے ذریعے جلد ہی اس مسئلے کا حل نکالا جائے گا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here