سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے گئے آلوک ورما نے چھوڑی نوکری

Share Article
alok-verma
وزیراعظم نریندرمودی کی صدارت والی ایک ہائی پاورسلیکشن کمیٹی کی جانب سے سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے جانے کے ایک دن بعد آلوک ورما نے نوکری سے استعفیٰ دے دیاہے۔قابل ذکرہے کہ 77 دن تک چھٹی میں رہنے کے بعدسی بی آئی ڈائریکٹر آلوک ورما کو بدھ9 جنوری کو سپریم کورٹ نے سی بی آئی عہدہ پربحال کردہا تھا۔ آلو ک ورما نے اسی دن اپنی ذمہ داری بھی سنبھال لی تھی لیکن محض 36 گھنٹے بعد ہی پی ایم مودی کی قیادت والی سیلیکشن کمیٹی نے ان کو عہدے سے ہٹا دیاتھا۔
ذرائع کے مطابق ،ہائی پاور سلیکشن کمیٹی کے ذریعے سی بی آئی ڈائریکٹر عہدہ سے ہٹائے جانے اوربتادلہ کئے جانے کے ایک دن بعد آلوک ورما نے سرکارکواستعفیٰ بھیج دیاہے۔ ورماکا تبادلہ کرتے ہوئے انہیں فائرسروسزکا ڈائریکٹربنایاگیاتھا لیکن پہلے توانہوں نے چارج لینے سے انکارکیا اوربعدمیں استعفیٰ ہی دے دیا۔جمعہ کوآلوک ورما نے فائرسروس کا ڈی جی عہدہ کوٹھکراتے ہوئے نوکری سے ہی استعفیٰ دے دیا۔
آپ کوبتادیں کہ سپریم کورٹ کے فیصلے محض 36گھنٹے بعدوزیراعظم نریندرمودی کی صدارت والی ایک ہائی پاورسلیکشن کمیٹی کی جانب سے سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے جانے پرآلوک ورما نے اپنی چپی بھی توڑی تھی۔سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے گئے آلو ک ورما نے کہاکہ جھوٹے ، غیرثابت شدہ اوربیحدہلکے الزامات کوبنیاد بناکر ٹرانسفرکیاگیاہے۔ہائی پاور سیلیکشن کمیٹی کی جانب سے سی بی آئی ڈائریکٹر کے عہدے سے ہٹائے جانے کے بعد آلوک ورما نے دعوی کیا ہے کہ ان کا تبادلہ ان کی مخالفت میں رہنے والے ایک شخص کی طرف سے لگائے گئے جھوٹے ،فرضی الزاموں کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔ آلوک ورما نے کہاکہ یہ الزام اس ایک شخص نے لگائے ہیں، جوان سے بغض رکھتاہے۔
ا س معاملے میں چپی توڑتے ہوئے آلوک ورما نے جمعرات کی دیر رات پی ٹی آئی کو جاری ایک بیان میں کہا کہ بدعنوانی کے ہائی۔پروفائل معاملوں کی جانچ کرنے والی اہم ایجنسی ہونے کے ناطے سی بی آئی کی آزادی کو محفوظ رکھنا چاہئے۔ورما نے کہاکہ اسے باہری دباؤ کے بغیر کام کرنا چاہئے۔ میں نے ایجنسی کی سالمیت کو برقراررکھنے کی پوری کوشش کی جبکہ اسے برباد کرنے کی کوشش کئے جارہے ہیں ۔اسے مرکزی حکومت اور سی وی سی کے 23 اکتوبر 2018 کے احکام میں دیکھاجا سکتا ہے جو بغیر کسی اختیار کے دئے گئے تھے اور جنہیں رد کر دیا گیا۔ورما نے اپنے اوپرلگے الزامات کوفرضی اوربے بنیادبتایا۔ ورما نے اپنے مخالف کے ذریعے لگائے گئے جھوٹے اور فرضی الزاموں کی بنیاد پر کمیٹی کی جانب سے تبادلہ کا حکم جاری کئے جانے پر دکھ و افسوس ظاہر کیاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *