سعودی عرب کی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ مدینہ منورہ کے مختلف اسپتالوں میں زیرعلاج 23 مریض عازمین حج مناسک حج کی ادائی کے لیے مشاعر مقدسہ روانہ کردیے گئے ہیں۔مریض عازمین حج کو ایمبولینسوں کے ذریعہ مشاعر مقدسہ روانہ کیا گیا ہے۔ ہر مریض کے ساتھ ایک نرس بھی تعینات ہے جب کہ ایمبولینسیں جدید آلات سے لیس ہیں۔
Image result for arafat hajj
رواں موسم حج میں پہلی مرتبہ مدینہ منورہ سے مریض عازمین حج کو طیارے کی مددسے مشاعر مقدسہ پہنچایا گیا۔ ان میں ایک افغان خاتون بھی شامل ہیں جن کی مدینہ منورہ کے ایک اسپتال میں سرجری کی گئی تھی۔خیال رہے کہ سعودی عرب کی حکومت مریض عازمین حج کی فریضہ حج کی ادائی میں معاونت کے لیے ہرسال انہیں ایمبولینسیں فراہم کرتی اور ان کی ہرطرح سے مدد کی جاتی ہے۔ادھر ایک دوسرے سیاق میں سعودی عرب کی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ مکہ معظمہ اور مدینہ منورہ میں عازمین حج کے لیے مختص کردہ تمام اسپتالوں اور طبی مراکز سے عازمین کو ہرممکن مفت طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔بیان میں بتایا گیا کہ یکم ذی القعدہ سے چھ ذی الحج تک سعودی عرب کے اسپتالوں میں 2 لاکھ 99 ہزار 557 مردوخواتین عازمین حج کو طبی مدد فراہم کی گئی۔
Image result for arafat hajj
وزارت صحت کا کہنا ہے کہ اس دوران امراض قلب کے 25 مریضوں کی اوپن ہارٹ سرجری کی گئی۔ 587 عازمین حج کے دلوں کے چھوٹے آپریشن کیے گئے۔ گردوں کی بیماریوں کے شکار 1615مریضوں کے ڈائیلائیسز کیے گئے اور دیگر امراض کی 393 سرجریاں کی گئیں۔ 1440ھ کے موسم حج پر 2044 مریح عازمین حج کو اسپتالوں میں داخل کیا گیا جب کہ 7 خواتین کے زچگی کے آپریشن کیے گئے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here