چاند پر آلو، انڈے اور پودے 

Share Article


چین نے اعلان کیا ہے کہ ان کی خلائی ایجنسی کی جانب سے بھیجا گیا روبوٹک خلائی جہاز ’چینگ فور‘ چاند کے تاریک حصے یعنی پچھلے حصے جو ہماری زمین پر سے دکھائی نہیں دیتے ہیں،اس میں کامیابی سے اترنے والا پہلا جہاز بن گیا ہے۔
چینگ 4 کے لینڈر پر دو کمرے لگے ہیں جن میں ایک برمقناطیسی شعاؤں کے لیے جرمنی کا بنا ایل این ڈی ہے اور دوسرا ایک ‘سپیکٹرومیٹر ہے جو خلا میں کم فریکوینسی کے ریڈائی مشاہدوں کے لیے ہے۔لینڈر پر تین کلوگرام کا ایک کنٹینر ہے جس میں حیاتیاتی تجربات کے لیے آلو اور کچھ دیگر پودوں کے بیج اور ریشم کے کیڑوں کے انڈے ہیں۔ یہ تجربہ چین کی 28 یونیورسٹیوں نے مل کر تیار کیا ہے۔
ابھی تک چین نے امریکی اور روسی خلائی مشنز کے نقش قدم پر چلتے ہوئے اپنی صلاحیتوں میں اضافہ کیا ہے۔ لیکن یہ مشن کسی بھی خلائی ادارے کی جانب سے پہلا قدم ہے۔چاند کی دوسری جانب کی ناہموار سطح خلائی گاڑیوں کی لینڈنگ کے لیے ایک بڑا چیلنج تھا۔چینی سائنسدانوں کے مطابق جنوبی قطب کے ایٹکین بیسن میں وون کرمان کا حصہ لینڈنگ کے لیے اس لیے منتخب کیا گیا کہ یہ دیگر علاقوں کے مقابلے میں خاصا ہموار ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *