سعودی عرب سے بھاگی 18سال کی لڑکی نے کہا، اسلام چھوڑ دیا، پریوار مارڈالیں گے

Share Article
Rahaf Mohammed

سعودی عرب کی18سال کی رہاف محمد دو دنوں سے ٹویٹر پر چھائی ہے۔ رہاف کا کہنا ہے کہ وہ پریوار کے ڈر سے بچنے کے لیے بھاگ کر بینک کاک آئی ہے اور اسے واپس نہیں جانا ہے۔ رہاف کا دعویٰ ہے کہ وہ ناسک ہے اور دو سال پہلے اس نے اسلام چھوڑ دیا۔ اس کے پریوار والے اس وجہ سے اس کی جان لے لیں گے۔

 

 

 

رہاف کو بینک کاک ایئرپورٹ پر ڈیٹین کیا گیا، ٹویٹر پر شیئر کی کہانی
18سال کی لڑکی کا کہنا ہےکہ اس نے2سال پہلے اسلام چھوڑ دیا
لڑکی کا دعویٰ ہے کہ اگر واپس گئی تو  اس کی جان لے لیں گے

 

 

 

بینک کاک ایئرپورٹ پر18سال کی سعودی عرب کی لڑکی کو پکڑا گیا۔ رہاف محمد ایم الکونون نام کی اس لڑکی کا کہنا ہے کہ وہ واپس اپنے ملک نہیں جانا چاہتی ہے اوراسے بھیجا گیا تو اس کی جان کو خطرہ ہے۔ا میر پریوار کے تعلق رکھنے والی رہاف کے والد کاروباری ہیں۔ لڑکی کا کہنا ہے وہ ناسک ہے اور پریوار کی سخت پابندی سے بچنے کا اس کے پاس کوئی اور راستہ نہیں تھا۔ اس لیے وہ اس راستے کو اپنایا۔ رہاف نے ٹویٹ کیا میں اکیلے رہ سکتی ہوں۔ آزاد اور ان سب لوگوں سے دور جو میری عزت اور میرے عورت ہونے کی عزت نہیں کرتے۔ میرے ساتھ پریوار نے سخت برتائو کیا اور میرے پاس اس کے ثبوت ہیں۔ رہاف نے سلسلے وار کئی ٹویٹ کیے ہیں اور کئی لوگوں سے مدد کی گزارش کی۔ اقوام متحدہ سے بھی رہاف نے اپنے لیے رہائش دینے کی مانگ کی۔

 

رہاف نے ہمارے ساتھی اخبار ٹائمس آف انڈیا کو بتایا ’میں ناسک ہوں اور میرے پاس پریوار سے بھاگنے کے لیے یہی راستہ تھا ایک بار میں نے اپنے بال کٹوا لیے تھے۔ جس کے بعد مجھے 6مہنے تک گھر میں بند کرکے پریوار نے رکھا۔میری فیملی بہت سخت ہے اور میں اس زندگی سے چھٹکارا چاہتی ہوں۔

 

پولیس ہی ہماری سب سے بڑی مخالف :بی جے پی لیڈر

 

گھر سے بھاگنے کے بارے میں انہوں نے کہا ’میں کویت تک کار سے ایک فیملی ہالی ڈے کے لیے آئی تھی۔ صبح کے4بج رہے تھے اور میں نے دیکھا کہ میرے پریوار کے سارے لوگ سو رہے ہیں۔مجھے لگا کہ میرے پاس یہی ایک آخری موقع ہے اس قید سے چھٹکارا پانے کا۔ میں نے آسٹریلیا کا ٹکٹ لیا کیونکہ وہاں کا ٹوریسٹ ویزا ملنا کافی آسان ہوتا ہے۔ میرا پلان تھا کہ آسٹریلیا پہنچ کر میں اپنے لیے شہریت دینے کی مانگ کروںگی۔ لڑکی نے بتایا کہ فون کے ذریعہ و ہ کئی وکیلوں کے رابطہ کیا لیکن سوموار کی صبح تک اسے کسی سے مثبت جواب نہیں ملا۔ کویت ایئرلائن کےذریعے بینک کاک پہنچنے کے بعد اس کا پاس پورٹ واپس لے لیا گیا۔  ٹائمس آف انڈیا کو رہاف نے بتایا میں 16سال کی تھی جب میں نے اسلام چھوڑدیا اور میرے پریوار کو یہ پتہ چلا تو وہلوگ مجھے مار ڈالیں گے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *